• بانی: میرخلیل الرحمٰن
  • گروپ چیف ایگزیکٹووایڈیٹرانچیف: میر شکیل الرحمٰن
ویب ڈیسک
ویب ڈیسک | 25 جولائی ، 2021

آزاد کشمیر انتخابات، پی ٹی آئی کی برتری، کارکنوں کا جشن


آزاد کشمیر کے عام انتخابات میں تحریک انصاف نے میدان مارلیا، غیر سرکاری اورغیر حتمی نتائج کے مطابق تحریک انصاف نے 25 نشستیں جیت لیں اور تنہا حکومت بنانے کی پوزیشن میں آ گئی۔

 پیپلزپارٹی 11 اور ن لیگ 6 نشستوں پر کامیاب رہی جبکہ مسلم کانفرنس اور جموں کشمیر پیپلز پارٹی کوایک ایک نشست ملی۔

 ایل اے 16 باغ کے نتائج روک دیے گئے۔ چار پولنگ اسٹیشن پردوبارہ پولنگ کا فیصلہ آج ہوگا۔


مختلف حلقوں کے غیرسرکاری نتائج اس طرح رہے۔


حلقہ ایل اے 1 میرپور 1 کے  تمام 135 پولنگ اسٹیشنز کا غیرسرکاری نتیجہ سامنے آگیا ہے جس کے مطابق تحریک انصاف کے اظہر صادق 14233 ووٹ لے کر کامیاب ہوگئے ہیں، مسلم لیگ ن کے چوہدری مسعود خالد نے 4609 ووٹ لیے۔

حلقہ ایل اے 3 میرپور 3 کے تمام 147 پولنگ اسٹیشنز کے غیر سرکاری نتائج سامنے آگئے جس کے مطابق پی ٹی آئی کے سلطان محمود چوہدری 18462 ووٹوں سے کامیاب ہوگئے، پاکستان مسلم لیگ ن کے چوہدری محمد سعید 15343 ووٹ لے سکے۔

حلقہ ایل اے 4 میرپور 4 کے تمام پولنگ اسٹیشنز کا غیر سرکاری نتیجہ سامنے آگیا جس کے مطابق تحریک انصاف کے چوہدری ارشد حسین 22700 ووٹ لے کر کامیاب ہوگئے جبکہ مسلم لیگ (ن) کے چوہدری رخسار احمد 20800 ووٹ لے کر دوسرے نمبر پر رہے۔

حلقہ ایل اے 5 بھمبر 1 کے تمام پولنگ اسٹیشن غیر حتمی غیر سرکاری نتائج کے مطابق مسلم لیگ ن کے وقار احمد نور 21799 ووٹ لے کر کامیاب ہوگئے ہیں، پیپلز پارٹی کے چودھری پرویز اشرف 15583 ووٹ لےکر دوسرے نمبر پر ہیں۔

حلقہ ایل اے 6 بھمبر 2 کے غیر حتمی غیر سرکاری نتائج کے مطابق پاکستان تحریک انصاف کے علی شان چودھری 9777 ووٹ لے کر آگے ہیں، پاکستان مسلم لیگ ن کےمقصود احمد خان 3947 ووٹ لےکر دوسرے نمبر پر ہیں۔

حلقہ ایل اے 7 بھمبر 3 کے غیر حتمی غیر سرکاری نتائج کے مطابق پاکستان تحریک انصاف کےچودھری انوارالحق 1027 ووٹ لےکر آگے ہیں، پاکستان مسلم لیگ ن کےچودھری طارق فاروق 641 ووٹ لےکر دوسرے نمبر پر ہیں۔

حلقہ ایل اے8 کوٹلی 1 کے تمام 129 پولنگ اسٹیشنز کےغیرسرکاری نتائج موصول ہوگئے، جن کے مطابق پی ٹی آئی کے ظفر اقبال ملک 18321 ووٹ لے کر کامیاب ہوگئے جبکہ آل جموں و کشمیر مسلم کانفرنس کے ملک محمد نوازنے 11900 ووٹ لے کر دوسرے نمبر پر رہے۔

حلقہ ایل اے 9 کوٹلی 2 کے غیر حتمی غیر سرکاری نتائج کے مطابق پیپلز پارٹی کے جاوید اقبال بڈھانوی 24276 ووٹ لے کر کامیاب جبکہ مسلم کانفرنس سے سردار نعیم خان 19484 ووٹ لےکر دوسرے نمبر پر رہے۔



حلقہ ایل اے 10 کوٹلی 3 کے تمام 133 پولنگ اسٹیشنز کے غیرسرکاری نتائج آگئے، جس کے مطابق پیپلزپارٹی کے چودھری محمد یاسین 9562 ووٹ لے کر کامیاب ہوگئے جبکہ تحریک انصاف کے ملک محمد یوسف نے 9376 ووٹ لیے۔

حلقہ ایل اے 11 کوٹلی 4 کے تمام 198 پولنگ اسٹیشنز کے غیرسرکاری نتائج کے مطابق پی ٹی آئی کے چودھری محمد اخلاق 23063 ووٹ لے کر کامیاب رہے جبکہ پاکستان مسلم لیگ ن کے راجہ نصیراحمد خان نے 21678 ووٹ لیے اور دوسرے نمبر رہے۔

حلقہ ایل اے 12 کوٹلی 5 کے تمام 198 پولنگ اسٹیشنز کے غیرسرکاری نتائج کے مطابق پاکستان پیپلز پارٹی کے چودھری محمد یٰسین 21527ووٹ لے کر کامیاب رہے جبکہ پاکستان مسلم لیگ ن کے محمد ریاست خان نے 20080 ووٹ لیے۔

حلقہ ایل اے 13 کوٹلی 6 کے تمام 170 پولنگ اسٹیشنز کے غیرسرکاری نتائج سامنے آگئے جس کے مطابق پی ٹی آئی کے نثار انصر ابدالی 23448 ووٹوں سے کامیاب قرار پائے، جبکہ پیپلز پارٹی کے محمد ولید انقلابی 17468 ووٹ حاصل کرسکے۔

حلقہ ایل اے 15 باغ 2 کے تمام 185 پولنگ اسٹیشنز کے غیر سرکاری نتائج آگئے، جس کے مطابق پی ٹی آئی کے تنویر الیاس 19825ووٹ لے کر کامیاب ہوگئے جبکہ پاکستان پیپلز پارٹی کے ضیا قمر نے 14558ووٹ لیے۔

حلقہ ایل اے 16 باغ 3 کے 167پولنگ اسٹیشنز میں سے 18 کے غیر حتمی و غیر سرکاری نتائج سامنے آگئے، جس کے مطابق پاکستان پیپلز پارٹی کے سردار قمر زمان خان 2256 ووٹ لے کر آگے ہیں جبکہ پاکستان تحریک انصاف کے سردار میر اکبر خان 2145 ووٹ لے کر دوسرے نمبر پر ہیں۔ 

حلقہ ایل اے 18 پونچھ اور سدھنوتی 1 کے تمام 178 پولنگ اسٹیشنز کے غیرسرکاری نتائج سامنے آگئے ہیں جس کے مطابق  تحریک انصاف کے سردار عبد القیوم نیازی 24829 ووٹ لیکر کامیاب ہوگئے، مسلم لیگ ن کے محمد یاسین گلشن 16000 ووٹ کے ساتھ دوسرے نمبر پر رہے۔ 

حلقہ ایل اے 19 پونچھ اور سدھنوتی 2 کے تمام 149 پولنگ اسٹیشنز کے غیرسرکاری نتائج سامنے آگئے جس کے مطابق مسلم لیگ (ن) کے سردار عامر الطاف خان 13413 ووٹوں سے کامیاب ہوگئے جبکہ پاکستان پیپلز پارٹی کے سعود بن صادق 12517 ووٹ حاصل کرسکے۔

حلقہ ایل اے 21 پونچھ اور سدھنوتی 4 کے تمام 107 پولنگ اسٹیشنز کے غیرسرکاری نتائج سامنے آگئے جس کے مطابق جموں و کشمیر پیپلز پارٹی کے سردار حسن ابراہیم خان 8190 ووٹ لے کر کامیاب ہوگئے جبکہ مسلم لیگ ن کے طاہر انور خان 6198 ووٹ حاصل کرکے دوسرے نمبر پر رہے۔ 

حلقہ ایل اے 22 پونچھ اور سدھنوتی 5 کے تمام 156 پولنگ اسٹیشنز کے غیرسرکاری نتائج آگئے ہیں، جس کے مطابق پی ٹی آئی کی شاہدہ صغیر 16962 ووٹوں سےکامیاب ہوگئیں جبکہ پیپلز پارٹی کے اسد ابراہیم خان نے 10582 ووٹ حاصل کیے۔

ایل اے 24 پونچھ اور سدھنوتی7 کے تمام 179 پولنگ اسٹیشنز  کے غیرسرکاری نتائج کے مطابق پی ٹی آئی کے سردار فہیم اختر ربانی 28103 ووٹوں سے کامیاب ہوگئے جبکہ پاکستان مسلم لیگ ن کے سردار فاروق احمد نے 24103 ووٹ لیے۔

حلقہ ایل اے 25 نیلم ویلی 1  کے 123 میں سے 45 پولنگ اسٹیشنز کے غیر حتمید و غیرسرکاری نتائج سامنے آگئے، مسلم لیگ ن کے شاہ غلام قادر 7522 ووٹ لے کر آگے ہیں جبکہ تحریک انصاف کے سردار گل خنداں 5716 ووٹ لے کر دوسرے نمبر پر ہیں۔

حلقہ ایل اے 26 نیلم ویلی 2 کے تمام 114 پولنگ اسٹیشنز کا غیرسرکاری نتیجہ سامنے آگیا جس کے مطابق پیپلز پارٹی کے میاں عبدالوحید 18870 ووٹ لے کر کامیاب ہوئے جبکہ تحریک انصاف کے راجہ محمد الیاس 13294 ووٹ لے سکے۔ 

حلقہ ایل اے 28 مظفر آباد 2 کے غیر حتمی غیر سرکاری نتائج کے مطابق پاکستان پیپلز پارٹی کےباذل علی نقوی2259 ووٹ لے کر آگے ہیں، پاکستان تحریک انصاف کےچودھری شہزاد محمود 1364ووٹ لےکر دوسرے نمبر پر ہیں۔

حلقہ ایل اے 29 مظفرآباد 3 کے تمام 114 پولنگ اسٹیشنز کے غیر سرکاری نتائج سامنے آگئے جس کے مطابق پی ٹی آئی کے خواجہ فاروق احمد 13337 ووٹوں سے کامیاب ہوگئے جبکہ پاکستان مسلم لیگ ن کے بیرسٹر افتخار علی گیلانی 10557 ووٹ لے سکے۔

حلقہ ایل اے 30 مظفر آباد 4 کے تمام 105 پولنگ اسٹیشنز کے غیرسرکاری نتائج سامنے آگئے جس کے مطابق تحریک انصاف کے چوہدری محمد رشید 18068 ووٹ لے کر کامیاب ہوگئے، مسلم لیگ ن کے مصطفیٰ بشیر عباسی نے 10316 ووٹ لیے۔

حلقہ ایل اے 32 مظفر آباد 6 کے تمام 132 پولنگ اسٹیشنز کے غیرسرکاری نتائج موصول ہوگئے، جن کے مطابق ن لیگ کے راجہ محمد فاروق حیدر 15590 ووٹ لےکر کامیاب ہوگئے جبکہ پیپلز پارٹی کے صاحبزادہ محمد اشفاق نے 15100 ووٹ لیے۔

حلقہ ایل اے 34 جموں 1 کے تمام 122 پولنگ اسٹیشنز کا غیرسرکاری نتیجہ سامنے آگیا جس کے مطابق تحریک انصاف کے چوہدری ریاض احمد 4559 ووٹ لے کر کامیاب ہوگئے، مسلم لیگ ن کے ناصر حسین ڈار نے 4221 ووٹ لیے۔

حلقہ ایل اے 35 جموں 2 کے تمام 142 پولنگ اسٹیشنز کے غیرسرکاری نتائج موصول ہوگئے ہیں جس کے مطابق پی ٹی آئی کے چوہدری مقبول احمد 18883 ووٹ لے کر کامیاب ہوگئے، جبکہ مسلم لیگ (ن) کے چوہدر اسماعیل 16885 ووٹ لے کر دوسرے نمبر پر رہے۔ 

حلقہ ایل اے 36 جموں 3 کے تمام 138 پولنگ اسٹیشنز کے غیرسرکاری نتائج سامنے آگئے جس کے مطابق تحریک انصاف کے حافظ حامد رضا 22096 ووٹ لے کر کامیاب ہوگئے، جبکہ مسلم لیگ ن کے محمد اسحاق 20467 ووٹ لے کر دوسرے نمبر پر رہے۔

حلقہ ایل اے 37 جموں 4  کے تمام 173 پولنگ اسٹیشنز کے غیر سرکاری نتائج سامنے آگئے جس کے مطابق تحریک انصاف کے محمد اکمل سرگالہ 25963 ووٹ لیکر کامیاب قرار پائے جبکہ مسلم لیگ ن کے محمد صدیق چوہدری نے 24508 ووٹ حاصل کیے۔

حلقہ ایل اے 38 جموں 5 کے تمام 113 پولنگ اسٹیشنز کے غیر سرکاری نتائج سامنے آگئے جس کے مطابق  پی ٹی آئی کے محمد اکبر چوہدری 14283 ووٹوں سے کامیاب ہوگئے، جبکہ پاکستان مسلم لیگ ن کے ذیشان علی 8755 ووٹ حاصل کر کے دوسرے نمبر پر رہے۔ 

حلقہ ایل اے39 جموں 6 کے تمام 147 پولنگ اسٹیشنز کے غیرحتمی غیرسرکاری نتائج  آگئے، جس کے مطابق ن لیگ کے راجہ محمد صدیق 9557 ووٹ لے کر کامیاب ہوگئے جبکہ پی ٹی آئی کی نازیہ نیاز نے7510 ووٹ لیے۔

حلقہ ایل اے 40 کشمیر ویلی 1 کے تمام 45 پولنگ اسٹیشنز کا غیر سرکاری نتیجہ سامنے آگیا، جس کے مطابق پاکستان پیپلز پارٹی کے عامر عبدالغفار 2165 ووٹ لیکر کامیاب ہوگئے ہیں، پاکستان تحریک انصاف کے محمد سلیم بٹ 875 ووٹ حاصل کرسکے۔

ایل اے 41 کشمیر ویلی 2 کے تمام 17 پولنگ اسٹیشنوں کے غیرحتمی اور غیر سرکاری نتائج کے مطابق پی ٹی آئی کے غلام محی الدین 2326 ووٹ لے کر کامیاب ہوگئے، ن لیگ کے محمد اکرام بٹ 741 ووٹ لے کردوسرے نمبر پر رہے جبکہ پیپلزپارٹی کے شبیر عباس میر 166 ووٹ لے کر تیسرے نمبر پر رہے۔

حلقہ ایل اے 42 کشمیر ویلی 3 کے تمام پولنگ اسٹیشنز کا غیر سرکاری نتیجہ سامنے آگیا، جس کے مطابق تحریک انصاف کے امیدوار محمد عاصم شریف 1254 ووٹ لے کامیاب ہوگئے جبکہ سید شوکت علی شاہ 1205 ووٹوں کے ساتھ دوسرے نمبر پر رہے۔ 

غیرحتمی و غیر سرکاری نتائج کے مطابق ایل اے 43 کشمیر ویلی 4 سے پی ٹی آئی کے جاوید بٹ 782 ووٹ لیکر کامیاب ہوگئے جبکہ ن لیگ کی نسیمہ خاتون 720 ووٹ لے سکیں۔

حلقہ ایل اے 44 کشمیر ویلی 5 کے تمام 27 پولنگ اسٹیشنز کا غیر سرکاری نتیجہ سامنے آگیا ہے جس کے مطابق مسلم لیگ (ن) کے محمد احمد رضا قادری 2007 ووٹ لیکر کامیاب ہوگئے، آل جموں و کشمیر مسلم کانفرنس کی مہرالنساء 1163 ووٹ لے سکیں۔ 

حلقہ ایل اے 45 کشمیر ویلی 6 کے تمام پولنگ اسٹیشنز کے غیر حتمی غیر سرکاری نتائج کے مطابق تحریک انصاف کے عبدالماجد خان 3138 ووٹ لے کر کامیاب ہوگئے ہیں، آزاد امیدوار عبد الناصر خان 2063 ووٹ لے کر دوسرے نمبر پر ہے۔ 

انتخابی نتائج تسلیم نہیں کیے اور نہ کروں گی، مریم نواز

مریم نواز نے کہا ہے انہوں نے نتائج تسلیم نہیں کیے اور نہ کریں گی۔ انہوں نے کہا میں نے تو 2018کے نتائج بھی تسلیم نہیں کیے نہ اس جعلی حکومت کو مانا ہے۔ اس بے شرم دھاندلی پر کیا لائحہ عمل ہو گا، جماعت جلد فیصلہ کرے گی

خیال رہے کہ آزاد جموں و کشمیر کی قانون ساز اسمبلی کے انتخابات کے سلسلے میں صبح 8 بجے شروع ہونے والا پولنگ کا عمل شام 5 بجے تک بغیر کسی وقفے کے جاری رہا۔ 

انتخابات پرامن ماحول میں ہوئے، جہاں صرف ایک ہی پولنگ اسٹیشن پر فائرنگ کا واقعہ پیش آیا، جبکہ پہلی مرتبہ پولنگ اسٹیشن پر فوج تعینات نہیں کی گئی۔ 

الیکشن میں عوام بھی بھرپور پُرجوش تھی، کئی پولنگ اسٹیشنز پر گہما گہمی نظر آئی، کہیں بزرگ شہری سہارا لے کر ووٹ ڈالنے پولنگ اسٹیشن پہنچے تو کہیں وہیل چیئر اور بیساکھی کی مدد سے خصوصی افراد نے پولنگ اسٹیشنز کا رخ کیا۔

بعض مقامات پر پولنگ میں تاخیر کی شکایات بھی ملیں، پشاور کے ایک پولنگ اسٹیشن پر انتخابی عملہ لوڈشیڈنگ سے پریشان رہا۔

گوجر بانڈی میں لڑکیوں کی بڑی تعداد نے پہلی مرتبہ ووٹ ڈالا، شہریوں کا کہنا تھا کہ بنیادی مسائل حل کروانے کے لیے ووٹ ڈال رہے ہیں۔

بزرگ، جوان، خواتین، مرد ووٹروں پر مشتمل کشمیریوں کی بڑی تعداد پولنگ اسٹیشنز پر اپنا ووٹ ڈالنے کے لیے قطاروں میں لگی رہی۔

ڈل چٹیاں: سیاسی جماعت کا پولیس پر حملہ، 5 اہلکار زخمی

آزاد کشمیر کے علاقے ڈل چٹیاں کے حلقے ایل اے 32کے پولنگ اسٹیشن 54 میں ایک سیاسی جماعت کے کارکنوں نے پولیس پارٹی پر حملہ کر دیا۔

ڈل چٹیاں کے ایس پی ریاض مغل کے مطابق سیاسی جماعت کے کارکنوں کی جانب سے کیے گئے حملے میں 5 پولیس اہلکار زخمی ہوئے ہیں۔

انہوں نے بتایا کہ پولیس پر حملے کا واقعہ خواتین پولنگ اسٹیشن پر پیش آیا ہے، جماعتِ اسلامی کے کارکنوں کو خواتین کے پولنگ اسٹیشن جانے سے روکا تھا۔

ڈل چٹیاں کے ایس پی ریاض مغل کا یہ بھی کہنا تھا کہ کارکنوں نے ڈنڈوں سے پولیس پارٹی پر حملہ کیا۔


کوٹلی: سیاسی کارکنوں میں تصادم، 2 جاں بحق، 2 زخمی

آزاد کشمیر کے ضلع کوٹلی کے حلقے ایل اے 12چڑھوئی میں 2 سیاسی جماعتوں کے کارکنوں کے درمیان ہونے والے تصادم اور جھگڑے کے دوران ہونے والی فائرنگ سے زخمی ہونے والا 1 اور شخص بھی چل بسا، جس کے بعد واقعے میں ہلاکتوں کی تعداد 2 ہو گئی۔

کوٹلی پولیس کا کہنا ہے کہ فائرنگ کے اس واقعے میں 2 افراد زخمی بھی ہوئے ہیں جو اسپتال میں زیرِ علاج ہیں۔

کوٹلی کے ایس ایس پی راجہ محمد اکمل خان نے اس سے قبل جاں بحق ہونے والے نوجوان کا نام ظہیر بتایا تھا۔

پولیس کے مطابق سیاسی جماعتوں کے کارکنان میں جھگڑے کے بعد علاقے میں کشیدگی پائی جاتی ہے۔

ادھر مظفر آباد کے حلقہ ایل اے 27 کے پولنگ اسٹیشن کوپرا گلی میں بھی 2 گروپوں میں جھگڑا ہوا تھا جس کے بعد وہاں پولنگ کا عمل رک گیا تھا۔


الیکشن کیلئے سرکاری وسائل استعمال ہو رہے ہیں: مئیر راولپنڈی

راولپنڈی کے میئر سردار نسیم کا کہنا ہے کہ ہم اپنے ووٹرز کی حفاظت کے لیے موجود ہیں، کشمیری ووٹرز گھروں سے نکلیں، الیکشن کے لیے سرکاری وسائل استعمال ہو رہے ہیں۔

آزاد کشمیر کے عام انتخابات کے سلسلے میں مئیر راولپنڈی سردار نسیم نے شہر میں مختلف علاقوں میں قائم پولنگ اسٹیشنز کا دورہ کیا۔

اس موقع پر انہوں نے کہا کہ سپریم کورٹ کے حکم کےباوجود حکومت ہمیں راول پنڈی کا مئیر ماننے کو تیار نہیں ہے۔

راولپنڈی کے میئر کا مزید کہنا ہے کہ پولیس سمیت تمام سرکاری وسائل آزاد کشمیر کے الیکشن کے لیے استعمال کیئے جا رہے ہیں۔

سردار نسیم نے یہ الزام بھی عائد کیا ہے کہ الیکشن مہم کے لیے سرکاری گاڑیاں اور وسائل کا استعمال کیا جا رہا ہے۔


پولنگ کے عمل سے مطمئن نہیں: نون لیگی امیدوار

آزاد کشمیر کے حلقہ ایل اے 39 جموں 6 سے مسلم لیگ نون کے امیدوار راجہ صدیق کا کہنا ہے کہ ہم پولنگ کے عمل سے مطمئن نہیں ہیں۔

ٹیکسلا میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے آزاد کشمیر کے حلقہ ایل اے 39 جموں 6 سے مسلم لیگ نون کے امیدوار راجہ صدیق نے کہا کہ بیلٹ پیپر کا ڈیزائن دھاندلی کے زمرے میں آتا ہے۔

انہوں نے کہا کہ بیلٹ پیپر فولڈ کرنے سے میرا انتخابی نشان متنازع ہو گا، اس دھاندلی میں وفاقی اور صوبائی دونوں حکومتیں شامل ہیں۔

راجہ محمد صدیق کا مزید کہنا ہے کہ میرے اکثر ووٹ ضائع ہو جائیں گے، الیکشن کمیشن مرکزی حکومت کی کٹھ پتلی ہے۔

آزاد کشمیر کے حلقہ ایل اے 39 جموں 6 سے مسلم لیگ نون کے امیدوار راجہ صدیق کا یہ بھی کہنا ہے کہ ہمارے ووٹرز کا اندراج درست طریقے سے نہیں کیا گیا۔


بارکھان میں صرف 1 ووٹر کیلئے پولنگ اسٹیشن قائم

بلوچستان کے ضلع بارکھان میں آزاد کشمیر کے حلقے ایل اے 34 کے لیے ایک خاتون ووٹر رجسٹرڈ ہیں۔

آزاد کشمیر کے حلقے ایل اے 34 کے انتخابات کے لیے صرف ایک خاتون ووٹر کے لیے بارکھان میں گورنمنٹ اسکول میں پولنگ اسٹیشن قائم کیا گیا ہے۔

واضح رہے کہ آزاد کشمیر کے عام انتخابات کے سلسلے میں ووٹنگ کا سلسلہ جاری ہے،پولنگ بغیر کسی وقفے کے شام 5 بجے تک جاری رہے گی۔


ڈپٹی اسپیکر قومی اسمبلی کی پولنگ اسٹیشن آمد، مخالفین کے نعرے

آزاد کشمیر کے انتخابات کے سلسلے میں ڈپٹی اسپیکر قومی اسمبلی قاسم سوری کوئٹہ میں آزاد کشمیر اسمبلی کے حلقے ایل اے 40کیلئے قائم پولنگ اسٹیشن پہنچ گئے۔

ڈپٹی اسپیکر قومی اسمبلی قاسم سوری کو پولنگ اسٹیشن پر دیکھ کر پیپلز پارٹی اور نون لیگ کے کارکنوں نے ان کے خلاف نعرے لگائے۔

اس موقع پر میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے ڈپٹی اسپیکر قومی اسمبلی قاسم سوری نے کہا کہ آزاد کشمیر کے انتخابات سے متعلق آج تاریخ ساز دن ہے۔

انہوں نے کہا کہ 25 جولائی 2018ء کو ملک بھر سے پی ٹی آئی کی جیت ہوئی تھی، کشمیری بھائی آج کے الیکشن میں بڑھ چڑھ کر حصہ لے رہے ہیں۔

قومی اسمبلی کے ڈپٹی اسپیکر قاسم سوری کا مزید کہنا ہے کہ آزاد جموں و کشمیر کے انتخابات سے متعلق تمام جماعتوں نے بھرپور الیکشن مہم چلائی ہے۔

انہوں نے یہ بھی کہا کہ وزیرِ اعلیٰ بلوچستان جام کمال اچھے انداز میں کام کر رہے ہیں،انہیں پی ٹی آئی کی مکمل حمایت حاصل ہے۔


ووٹ چور دھاندلی سے باز رہیں: احسن اقبال

مسلم لیگ نون کے جنرل سیکریٹری احسن اقبال کا کہنا ہے کہ ووٹ چوروں کو خبردار کیا جاتا ہے کہ دھاندلی سے باز رہیں۔

لاہور میں مسلم لیگ نون کے جنرل سیکریٹری احسن اقبال کی سربراہی میں اجلاس ہوا۔

اجلاس میں نون لیگی رہنماؤں سینیٹر رانا مقبول، عظمیٰ بخاری سمیت دیگر رہنما شریک ہوئے جنہوں نے آزاد کشمیر اسمبلی کے انتخابات کی صورتِ حال پر تبادلۂ خیال کیا۔

احسن اقبال نے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ مسلم لیگ نون کا خصوصی مانیٹرنگ سیل صبح سے کام کر رہا ہے۔

انہوں نے کہا کہ آزاد جموں و کشمیر کے انتخابات میں ووٹ کی حفاظت ہمارا فرض ہے۔

نون لیگی رہنما کا کہنا ہے کہ عوام کے حقِ حکمرانی کے تحفظ کے لیے فرض انجام دے رہے ہیں۔

انہوں نے مزید کہا کہ الیکشن میں دھاندلی، دھونس اور گڑبڑ کے تمام واقعات کا اندراج کیا جا رہا ہے۔

مسلم لیگ نون کے جنرل سیکریٹری احسن اقبال کا یہ بھی کہنا ہے کہ الیکشن سیل کی مدد سے عوام اور میڈیا کے سامنے حقائق لاتے رہیں گے۔


پشاور: پریزائیڈنگ آفیسر اور اسکول پرنسپل میں ہاتھا پائی

پشاور میں آزاد کشمیر کے حلقہ ایل اے 39 جموں میں انتخابی عمل کے دوران پریزائیڈنگ آفیسر اور اسکول کے پرنسپل میں ہاتھا پائی ہوئی ہے۔

ذرائع کے مطابق گورنمنٹ شہید حسنین علی شاہ ہائر سکینڈری اسکول کے پولنگ اسٹیشن میں پریزائیڈنگ آفیسر اور اسکول کے پرنسپل کے درمیان بجلی کی معطلی کے معاملے پر ہاتھا پائی ہوئی ہے۔

پریزائیڈنگ آفیسر نے صبح بجلی بند ہونے کی شکایت کی تھی، اسکول پرنسپل پریزائیڈنگ آفیسر کی شکایت پر نالاں ہو کر دست و گریباں ہو گئے۔

اس صورتِ حال کے بعد پریزائیڈنگ افسر اور پولنگ کے عملے نے احتجاجاً ڈیوٹی دینے سے انکار کر دیا، جس کے بعد حلقہ ایل اے 39 جموں 6 میں عام انتخابات کے لیے پولنگ کا عمل روک دیا گیا۔

بعد ازاں پولنگ اسٹیشن میں پریزائیڈنگ افسر اور اسکول پرنسپل کے درمیان صلح کرا دی گئی جس کے بعد رکا ہوا پولنگ کا عمل دوبارہ شروع ہو گیا۔


تاج حیدر کا سیکریٹری الیکشن کمیشن کو خط

پاکستان پیپلز پارٹی کے سینئر رہنما اور مرکزی الیکشن سیل کے سربراہ تاج حیدر نے سیکریٹری الیکشن کمیشن کو خط لکھا ہے جس میں آزاد کشمیر کے انتخابی حلقے ایل اے 29 کے پولنگ اسٹیشن نمبر 29 اور 30 میں دوبارہ پولنگ شروع کرنے کا مطالبہ کیا ہے۔

پولنگ اسٹیشن نمبر 29 اور30 پر تصادم کے باعث پولنگ بند کر دی گئی تھی۔

تاج حیدر نے خط میں لکھا ہے کہ حلقہ ایل اے 29 کے پولنگ اسٹیشن نمبر 108 پر 2 پولنگ بوتھس میں سے صرف 1 فعال ہے۔

خط میں تاج حیدر نے یہ بھی لکھا ہے کہ ایل اے 16 میں پولنگ اسٹیشن نمبر 98 پر پی پی کے ووٹرز پر تشدد کیا گیا اور انہیں ووٹ دینے سے روک دیا گیا۔

اس سے قبل پیپلز پارٹی کے ترجمان نے کہا تھا کہ منڈہول بل بازار کے پولنگ اسٹیشن پر پی ٹی آئی کے کارکن بیلٹ پیپرز پر مہر لگا رہے ہیں۔

پیپلز پارٹی کے ترجمان کے مطابق پیپلز پارٹی کے رہنما سینیٹر تاج حیدر نے الیکشن کمیشن کو واقعے کی تحریری شکایت پیش کی تھی۔


باغ میں دوبارہ تصادم، 7 افراد زخمی، پولنگ رک گئی

آزاد کشمیر کے ضلع باغ میں ووٹنگ کے دوران حلقہ ایل اے 15 وسطی باغ سلہٹ کے پولنگ اسٹیشن پر دوبارہ تصادم ہوا ہے، جس کے بعد پولنگ ایک بار پھر بند کر دی گئی ہے۔

ہاڑی گہل میں تصادم کے دوران ہوائی فائرنگ کی گئی، جبکہ ڈنڈوں اور پتھراؤ سے 7 افراد زخمی ہوئے۔

مجسٹریٹ سیکٹر 3 کے مطابق 7 ووٹ کاسٹ ہونے کے بعد کارکنوں میں دوبارہ تصادم ہوا ہے۔

باغ میں سیاسی کارکنوں میں تصادم کے بعد ڈپٹی کمشنر باغ آر او، فوج اور رینجرز کے ہمراہ ہاڑی گہل پہنچ گئے۔

واضح رہے کہ آزاد جموں کشمیر کی قانون ساز اسمبلی کے انتخابات کے سلسلے میں ووٹ ڈالنے کا عمل جاری ہے، پولنگ شام 5 بجے تک بغیر کسی وقفے کے جاری رہے گی۔


سماہنی میں PTI امید وار کے قافلے پر پتھراؤ

آزاد کشمیر کے ضلع بھمبر کی تحصیل سماہنی میں پی ٹی آئی کے امید وار چوہدری علی شان کے قافلے پر مخالفین کی جانب سے مبینہ پتھراؤ کیا گیا ہے۔

سماہنی پولیس کے مطابق پتھراؤ کا واقعہ پولنگ اسٹیشن نمبر 73 اور 74 کے قریب پیش آیا ہے۔

سماہنی پولیس نے مزید بتایا کہ مبینہ طور پر مخالفین کے پتھراؤ سے 3 گاڑیوں کے شیشے ٹوٹ گئے۔

سماہنی پولیس کا یہ بھی کہنا ہےکہ پتھراؤ کے مقام پر اس وقت حالات مکمل کنٹرول میں ہیں اور پولنگ کا عمل جاری ہے۔


پولنگ ایجنٹ کو باہر نکالنے کی مذمت کرتے ہیں: خرم دستگیر

مسلم لیگ نون کے رہنما خرم دستگیر خان کا کہنا ہے کہ گوجرانوالہ میں پولنگ ایجنٹ کو پولنگ اسٹیشن سے باہر نکالنے کی مذمت کرتے ہیں۔

گوجرانوالہ میں مسلم لیگ نون کے رہنما خرم دستگیر خان نے رانا ثناء اللّٰہ کے ہمراہ میڈیا سے گفتگو کے دوران یہ بات کہی۔

انہوں نے یہ بھی کہا کہ ہمارے پولنگ ایجنٹ پر امن رہیں گے لیکن بیلٹ باکس کے پاس رہیں گے، ہم تاریخی فتح حاصل کر کے میاں نواز شریف کے قدموں میں ڈالیں گے۔


پولنگ اسٹیشن کا دورہ ڈپٹی کمشنر کا کام نہیں: رانا ثناء اللّٰہ

مسلم لیگ نون کے رہنما رانا ثناء اللّٰہ کا کہنا ہے کہ ڈپٹی کمشنر گوجرانولہ پولنگ اسٹیشن کا دورہ ترک کر دیں، یہ ان کا کام نہیں ہے۔

گوجرانوالہ میں مسلم لیگ نون کے رہنما رانا ثناء اللّٰہ نے خرم دستگیر خان کے ہمراہ میڈیا سے گفتگو کے دوران یہ بات کہی۔

انہوں نے کہا کہ فارم 45 دیئے بغیر کسی پریزائیڈنگ افسر کو نہیں چھوڑیں گے، ووٹوں کی گنتی پولنگ ایجنٹس کے سامنے ہو گی۔

رانا ثناء اللّٰہ نے کہا کہ جماعتِ اسلامی کا صدر اپنا الیکشن چھوڑ کر حکومتی جماعت کے حق میں دستبردار ہو گیا، پاکستان میں جو 12 سیٹیں ہیں ان میں سے 5 سیٹیں گوجرانولہ ڈویژن کی ہیں۔

انہوں نے یہ بھی کہا کہ الیکشن شروع ہوا توشیدا ٹلی فرما رہے تھے کہ عمران خان 2 تہائی اکثریت سے حکومت بنائیں گے، رات وہی شیدا ٹلی کہہ رہے تھے کہ حکومت بنائیں گے چاہے ایک سیٹ سے بنائیں۔


ڈپٹی کمشنر گوجرانوالہ نے پولنگ ایجنٹس کو پولنگ اسٹیشن سے نکال دیا

گوجرانوالہ کے ڈپٹی کمشنر گورنمنٹ ہائی اسکول نمبر 2 میں قائم پولنگ اسٹیشن پہنچ گئے جنہوں نے وہاں سے نون لیگ اور مسلم کانفرنس کے پولنگ ایجنٹوں کو باہر نکال دیا۔

پولنگ روم سے نکالنے پر نون لیگی پولنگ ایجنٹوں نے احتجاج کیا، اس موقع پر مسلم لیگ نون کے پولنگ ایجنٹ اور ڈپٹی کمشنر گوجرانوالہ میں تلخ کلامی بھی ہوئی۔

ڈپٹی کمشنر اور نون لیگی پولنگ ایجنٹ میں تلخ کلامی کے بعد اس پولنگ اسٹیشن پر پولنگ روک دی گئی، نون لیگ کے امیدوار چوہدری اسماعیل گجر بھی مذکورہ پولنگ اسٹیشن پہنچ گئے۔

ڈپٹی کمشنر گوجرانوالہ کا کہنا ہےکہ پولنگ ایجنٹوں کو پولنگ روم سے نکالا تھا۔

دوسری جانب پولنگ ایجنٹوں کا مؤقف ہے کہ ڈپٹی کمشنر گوجرانوالہ ہمیں روم سے نکال کر دھاندلی کرانا چاہتے ہیں۔

گوجرانوالہ: نون لیگی امیدوار چوہدری اسماعیل گجر کا ووٹ کاسٹ

گوجرانوالہ میں آزاد کشمیر کے حلقہ ایل اے 35 جموں 2 میں انتخابات کیلئے نون لیگ کے امیدوار چوہدری اسماعیل گجر نے اپنا ووٹ پولنگ اسٹیشن نمبر 16 میں کاسٹ کیا۔

کراچی: 1 پولنگ اسٹیشن میں کوئی ووٹر نہیں پہنچا

کراچی میں آزاد جموں کشمیر کے انتخابات کے سلسلے میں 2 نشستوں کے لیے پولنگ ہو رہی ہے، کشمیر وادی ون ایل اے 40 کے لیے شاہ فیصل کالونی میں واقع پولنگ اسٹیشن میں ووٹنگ جاری ہے تاہم حلقہ ایل اے 34 جموں ون کے لیے ملالہ یوسفزئی اسکول میں قائم پولنگ اسٹیشن میں تاحال کوئی ووٹر نہیں پہنچا۔

کراچی کے ضلع جنوبی کے واحد پولنگ اسٹیشن ملالہ یوسف زئی اسکول میں کل 55 ووٹ درج ہیں، جہاں 24 مرد اور 31 خواتین ووٹرز میں سے کوئی بھی ووٹ ڈالنے نہیں پہنچا ہے۔

ایل اے 34 جموں ون کے حلقے میں 14 امیدوار میدان میں ہیں، ایل اے 34 جموں ون سندھ کے 29 پولنگ اسٹیشن میں ووٹرز کی تعداد 1 ہزار 390 ہے۔

ایل اے 34 جموں ون کے حلقے کے لئے کراچی کے 11 پولنگ اسٹیشنز میں پولنگ کا عمل جاری ہے۔

کراچی کے علاقے شاہ فیصل کالونی میں واقع گورنمنٹ اسکول میں 2 پولنگ اسٹیشن قائم کیئے گئے ہیں جہاں آزاد کشمیر کے حلقہ ایل اے 34 اور ایل اے 40 کے لیے پولنگ ہو رہی ہے۔

اسی طرح کیماڑی کے علاقے میں واقع گورنمنٹ ماڈل اسکول جیکسن بازار میں بھی پولنگ ہو رہی ہے۔

پولنگ اسٹیشن میں عملہ ووٹرز کے اندراج اور ان کی رہنمائی کے لیے موجود ہے، اس پولنگ اسٹیشن میں 150 رجسٹرڈ ووٹرز ہیں۔

کراچی میں تمام پولنگ اسٹیشنز پر سیکیورٹی سخت ہے، رینجرز اور پولیس کی نفری تعینات ہے۔

شہرِ قائد میں قائم تمام پولنگ اسٹیشنز میں کورونا وائرس کی ایس او پیز پر عمل بھی کروایا جا رہا ہے۔


کشمیر میں بھی مودی کے یاروں کو شکست ہو گی: فرخ حبیب

وزیرِ مملکت برائے اطلاعات فرخ حبیب کا کہنا ہے کہ گلگت بلتستان کی طرح کشمیر میں بھی مودی کے یاروں کو شکست ہو گی۔

یہ بات وزیرِ مملکت برائے اطلاعات فرخ حبیب نے سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر جاری کیئے گئے ایک بیان میں کہی ہے۔

انہوں نے کہا ہے کہ کرپشن، منی لانڈرنگ، جعلی اکاؤنٹس اور سرٹیفائیڈ جھوٹوں کو بدترین شکست ہو گی، وزیرِ اعظم عمران خان نے عالمی فورمز پر بطور سچے سفیر کشمیریوں کا مقدمہ پیش کیا۔

فرخ حبیب کا مزید کہنا ہے کہ وزیرِ اعظم عمران خان نے کشمیریوں کا مقدمہ مثالی انداز سے پیش کر کے ان کے دل جیت لیے ہیں۔

وزیرِمملکت برائے اطلاعات کا یہ بھی کہنا ہے کہ ان شاء اللّٰہ آج کشمیری عوام بلے پر ٹھپہ لگا کر پی ٹی آئی کو کامیاب کروائیں گے۔


ایک دن تمام کشمیری اسی آزادی سے ووٹ ڈالینگے: فواد چوہدری

وفاقی وزیرِ اطلاعات و نشریات فواد چوہدری کا کہنا ہے کہ ایک دن پورے (آزاد و مقبوضہ) کشمیر کے لوگ اسی آزادی سے اپنی رائے کا اظہار کریں گے۔

یہ بات وفاقی وزیرِ اطلاعات و نشریات فواد چوہدری نے سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر جاری کیئے گئے ایک بیان میں کہی ہے۔

انہوں نے کہا ہے کہ آزاد کشمیر میں انتخابات مقبوضہ کشمیر کے لوگوں کے خوابوں کو جلا بخشتے ہیں۔

فواد چوہدری کا مزید کہنا ہے کہ ایک دن تمام کشمیری اپنے نمائندوں پر مشتمل حکومت بنائیں گے۔

وفاقی وزیرِ اطلاعات و نشریات کا یہ بھی کہنا ہے کہ آج کا انتخاب وزیرِ اعظم عمران خان کے نئے کشمیر کے نام ہے۔


لاہور میں 25 پولنگ اسٹیشنز میں ووٹنگ

آزاد کشمیر قانون ساز اسمبلی کے لیے لاہور ڈویژن میں پولنگ کا عمل جاری ہے، جس کے لیے لاہور ڈویژن میں 25 پولنگ اسٹیشن بنائے گئے ہیں۔

تمام پولنگ اسٹیشنز پر مرد و خواتین ووٹرز کی آمد اور ووٹ کاسٹ کرنے کا سلسلہ جاری ہے۔

لاہور کالج فار ویمن یونیورسٹی میں بھی بزرگ، جوان، خواتین و مرد کشمیری ووٹرز آ رہے ہیں اور اپنا ووٹ کاسٹ کر رہے ہیں۔

ریٹرننگ آفیسر توقیر اقبال کے مطابق آزاد کشمیر انتخابات کے لاہور ڈویژن میں 2 حلقے ہیں، ایک جموں اور ایک ویلی، جموں کی ایک نشست کے 15، جبکہ ویلی کی نشست کے 10 پولنگ اسٹیشن ہیں۔

انہوں نے بتایا کہ ایل اے 34 جموں کی نشست پر 13 امیدواروں کے درمیان مقابلہ ہے، جبکہ ایل اے 41 ویلی کی نشست پر 8 امیدوار میدان میں ہیں۔

ریٹرننگ آفیسر کا کہنا ہےکہ پولنگ کا عملہ پولنگ اسٹیشنز پر موجود ہے جو اپنی ڈیوٹی انجام دے رہا ہے، تمام انتظامات مکمل ہیں اور پولنگ کا عمل جاری ہے۔

انہوں نے مزید بتایا کہ لاہور میں 3 پولنگ اسٹیشن انتہائی حساس، 19 حساس اور 3 نارمل قرار دیئے گئے ہیں، ڈسٹرکٹ الیکشن کمیشن دفتر میں کنٹرول روم قائم کیا گیا ہے۔

ریٹرننگ آفیسر توقیر اقبال کا یہ بھی کہنا ہے کہ پولنگ اسٹیشنوں کے اندر اور باہر پولیس نے اپنی ڈیوٹیاں سنبھال رکھی ہیں اور وہی وہاں امن و امان قائم رکھنے کی پابند ہو گی۔


مظفر آباد میں میڈیا کو کوریج سے روک دیا گیا

مظفر آباد کے پولنگ اسٹیشن گوجر بانڈی میں میڈیا کو پولنگ عمل کی ویڈیو بنانے اور کوریج کرنے سے روک دیا گیا۔

وہاں تعینات پریزائڈنگ افسر کا اس حوالے سے کہنا ہے کہ مظفر آباد کے پولنگ اسٹیشن گوجر بانڈی میں میڈیا کو پولنگ کے عمل کی ویڈیو بنانے کی اجازت نہیں ہے۔

پریزائڈنگ افسر کا یہ بھی کہنا ہے کہ ڈی آر او آفس سے ہدایت ہے کہ پولنگ کے عمل کی ویڈیو نہ بنانے دی جائے۔

گوجرانوالہ: پولنگ اسٹیشن کے باہر نون لیگی انتخابی کیمپ اکھاڑ دیا گیا

گوجرانوالہ میں پولیس نے پولنگ اسٹیشن کے باہر مسلم لیگ نون کا انتخابی کیمپ اکھاڑ دیا۔

انتخابی کیمپ گوجرانوالہ میں واقع گورنمنٹ گرلز ہائی اسکول نمبر 2 کے باہر لگایا گیا تھا۔

گوجرانوالہ پولیس کا اس حوالے سے کہنا ہےکہ انتخابی کیمپ پولنگ اسٹیشن سے 300 میٹر سے کم فاصلے پر لگایا گیا تھا۔

گوجرانوالہ پولیس کا یہ بھی کہنا ہے کہ نون لیگی کارکنان کو 300 میٹر کے فاصلے پر انتخابی کیمپ لگانے کا کہا گیا ہے۔

کراچی میں 2 نشستوں کیلئے پولنگ جاری

کراچی میں آزاد جموں کشمیر کے انتخابات کے سلسلے میں 2 نشستوں کے لیے پولنگ جاری ہے، کشمیر وادی ون ایل اے 40 کے لیے شاہ فیصل کالونی میں واقع پولنگ اسٹیشن میں پہلا ووٹ کاسٹ کر دیا گیا۔

کراچی کے علاقے شاہ فیصل کالونی میں واقع گورنمنٹ اسکول میں 2 پولنگ اسٹیشن قائم کیئے گئے ہیں جہاں آزاد کشمیر کے حلقہ ایل اے 34 اور ایل اے 40 کے لیے پولنگ ہو رہی ہے۔

اسی طرح کیماڑی کے علاقے میں واقع گورنمنٹ ماڈل اسکول جیکسن بازار میں بھی پولنگ ہو رہی ہے۔

پولنگ اسٹیشن میں عملہ ووٹرز کے اندراج اور ان کی رہنمائی کے لیے موجود ہے، اس پولنگ اسٹیشن میں 150 رجسٹرڈ ووٹرز ہیں۔

کراچی میں تمام پولنگ اسٹیشنز پر سیکیورٹی سخت ہے، رینجرز اور پولیس کی نفری تعینات ہے۔

شہرِ قائد میں قائم تمام پولنگ اسٹیشنز میں کورونا وائرس کی ایس او پیز پر عمل بھی کروایا جا رہا ہے۔


گنڈا پور کیخلاف کارروائی ہو رہی ہے: چیف الیکشن کمشنر آزاد کشمیر

چیف الیکشن کمشنرآزاد کشمیر جسٹس ریٹائرڈ عبدالرشید سلہریا کا کہنا ہے کہ علی امین گنڈا پور کے خلاف کارروائی ہو رہی ہے۔

مظفر آباد میں چیف الیکشن کمشنرآزاد کشمیر جسٹس ریٹائرڈ عبدالرشید سلہریا نے پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا کہ گنڈا پور کو چھوڑو آج اچھی اچھی باتیں کریں گے۔

انہوں نے کہا کہ الیکشن کی تیاری میں حکومت کی پوری معاونت حاصل رہی ہے، الیکشن میں ٹرن آؤٹ 56 فیصد سے زیادہ ہو گا۔

چیف الیکشن کمشنرآزاد کشمیر کا یہ بھی کہنا ہے کہ پریزائیڈنگ افسر سے کہا ہے کہ نتائج کا موقع پر اعلان کریں اور پولنگ ایجنٹ کو نتائج کی کاپی دیں۔


آزاد کشمیر، کتنے حلقے، کتنے ووٹرز؟

آزاد کشمیر کے 45 حلقوں میں پاکستان تحریکِ انصاف، مسلم لیگ نون اور پاکستان پیپلز پارٹی کے درمیان سخت مقابلے کی توقع کی جا رہی ہے۔

آزاد کشمیر کے 45 حلقوں میں اپنے نمائندوں کے انتخاب کے لیے 32 لاکھ سے زائد ووٹر حقِ رائے دہی استعمال کر رہے ہیں۔

پاکستان بھر میں رہنے والے 4 لاکھ 5 ہزار 253 کشمیری ووٹر بھی آزاد کشمیر اسمبلی کے لیے اپنے من پسند امیدواروں کو ووٹ ڈالیں گے۔

آزاد کشمیر میں موجود کُل 32 لاکھ 20 ہزار 793 ووٹرز اپنا حقِ رائے دہی استعمال کر رہے ہیں، جبکہ 4 لاکھ 5 ہزار 253 مہاجرین بھی ووٹ دیں گے۔

الیکشن کمیشن کے حکم پر انتخابی عمل کے دوران حساس پولنگ اسٹیشنوں پر فوج تعینات کردی گئی ہے، 40 ہزار پولیس اہلکار بھی الیکشن ڈیوٹی انجام دے رہے ہیں۔

سابق وزرائے اعظم وزارتِ عظمیٰ کی دوڑ میں شامل

سابق وزرائے اعظم اور سیاسی جماعتوں کے سربراہ آزاد جموں و کشمیر کی وزارتِ عظمیٰ کی دوڑ میں شامل ہیں۔

آزاد کشمیر کے الیکشن میں مسلم لیگ نون کے بیرسٹر افتخار علی گیلانی کا مقابلہ خواجہ فاروق سے ہورہا ہے، وزیرِ اعظم آزاد کشمیر راجہ فاروق حیدر اور پاکستان پیپلز پارٹی (پی پی پی) کے صاحبزادہ اشفاق ظفر مدِمقابل ہیں، جبکہ بیرسٹر سلطان محمود چوہدری اور مسلم لیگ نون کے امید وار چوہدری سعید آمنے سامنے ہیں۔

کس جماعت کے کتنے امیدوار؟

مسلم لیگ نون، پاکستان پیپلز پارٹی، پاکستان تحریکِ انصاف اور تحریکِ لبیک پاکستان کے 33، 33 امیدوار آزاد کشمیر کے انتخابات میں حصہ لے رہے ہیں۔

مسلم کانفرنس کے 32 اور جماعتِ اسلامی کے 28 امید وار بھی انتخابی میدان میں موجود ہیں۔