| |
Home Page
جمعہ 04 ذیقعدہ 1438ھ 28 جولائی 2017ء
June 30, 2017 | 12:00 am
چیمپئنز ٹرافی کی فتح نے پاکستانی کرکٹ کوچز کو لائف لائن دیدی

Todays Print

کراچی (اسٹاف رپورٹر) آئی سی سی چیمپئنز ٹرافی میں پاکستان کی تاریخی جیت کے بعد بظاہر ایسا لگ رہا ہے کہ پاکستانی ٹیم کے ساتھ کام کرنے والے تمام غیر ملکی کوچز اپنے عہدوں کو برقرار رکھ پائیں گے۔ فوری طور پر کسی کوچ کو تبدیل کرنے کی کوئی تجویز زیر غور نہیں ہے۔ پاکستان کرکٹ ٹیم کے ساتھ کام کرنے والے بولنگ کوچ اظہر محمود، بیٹنگ کوچ گرانٹ فلاور، فیلڈنگ کوچ اسٹیو رکسن ،ٹرینر گرانٹ لوڈناور فزیو شین ہیز کے عہدوں کی معیاد اگلے سال ختم ہوگی تاہم لاہور میں ہارون رشید، مدثر نذر، انضمام الحق پر مشتمل کوچز ریویو کمیٹی کوچز کی کارکردگی کا جائزہ لے رہی ہے اور اس سلسلے میں ہیڈ کوچ مکی آرتھر سے بھی مشاورت کی جارہی ہے۔ کوچ ریویو کمیٹی کی کئی میٹنگز بھی ہوچکی ہیں۔ پی سی بی چیئرمین شہریار خان کا کہنا ہے کہ آئی سی سی چیمپئنز ٹرافی میں بھارت کے ہاتھوں پہلی شکست کے بعد مکی آرتھرپر تنقید کی گئی تھی۔ لیکن ہم نےاس پراعتماد برقرار رکھا، نتیجہ سب کےسامنے ہے۔ ہم نےصرف اچھے اور ماہرافراد کی تعیناتی کی ہوئی ہے۔ چیمپئنز ٹرافی میں کامیابی سے ہماری ہر سطح کی کرکٹ کو فائدہ ہو گا۔ ہم نے دنیا کی بہترین ٹیموں کو شکست دی ہےاب ہماری جونئیر ٹیموں میں بھی اعتماد آئیگا۔ ہماری فرسٹ کلاس کرکٹ کا معیار بھی بلند ہو گا، شہریار خان نے کہا کہ بگ تھری کا خاتمہ دنیا بھر کی کرکٹ کے لیے خوش آئند ہے۔ بگ تھری کے خاتمے سے پاکستان کو بھی فائدہ ہو گا۔ بھارت کو نئے ماڈل میں کچھ مالی فائدہ بھی دیا گیا ہے۔ سری لنکا کو اپنی اہمیت کم ہونیکا اندیشہ تھا وہ بھی ختم ہو گیا ہے۔