| |
Home Page
منگل 3؍ جمادی الثانی 1439ھ 20؍ فروری 2018ء
انور شعور
February 20, 2018
خاتونِ اوّل

دنیا میں، خاتونِ اوّلکب ہے ہر ذی جاہ کی بیویپاتی ہے یہ لقب، یہ منصبصدر کی بیوی، شاہ کی بیوی
February 19, 2018
عدل

جس طرح ہر بات کا ہوتا ہے کوئی بندوبستچاہئے قوم و وطن کو انتظامِ عدل بھیذمہ داروں کو نہ ہو اس امر کا احساس اگرعدلیہ کا دردِ سر ہے کیا قیامِ عدل بھی
February 18, 2018
منہ

سماعت کے وقت آجکل بعض ملزمکسی بات پر منہ کہاں کھولتے ہیںعدالت میں رہتے ہیں چَپ احتراماًمگر باہر آکر بہت بولتے ہیں
February 17, 2018
توجّہ

ہیں منصبی امور توجّہ کے منتظراپنی نگاہ ان کی طرف موڑ دیجئےہر بوجھ اپنی پیٹھ پہ کیوں لادتے ہیں آپکچھ کام دوسروں کے لئے چھوڑ دیجئے
February 16, 2018
یہ بھی

وقت کا طور ہے یہی، وقت کا ڈھنگ ہے یہیایک طرف زوال ہے، ایک طرف کمال ہےیہ بھی فقط قیاس ہے رات کبھی نہ جائے گیصبح کبھی نہ آئے گی یہ بھی فقط خیال ہے
February 15, 2018
معرکہ

مہنگائی سے لڑائی، ملاوٹ سے جنگ کیاس معرکے میں ہوگئے پیوندِ خاک ہمجعلی مقابلے میں ٹھکانے نہیں لگےاصلی مقابلے میں ہوئے ہیں ہلاک ہم
February 14, 2018
سنا ہے

سنا ہے، پولیس نے کئی ’’ملزموں کو‘‘کسی اور حالت میں پہنچا دیا ہے زمیں کی عدالت سے بالا ہی بالاخدا کی عدالت میں پہنچا دیا ہے
February 13, 2018
کیا کیا

اپنی ساری رونقوں کے باوجودسونی سونی لگ رہی ہیں بستیاںسال کے آغاز ہی میں وقت نےچھین لی ہیں آہ کیا کیا ہستیاں
February 12, 2018
اتّحاد

امن و سلامتی و محبت ہے اتّحادخدمت ہے اتّحاد ، سیاست ہے اتّحاداے باہمی جہاد میں مشغول دوستو!فی الوقت اپنی اصل ضرورت ہے اتّحاد
February 11, 2018
یہاں

دیانت سے گزارا کرنے والےبڑی تکلیف میں ہیں، طیش میں ہیںیہاں ایمانداروں کو کہاں چینجو بے ایمان ہیں وہ عیش میں ہیں
February 10, 2018
فریقین

نہ ہوگا فریقین میں اتّحادتو بیچارے جانے کدھر جائیں گےکسی کو ضرورت نہیں فکر کییہ لڑ لڑ کے خود ہی بکھر جائیں گے
February 09, 2018
کہیں

دفاتر میں ہے رشوتوں کا رواجتو بازار میں نفع خوری کا راجکہیں پیسے پیسے کی ہے احتیاجکہیں لوگ اربوں کے مالک ہیں آج
February 08, 2018
تکیہ

کرنے لگے ہیںتکیہ ہم اب شخصیات پرافکار اور اصول ہمارے کہاں رہےشخصی جماعتیں ہیں سیاسی جماعتیںافراد رہ گئے ہیں، ادارے کہاں رہے
February 07, 2018
حال

تاجروں کی مشکلیں اپنی جگہسَو طرح کے پھیر ہر دھندے میں ہیںاور بے بس شہریوں کا حال آہگردنیں مہنگائی کے پھندے میں ہیں