• بانی: میرخلیل الرحمٰن
  • گروپ چیف ایگزیکٹووایڈیٹرانچیف: میر شکیل الرحمٰن

2014 میں ریڈار سے غائب ہونے والے ملائیشین جہاز MH370 کا ملبہ تاہم نہیں مل سکا اور یہ بھی پتا نہیں چل سکا کہ اس پرواز کے 239 مسافروں اور عملے کے ارکان کے ساتھ کیا ہوا، تاہم اس حادثے سے متعلق نیا انکشاف سامنے آیا ہے۔

ایوی ایشن انڈسٹری کے پراسرار حادثے کو گزرے 7 برس ہوگئے، 239 خاندانوں کو قرار آیا نہ شعبے سے وابستہ افراد کی بے چینی ختم ہوسکی، لاکھوں ڈالر کے خرچ سے طویل عرصے تک جاری رہنے والا آپریشن بھی ناکام رہا۔

برطانیہ سے تعلق رکھنے والے ایروناٹیکل انجینئر نے مسلسل ایک سال محنت کے بعد جہاز کے تباہ ہونے کے ممکنہ مقام کا پتہ لگا لیا ہے۔

برطانوی ماہر رچرڈ گوڈفری کا کہنا ہے کہ بوئنگ 777 مغربی آسٹریلیا کے شہر پرتھ سے 2 ہزار کلومیٹر دور مغرب میں بحر ہند میں گر کر تباہ ہوا، رچرڈ کی اس تحقیق کی خاص بات یہ ہے کہ انہوں نے متعدد اعداد و شمار کی جانچ کے بعد حادثے کے ممکنہ مقام کا پتہ لگایا، جسے خاصا سراہا جارہا ہے۔

بین الاقوامی خبریں سے مزید