• بانی: میرخلیل الرحمٰن
  • گروپ چیف ایگزیکٹووایڈیٹرانچیف: میر شکیل الرحمٰن

لاپتا بچی کے اہلخانہ نے پولیس کی رپورٹ کو غلط قرار دے کر مسترد کردیا

کراچی سے اغواء ہونے والی 14سالہ لڑکی دعا زہرہ کے اہلخانہ نے پولیس کی تیارکردہ رپورٹ کو غلط قرار دے کر مسترد کردیا۔

اہلخانہ نے مطالبہ کیا کہ غلط رپورٹ مرتب کرنے پر ایس ایچ او الفلاح کے خلاف کارروائی کی جائے۔

دوسری جانب ولیس کا کہنا ہے کہ اعلیٰ افسران کے حکم پر ایس  ایچ او الفلاح بدر شکیل کو عہدے سے ہٹا دیا گیا ہے۔

پولیس کا کہنا ہے کہ دعا کی بازیابی کیلئے کوششیں جاری ہیں۔

اس سے قبل پولیس رپورٹ اور بچی کے اہلخانہ کے بیانات میں تضادات سامنے آئے تھے۔

 پولیس کے مطابق لاپتہ بچی کےوالد نے بتایا کہ دعا ساتویں جماعت کی طالبہ ہے، اسکول انتظامیہ کے مطابق بچی تیسری جماعت تک اسکول آتی تھی،  تیسری جماعت تک بچی کےاسکول آنے کی تصدیق کلاس فیلوز نے بھی کی۔

پولیس کے مطابق انٹرنیٹ سرچ ہسٹری میں کورٹ میرج اور نکاح کی معلومات سامنے آئی ہیں، دعا زہرہ اپنا ٹیبلٹ بھی ساتھ لے گئی ہے۔

قومی خبریں سے مزید