آپ آف لائن ہیں
جمعہ 10؍محرم الحرام 1440ھ 21؍ستمبر2018ء
Namaz Timing
  • بانی: میرخلیل الرحمٰن
  • گروپ چیئرمین و ایگزیکٹوایڈیٹر: میر جاوید رحمٰن
  • گروپ چیف ایگزیکٹووایڈیٹرانچیف: میر شکیل الرحمٰن

امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نائن الیون سے متعلق متنازع بیانات کی وجہ سے کئی بار ہدف تنقید بن چکے ہیں، امریکی میڈیا کی آج بھی ان پر نظریں ہیں کہ وہ حملوں کا دن آنے پر کیا کہیں گے ۔

2001ء میں ورلڈ ٹریڈ سینٹر پر حملے کے وقت ٹرمپ ریڈیو سے گفتگو کر رہے تھے، ٹرمپ ورلڈ ٹریڈ سینٹر کو چھوڑکر اپنی بلڈنگ کی بڑائی بیان کرنے لگے کہ مین ہیٹن میں فورٹی وال اسٹریٹ دوسری بلند عمارت تھی لیکن اب سب سے بلند بن گئی۔

2013ء میں ٹرمپ نے عجیب ٹوئٹ کیا کہ نائن الیون کی خاص تاریخ پر وہ ہر ایک بشمول شکست خوردہ اور نفرت کرنے والوں کو بھی نیک خواہشات کا پیغام دیتے ہیں، بعد میں انہوں نے یہ ٹوئٹ ڈیلیٹ کر دیا۔

2015ء میں انتخابی ریلی کے دوران ٹرمپ نے جھوٹ گھڑا کہ ٹریڈ سینٹر گرتے وقت انہوں نے جرسی سٹی میں ہزاروں لوگوں کو خوشیاں مناتے دیکھا، بعد میں انہوں نے جھوٹ یہ کہہ کر دہرایا کہ خوشی منانے والے عرب تھے، بعد میں پولیس اور سٹی میئر نے ان کے نفرت انگیز جھوٹ کی قلعی کھولی۔

ٹرمپ نے یہ شیخی بھی بھگاری کے ان کے سیکڑوں دوست نائن الیون حملوں میں جدا ہوگئے، لیکن وہ آج تک کسی ایک کا نام نہیں بتاسکے۔

2017ء میں ایک انٹرویو کے دوران ٹرمپ نے کہا تھا کہ ان کے ٹی وی شوز نائن الیون کی نشریات سے زیادہ دیکھے جاتے ہیں۔

Chatاپنی رائے سے آگاہ کریں