آپ آف لائن ہیں
ہفتہ یکم صفرالمظفر 1442ھ19؍ستمبر2020ء
  • بانی: میرخلیل الرحمٰن
  • گروپ چیئرمین و ایگزیکٹوایڈیٹر: میر جاوید رحمٰن
  • گروپ چیف ایگزیکٹووایڈیٹرانچیف: میر شکیل الرحمٰن
Jang Group

جدید آرکیٹیکچرل انجینئرنگ کے حیران کن تعمیراتی عجائبات

جدید آرکیٹیکچرل انجینئرنگ کے تعمیراتی عجائبات کی بات کی جائے تواس میں آپ کو دیدہ زیب ڈیزائن پر مبنی عجائب گھر، فنونِ لطیفہ سے تعلق رکھنے والی عمارات،میناروں اور یادگاروں کا ایسا سلسلہ دکھائی دے گا جنھیں دیکھ کر آپ انسان کی تخلیقی ذہانت پر عش عش کر اٹھیں گے۔ 

جدید تعمیرات میں ماحول دوست عناصر کے ساتھ آرکیٹیکچرل انجینئرنگ میں جیومیٹری کے خدوخال نمایاں نظر آئیں گے، جن کی خاص خوبی کم جگہ پر عمودی و افقی، آڑے ترچھے، خمیدہ و گول، تکونی و مربع اشکال کےڈیزائن پر مبنی حیران کن عمارات کے دلفریب ڈھانچے ہیں۔

فالنگ واٹر

فالنگ واٹر یا کوفمین رہائش گاہ ایک ایسا مکان ہے، جو آرکیٹیکچر فرینک لائیڈ رائٹ نے 1935ء میں جنوب مغربی پنسلوینیا میں پیٹسبرگ سے 43میل جنوب مشرق میں تیار کیا تھا۔ اس انتہائی خوبصورت مکان کو تکمیل کے بعد تعمیراتی عجائبات کی اس فہرست میں شامل کیا گیا، جنھیں زندگی میں ایک بار ضرور ملاحظہ کرنا چاہیے۔1966ءمیں اسے قومی تاریخی نشانات کی فہرست میں نامزد کیا گیا۔ 1991ءمیں امریکن انسٹیٹیوٹ آف آرکیٹیکٹس کےارکان نے اس گھر کو ’امریکی فن تعمیر کا سدا بہار کام‘قرار دیا۔ اس کام کی بدولت جولائی2019ء میں عالمی ورثہ کی فہرست میں فرینک لائیڈ کو بیسویں صدی کے آرکیٹیکچر کا خطاب دیا گیا۔

سی سی ٹی وی ہیڈ کوارٹرز

سی سی ٹی وی ہیڈ کوارٹر بیجنگ سینٹرل بزنس ڈسٹرکٹ پر واقع ایک 44 منزلہ عمارت ہے۔ یہ ٹاور چائنا سینٹرل ٹیلی ویژن کے صدر دفتر کے طور پر کام کرتا ہے۔ اس کا سنگ بنیاد یکم جون2004ء کو رکھا گیا جبکہ تعمیراتی کام فروری2009ء میں آگ لگنے کی وجہ سے تاخیر کا شکار ہوا، جس کے بعد اسے مئی 2012ء میں مکمل کر لیا گیا۔ 2013ء میں سی سی ٹی وی ہیڈ کوارٹرز نے کونسل آن ٹال بلڈنگز اینڈ اربن ہیبیٹٹ کی جانب سے بیجنگ کی بلند ترین عمارت ہونے کا درجہ حاصل کیا ۔

ماہرین تعمیرات ریم کُول ہیس اوراول شیرین کے اس تکونی ڈیزائن کو عجائباتِ تعمیرات قرار دیا گیا۔ کچھ ناقدین نےاس عمارت کے ڈیزائن کو تنقید کا نشانہ بھی بنایا تھا۔

والٹ ڈزنی کنسرٹ ہال

لاس اینجلس کے ڈاؤن ٹاؤن میں111ساؤتھ گرینڈ ایوینیو کا والٹ ڈزنی کنسرٹ ہال ’لاس اینجلس میوزک سینٹر‘ کا چوتھا ہال ہے، جسے فرینک گیری نے ڈیزائن کیا تھا۔ ہال کو 24اکتوبر2003ء میں کھولا گیا۔ ہوپ اسٹریٹ ، گرینڈ ایوینیو ، پہلی اور دوسری گلیوں سے منسلک کنسرٹ میں 2ہزار 265 افراد کے بیٹھنے کی گنجائش ہے۔ 

ہال انگور کے باغ میں بیٹھنے کی ترتیب سے ڈیزائن کیا گیا ہے۔ والٹ ڈزنی کی بیوہ لیلن ڈزنی نے1987ء میں لاس اینجلس کے لوگوں کو تحفے اور اپنے شوہر کی فن کے ساتھ والہانہ عقیدت کو خراج تحسین پیش کرتے ہوئے پرفارمنس وینیو بنانے کیلئے ابتدائی طور پر 50ملین ڈالر کی امداد دی تھی۔ اس کا ڈیزائن فرینک گیہری نے بنایا، جو بذات خود تعمیراتی فن کا اچھوتا نمونہ ہے۔

گیٹ وے آرچ

گیٹ وے آرچ امریکی ریاست میسوری کے علاقے سینٹ لوئس میں واقع ایک 630فٹ کی یادگار ہے۔ ا سٹینلیس اسٹیل میں لپٹے قوسین کی شکل میں بنے اس آرچ کو مغربی نصف کرہ کی سب سے بلند یادگار اور میسوری کی سب سے اونچی محراب کا اعزاز حاصل ہے۔ اسے ریاستہائے متحدہ امریکا کے مغرب میں توسیع کی یادگار کے طور پر تعمیر کیا گیا تھا۔ 

یہ جیفرسن نیشنل ایکسپینشن میموریل کا مرکز اور سینٹ لوئس کی بین الاقوامی سطح پر مشہور علامت بن گیا ہے۔ محراب سینٹ لوئس کے مقام پر دریائے مسیسیپی کے مغربی کنارے پر قائم ہے۔ گیٹ وے آرچ کا ڈیزائن فنش امریکی معمار ایرو سارینن اور جرمن امریکی انجینئر ہان نے ڈیزائن کیا تھا ۔ اس کا شمار بھی حیران کن تعمیراتی عجائب میں ہوتا ہے۔

میلاؤ وِیاڈکٹ

میلاؤ وِیاڈکٹ(Millau Viaduct) کیبل پر کھڑا ایک پل ہے، جو جنوبی فرانس میں میلاؤ کے قریب دریائے ترن کی وادی میں بنا ہوا ہے۔ فرانسیسی انجینئر مشیل ویرلوجیکس اور برطانوی معمار نارمن فوسٹر نے اسے ڈیزائن کیا ہے۔ یہ دنیا کا 12واں بلند ڈیک پل ہے، جس کے مستول (Mast)کی بلندی 343میٹر ہے۔ 

اس کی تعمیر پر400ملین یورو کے لگ بھگ لاگت آئی ہے۔ اس کا باقاعدہ افتتاح 14دسمبر 2004ء کو کیا گیا جبکہ16دسمبر کو اسے ٹریفک کے لئے کھول دیا گیا۔ اس پل کوتعمیراتی انجینئرنگ کے سدابہار کارہائے نمایاں میں شمار کیا جاتا ہے، جسے دیکھ کر کوئی بھی تعریف کیے بنا نہیں رہ سکتا۔

سٹی آف آرٹس اینڈ سائنسز

سٹی آف آرٹس اینڈ سائنسز، اسپین کے شہر ویلینشیا میں ایک ثقافتی اور آرکیٹیکچرل کمپلیکس ہے۔ یہ ویلینشیا شہر کا جدید ترین سیاحتی مقام ہے۔ سٹی آف آرٹس اینڈ سائنسز دریائے توریہ کے ساتھ بنایا گیا ہے، پہلے اس کے ساتھ ایک گزرگاہ جاتی تھی، تاہم1957ء میں تباہ کن سیلاب کے بعد یہ بہہ گئی تھی، جسے بعد ازاں دلکش پارک میں تبدیل کردیا گیا ۔ 

سینٹیاگو قلاٹراوا اور فیلکس کینڈیلا کے ڈیزائن کردہ اس منصوبے کی تعمیر کا پہلا مرحلہ جولائی 1996ء میں مکمل ہوا جبکہ اس کا افتتاح 16اپریل 1998ء کو ایل ہیمیسفریک کے افتتاح کے ساتھ ہوا۔ فنون لطیفہ کے اس شہر کا آخری عظیم جزو ’ایل پلاؤ ڈی لیس آرٹس رینا صوفیا‘کا افتتاح 9اکتوبر 2005ء کو ویلینشین کمیونٹی ڈے کے موقع پرکیا گیا۔