آپ آف لائن ہیں
منگل9؍ربیع الاوّل 1442ھ 27؍اکتوبر 2020ء
  • بانی: میرخلیل الرحمٰن
  • گروپ چیئرمین و ایگزیکٹوایڈیٹر: میر جاوید رحمٰن
  • گروپ چیف ایگزیکٹووایڈیٹرانچیف: میر شکیل الرحمٰن
Jang Group

نعمان اعجاز کا معروف شاعر راحت اندوری کو خراج عقیدت

شوبز انڈسٹری کے ورسٹائل اداکار نعمان اعجاز نے اُردو کے معروف شاعر راحت اندوری کو خراج عقیدت پیش کرتے ہوئے اُن کے لیے سوشل میڈیا پر ایک پیغام جاری کیا ہے۔

تصویر اور ویڈیو شیئرنگ ایپ انسٹاگرام پر اداکار نعمان اعجاز نے اپنی ایک فوٹو شیئر کی ہے جس میں وہ ایک ضعیف شخص کے روپ میں دکھائی دے رہے ہیں، اُن کی سیاہ و سفید رنگ کی لمبی سی داڑھی بھی ہے۔


انسٹاگرام پر شیئر کردہ اپنی تصویر کے ساتھ کیپشن میں اداکار نے اردو کے معروف شاعر اور گیت نگار راحت اندوری کا ایک شعر لکھا کہ:

’فیصلہ چاہے کچھ بھی ہو، ہمیں منظور ہونا چاہیے
جنگ ہو یا عشق ہو، بھرپور ہونا چاہیے‘

اس شعر کےساتھ ہی نعمان اعجاز نے راحت اندوری کا نام لکھا اور اُن کی روح کے سکون کے لیے دعا کی۔ اس کے علاوہ انہوں نے مزید لکھا کہ ’خود اعتماد ی سے بہتر کوئی میک اپ نہیں ہے۔‘

واضح رہےکہ نامور بھارتی شاعر راحت اندوری رواں سال 11 اگست کو بھارتی ریاست مدھیہ پردیش کے شہر اندور میں دل کا دورہ پڑنے سے انتقال کرگئے تھے۔

یہ بھی پڑھیے: اردو کے معروف شاعر راحت اندوری کا انتقال، کورونا ٹیسٹ پازیٹو آیا تھا

راحت اندوری نے بالی ووڈ کے چند مشہور نغمے لکھے تھے، جن میں منا بھائی ایم بی بی ایس کا ’میں بولے تو‘، اور فلم قریب کے لیے ’چوری چوری جب نظریں ملیں‘، فلم گھاتک کا نغمہ ’کوئی جائے تو لے آئے‘ اور فلم عشق کا نغمہ ’نیند چرائی میری‘ شامل ہیں۔

اس کے علاوہ رواں سال کے شروع میں اُن کی نظم ’بلاتی ہے مگر جانے کا نہیں‘ سوشل میڈیا پر کافی وائرل ہوئی تھی۔

انٹرٹینمنٹ سے مزید