آپ آف لائن ہیں
اتوار5؍رمضان المبارک 1442ھ 18؍اپریل2021ء
  • بانی: میرخلیل الرحمٰن
  • گروپ چیف ایگزیکٹووایڈیٹرانچیف: میر شکیل الرحمٰن
Jang Group

تیسرا لاک ڈاؤن، برطانیہ کی معیشت کو شدید نقصان، جی ڈی پی میں تقریباً 3 فیصد تک کمی ہوگئی

راچڈیل (ہارون مرزا)کورونا بحران سے برطانوی معیشت کو لگنے والے شدید دھچکے کے اثرات تاحال محسوس کیے جا رہے ہیں برطانیہ کی جی ڈی پی میں جنوری میں تقریبا 3فیصد کمی ریکارڈ کی گئی جس نے دسمبر میں ریکارڈ کیے گئے منی باؤنس کو تبدیل کیا برطانیہ میں تیسرے لاک ڈائون سے معیشت کو سخت نقصان پہنچا ہے۔ قومی شماریات کے دفتر کے ذریعہ شائع ہونے والے نئے اعداد و شمار سے پتہ چلتا ہے کہ سال کے پہلے مہینے میں جی ڈی پی میں 2.9 فیصد کی کمی واقع ہوئی ہے دسمبر میں معیشت میں 1.2 فیصد اضافہ ہوا تھاگذشتہ سال فروری میں وبائی امراض کی گرفت میں آنے سے پہلے جنوری کی مجموعی قومی پیداوار کی تعداد نو فیصد رہی ہے یہ اکتوبر میں درج کی گئی سطح سے بھی چار فیصد نیچے ہے او این ایس کے اعداد و شمار سے پتہ چلتا ہے کہ جی ڈی پی کے تمام اہم شعبے وبائی مرض سے پہلے کی سطح سے خاص طور پر نیچے رہے اور اکتوبر 2020 کے مقابلے میں یہ سب کم تھے معیشت کے خدمات کے شعبے کو خاص طور پر قومی پابندیوں کی تازہ لہر نے بری طرح متاثر کیا جنہیں جنوری کے آغاز میں بورس جانسن نے نافذ کیا تھا ا۔و این ایس کے مطابق اس شعبے نے جنوری میں نمو کو ʼمرکزی ڈریگ کے طور پر کام کیا ہے جس میں 3.5 فیصد کی کمی واقع ہوئی ہے مجموعی طور پر ، خدمات کا شعبہ پچھلے سال فروری میں درج کی جانے والی سطح سے 10 فیصد سے زیادہ اور اکتوبر میں ریکارڈ کی جانے والی سطح سے بھی کم 4.9 فیصد تھا۔دریں اثنا پیداوار میں اضافے کے 8 ماہ کے بعد جنوری میں 1.5 فیصد کی کمی کا سامنا کرنا پڑا یہ شعبہ گذشتہ سال فروری میں درج کی گئی سطح سے پانچ فیصد کم تھادسمبر میں 2.9 فیصد کمی کے بعد جنوری میں تعمیراتی شعبے میں 0.9 فیصد کی مثبت شرح نمو ریکارڈ کی گئی تاہم ، تعمیراتی شعبہ ابھی بھی گذشتہ سال فروری میں درج کی گئی سطح سے 2.6 فیصد کم تھامعاشی اعدادوشمار کے لئے نائب قومی شماریات دان جوناتھن ایتھو نے کہا ہے کہ جنوری میں معیشت نے نمایاں کامیابی حاصل کی اگرچہ خوردہ ، ریستوران ، سکول اور ہیئر ڈریسر تمام نئے لاک ڈاؤن سے متاثر ہوئے ہیں مینوفیکچرنگ میں بھی اپریل کے بعد سے اپنی پہلی کمی دیکھی گئی کار کی تیاری میں نمایاں کمی آئی تاہم دونوں ویکسین رول آؤٹ سے صحت کی خدمات میں اضافہ اور جانچ میں اضافہ جزوی طور پر دیگر صنعتوں میں کمی کو پورا کرتا ہے لیبر رہنما انیلیسی ڈوڈز نے کہاہے کہ نئے اعداد و شمار اس بات کی تصدیق کرتے ہیں کہ ہمیں بدترین معاشی بدحالی کا سامنا ہے ۔