• بانی: میرخلیل الرحمٰن
  • گروپ چیف ایگزیکٹووایڈیٹرانچیف: میر شکیل الرحمٰن
,

جلدی امراض کے لیے مصنوعی ذہانت سے تیار کردہ ٹول

اس جدید دور میں مصنوعی ذہانت سےایسی انوکھی چیزیں متعارف کروائی جارہی ہیں ،جس کے بارے میں سن کر انسانی عقل دنگ رہ جائے ۔اس ضمن میں حال ہی میں گوگل نے مصنو عی ذہانت سے لیس ایک نیا ٹول متعارف کروایا ہے ،جس کی مدد سے جلدی امراض کے بارے میں جاننے میں مدد ملے گی۔ ٹیکنالوجی جائنٹ گوگل نے جلد، بال، ناخن کے امراض کی تشخیص کے لیے ڈرماٹولوجی اسسٹ ٹول بنا لیا ہے۔ جلدی کینسر کے ایک ماہر کا اس ٹول کے بارے میں کہنا ہے کہ مصنوعی ذہانت میں ہونے والی جدت ڈاکٹروں کو مریضوں کے زیادہ بہترعلاج کا اہل بنا رہی ہے۔

یہ ٹول مصنوعی ذہانت کی مدد سے مریض کی جانب سے اپ لوڈ کی گئی تصویر کی جانچ کرکے استعمال کنندہ کے جلدی امراض کی تشخیص میں مدد دیتا ہے۔ گوگل کی جانب سے اس ٹول کی آزمائش مکمل کی جاچکی ہے اور اس سال کے آخر میں اسے لانچ کیا جائے گا۔گوگل کا کہنا ہے کہ ڈرماٹولوجی اسسٹ ٹول مصنوعی ذہانت کی بدولت جلد کی 288 کیفیت کی شناخت کرسکتا ہے۔ تاہم اسے طبی شناخت اور علاج کے متبادل کے طور پر ڈیزائن نہیں کیا گیا ہے۔

اس ٹول کو ڈیولپ کرنے میں تین سال کا عرصہ لگا اور تجرباتی طور پر جلدی کیفیت کی تشخیص کے لیے 65 ہزار تصاویر کا ڈیٹا استعمال کیا گیا۔ جس میں جلد کی ہرکیفیت، شیڈز اور ٹون والی تصاویر بھی شامل تھی۔امریکی ادارے فوڈ اینڈ ڈرگ ایڈمنسٹریشن اتھارٹی ( ایف ڈی اے) کی جانب سے ڈرماٹولوجی اسسٹ کو تاحال امریکا میں استعمال کی اجازت نہیں دی گئی ہے ۔

سائنس اینڈ ٹیکنالوجی سے مزید
ٹیکنالوجی سے مزید