• بانی: میرخلیل الرحمٰن
  • گروپ چیف ایگزیکٹووایڈیٹرانچیف: میر شکیل الرحمٰن

سندھ میں کورونا کی مختلف اقسام کی 59 ہزار سے زائد خوراکیں ضائع ہوچکیں


کراچی سمیت سندھ کے مختلف اضلاع میں انسداد کورونا کی مختلف اقسام کی 59 ہزار سے زائد خوراکیں ضائع ہوچکی ہیں۔

سندھ کے مختلف اضلاع میں مارچ سے شروع ہونے والی مہم کے دوران اب تک انسداد کورونا کی مختلف اقسام کی 59 ہزار سے زائد خوراکیں ضائع ہوچکیں۔

محکمہ صحت کے حکام کے مطابق سب سے زیادہ سائینوویک کی 18 ہزار 763 خوراکیں ضائع ہوئیں۔

دوسرے نمبر پر اسٹرازینیکا کی 16 ہزار 754، سائنوفارم کی 14 ہزار 576 خوراکیں ضائع ہوچکی ہیں۔

پاک ویک کی 6 ہزار 768 اور کین سائینو کی 2 ہزار 143 خوراکیں ضائع ہوئیں۔ موڈرنا ویکسین کی 489 اور فائزر ویکسین کی 38 خوراکیں ضائع ہوچکی ہیں۔

محکمہ صحت کے حکام کے مطابق ویکسین کے ضائع ہونے میں کولڈ چین کی عدم فراہمی، ویکسینیٹر کی جانب سے ویکسین نکالنے اور لگانے کے دوران مس ہینڈلنگ، ویکسین گرنے، ویکسین لگاتے وقت متعلقہ شخص کی طبعیت خراب ہونے کے عوامل بھی شامل ہیں۔

قومی خبریں سے مزید