• بانی: میرخلیل الرحمٰن
  • گروپ چیف ایگزیکٹووایڈیٹرانچیف: میر شکیل الرحمٰن

موسم سرما کا آغاز، برطانیہ میں برفباری ،امدادی سرگرمیوں میں مشکلات، ٹریفک کانظام مفلوج

راچڈیل(ہارون مرزا) موسم سرما کا آغاز ہوتے ہی برطانیہ نے برفباری کی سفید چادر اوڑھ لی، ملک کے جنوب میں ہیمپشائر تک درجہ حرارت منفی 10سینٹی گریڈ تک گر گیا ،گزشتہ تین یوم سے جاری برفباری کی لہر کے دوران تقریبا تین فٹ تک سڑکوں پر برف کی تہہ جم گئی ‘ ریلوے اور ٹریفک کا نظام بری طرح مفلوج ہو کر رہ گیا، مسافروں کی بڑی تعداد اپنی تیسری رات یارکشائر میں گزارنے پر مجبور ہے‘ امدادی سرگرمیوں کا سلسلہ جاری ہے، تاہم بیشتر سڑکوں پر برفباری کی کئی کئی فٹ تہہ امدادی سرگرمیوں میں رکاوٹ کا سبب بن رہی ہے، شدید برفباری کی وجہ سے متعدد سڑکیں ناقابل استعمال ہوگئی ہیں جن پر سفر کرنا تو دور امدادی کام بھی کرنا مشکل ہے، پیشگوئی کے مطابق برفباری اورسردی کی شدید لہر کا سلسلہ سوموار کی صبح تک برقرار رہے گا، برطانیہ میں منجمند حالات جاری رہیں گے ،محکمہ موسمیات نے متنبہ کیا ہے کہ رواں ہفتے ملک میں 100میل فی گھنٹہ کی رفتار سے تیز ہوائیں اور برفباری کا سلسلہ جاری رہ سکتا ہے، ملک میں جاری برفباری اور آندھیوں کے باعث متعدد سڑکوں پر گزشتہ روز درخت اکھڑے سے حادثات بھی رونما ہوئے، قیمتی گاڑیاں تباہ ہوئیں، لاتعداد عمارتوں کو جزوی نقصان پہنچا جبکہ وسیع پیمانے پر بجلی کا نظام مفلوج ہو گیا، مانچسٹر اور نیو کاسل میں بھی درجہ حرارت مزید گرنے کی پیش گوئی کی گئی ہے، سکاٹ لینڈکے کچھ حصوں اور انگلینڈ کے شمال مغرب میں مزید برفباری کی توقع کی جا رہی ہے، علاوہ ازیں حکام نے ٹرف مور پر برنلے بمقابلہ ٹوٹنہم ہاٹ پور میچ سے پہلے برف سے ڈھکی ہوئی پچ کا معائنہ کیا اور کاؤنٹی ڈرہم کے کنسیٹ میں رات بھر اس علاقے میں شدید برفباری کے بعد گاڑیوں کو برف میں چھوڑ دیا گیا، توقع کی جا رہی ہے کہ گرم ہوائیں ہفتے کے وسط تک ملک میں داخل ہونگی جو جمی ہوئی کئی فٹ برف کو پگھلانے میں معاون ثابت ہونگی اور برفانی حالات سے نجات دلا کر درجہ حرارت کو بہتر بنائیں گی ‘شدید برفباری کے باوجود یارکشائر پب میں کنسرٹ کے لیے ہجوم رقص کر تا رہا ‘جمعہ کے روز رچمنڈ میں برطانیہ کے سب سے اونچے پب، ٹین ہل ان میں تقریباً ساٹھ کے قریب افراد برفباری کے باعث منزل تک پہنچنے سے قاصر رہے اور طوفان میں پھنسے رہے، اس علاقے میں تقریباً پانچ فٹ تک برفباری نے نظام زندگی کو مفلوج کر رکھا ہے مذکورہ سیاح نوسیس نامی نخلستان کو خراج تحسین پیش کرنے والے بینڈ کو دیکھنے کے لیے وہاں گئے تھے، رات 9 بجے تک یہ واضح ہو گیا کہ کوئی بھی گھر کا سفر نہیں کر سکے گا اور بہت سے لوگوں کو بار کے فرش پر عارضی بستروں پر سونا پڑا، 17ویں صدی کی ٹین ہل ان قریبی مرکزی سڑکوں سے تقریباً 10 میل کے فاصلے پر ہے لیکن اس کی طرف جانے والی سڑکیں برفباری کے باعث بند ہو گئی ہیں، پب کے مالک مائیک کینی نے کہاہم نے پب میں موجود کسی بھی شخص کو برف سے ڈھکے ہوئے پہاڑوں پر زندگی کو خطرے میں ڈالنے کے بجائے باہر رہنے کی سفارش کی، ابھی تک کوئی کہیں نہیں جا رہا ہے، پولیس نے ہم سب کو فی الحال باہر رہنے کا مشورہ دیا، ہمارے اسنو پلاؤ میں برف پڑ گئی ہے، یہ امر قابل ذکر ہے کہ برطانیہ میں طوفانی ہوائوں اور برفباری سے انسانی جانوں کے ضیاع کے بعد مسافروں کو غیر ضروری سفر کرنے سے اجتناب کرنیکی تلقین کی گئی ہے۔

یورپ سے سے مزید