• بانی: میرخلیل الرحمٰن
  • گروپ چیف ایگزیکٹووایڈیٹرانچیف: میر شکیل الرحمٰن

چین نے اپنی جمہوریت کے حوالے سے وائٹ پیپر جاری کردیا

چین کی ریاستی کونسل کے دفتر اطلاعات نے جمہوریت کے حوالےسے ایک وائٹ پیپر جاری کیا ہے۔

’چین: فائدہ مند جمہوریت ‘ کے عنوان سے ہفتہ کو جاری کیے گئے، وائٹ پیپر میں کہا گیا کہ جمہوریت انسانیت کی مشترکہ قدر ہے اور ایک ایسا آئیڈیل ہے، جسے کمیونسٹ پارٹی آف چائنا اور چینی عوام نے ہمیشہ پسند کیا ہے۔

وائٹ پیپر میں کہا گیا ہے کہ گزشتہ سو سالوں کے دوران پارٹی نے چین میں عوامی جمہوریت کے استحکام کے لیے عوام کی رہنمائی کی ہے، چینی عوام، معاشرے اور ملک کا مستقبل اب چینی عوام کے ہاتھوں میں ہے۔

اس میں کہا گیا ہے کہ عوام کا اپنے ملک کا مالک ہونا ہی عوامی جمہوریت کا نچوڑ ہے۔

وائٹ پیپر میں کہا گیا ہے کہ چین کا عوامی جمہوریت کا مکمل ڈھانچہ نتائج پر مبنی جمہوریت کے ساتھ، نظام پر مبنی جمہوریت کے ساتھ مربوط ہے، مضبوط بنیادوں کے ساتھ جمہوریت جو نظام پر مبنی جمہوریت ہے، بالواسطہ جمہوریت کے ساتھ براہ راست جمہوریت اور ریاست کی منشا کے ساتھ عوام کی جمہوریت ہے۔

اس میں کہا گیا ہے کہ چینی جمہوریت سوشلسٹ جمہوریت کا ایک نمونہ ہے، جو جمہوری عمل کے تمام پہلوؤں اور معاشرے کے تمام شعبوں کا احاطہ کرتا ہے، یہ ایک حقیقی جمہوریت ہے جو کام کرتی ہے۔

وائٹ پیپر میں کہا گیا ہے کہ جمہوریت ایک ٹھوس رجحان ہے، جو مسلسل ارتقا پذیر ہے، تاریخ، ثقافت اور روایت سے جڑی ہوئی یہ مختلف ممالک کے عوام کی دریافتوں اور جدت کی بنیاد پر ان کے اختیار کردہ راستے پر متنوع اشکال کے ساتھ آگے ترقی کرتی ہے۔

وائٹ پیپر میں کہا گیا ہے کہ جمہوریت کوئی آرائشی زیور نہیں بلکہ عوام کے مسائل کو حل کرنے کا ایک نظام ہے، جمہوریت چند قوموں کے استحقاق کی بجائے ہر ملک کے عوام کا حق ہے۔

اس میں کہا گیا ہے کہ کوئی ملک جمہوری ہے یا نہیں اس کا فیصلہ باہر کے مٹھی بھر لوگوں کی بجائے اس کے عوام کو کرنا چاہیے اور یہ کہ آیا کوئی ملک جمہوری ہے، اس کا اعتراف بین الاقوامی برادری کو کرنا چاہیے، نہ کہ من مانی طور پر چند خود ساختہ ججوں کے ذریعے فیصلہ کیا جائے۔

اس میں مزید کہا گیا ہے کہ جمہوریت کا کوئی طے شدہ ماڈل نہیں، یہ خود کو کئی شکلوں میں پیش کرتی ہے، دنیا کے بے شمار سیاسی نظاموں کا ایک ہی پیمانے پر جائزہ لینا اور متنوع سیاسی ڈھانچوں کو ایک ہی نظر سے جانچنا خود ایک غیر جمہوری عمل ہے۔

بین الاقوامی خبریں سے مزید