آپ آف لائن ہیں
جنگ ای پیپر
بدھ19؍ ذوالحجہ 1440ھ 21؍اگست 2019ء
Namaz Timing
  • بانی: میرخلیل الرحمٰن
  • گروپ چیئرمین و ایگزیکٹوایڈیٹر: میر جاوید رحمٰن
  • گروپ چیف ایگزیکٹووایڈیٹرانچیف: میر شکیل الرحمٰن


پاکستان کےغذائی قلت کے شکار صحرائے تھر کی دو ہندو لڑکیا ں دیوی میگھواڑ اور جمنا بھیل چین میں منعقدہ نوجوانوں کے فٹبال ورلڈ کپ میں پاکستان کی نمائندگی کریں گی۔

کمسن لڑکیا ں ملک میں فٹبال کے فروغ کے سلسلے میں عملی طور پر کوشاں ہیں اور چین میں منعقدہ یوتھ فٹبال ورلڈکپ میں بھرپور صلاحیتوں کے جوہر دکھانے کو تیار ہیں۔

سماجی تنظیم نے حال ہی میںان دونوں لڑکیوں کو کراچی میں دس روزہ تربیتی کیمپ میں حصہ دلوایا جہاں انہوں نے پریکٹس میچ بھی کھیلے۔ جمنا بھیل دفاعی کھلاڑی جبکہ دیوی میگھواڑ گول کیپر ہیں۔

گوتھیا یوتھ فٹبال ورلڈ کپ کا آغاز14اگست سےچین کے صوبے چنگ ڈاؤ میں ہورہا ہے۔ اس ٹورنامنٹ کا اختتام 17اگست کو ہوگا۔

واضح رہے کہ اس سالانہ ٹورنامنٹ کا انعقاد پیشہ ورانہ فٹبال کلب بی۔کے ہیکن 1975 سے سوڈان کے شہر گوتھن برگ میں کرتا آیا ہے اور اس میں ہر سال 80 ممالک کی 1700 سے زائد ٹیمیں حصہ لیتی ہیں اور 1100 فٹبال میدانوں میں 4500 میچ ہوتے ہیں۔

گوتھیا یوتھ فٹبال ٹورنامنٹ میں اس سال 36 ملکوں کی 340 ٹیمیں حصہ لیں گے۔ اس ٹورنامنٹ کا میلہ 42 مقامات پر سجے گا۔

ٹورنامنٹ کے جنرل سیکرٹری ڈینس اینڈرسن نے بتایا کہ گوتھیا فٹبال ٹورنامنٹ میں ہر قومیت، نسل، جنس اور رنگ کے نوجوان حصہ لیتے ہیں۔

کھیلوں کی خبریں سے مزید
ویڈیو رپورٹس سے مزید