آپ آف لائن ہیں
جنگ ای پیپر
پیر 20؍ربیع الاوّل 1441ھ 18؍نومبر 2019ء
Namaz Timing
  • بانی: میرخلیل الرحمٰن
  • گروپ چیئرمین و ایگزیکٹوایڈیٹر: میر جاوید رحمٰن
  • گروپ چیف ایگزیکٹووایڈیٹرانچیف: میر شکیل الرحمٰن
تازہ ترین
آج کا اخبار
کالمز

آپ کے مسائل اور اُن کا حل

سوال :۔ بعض چیزوں میں کیڑے پڑجاتے ہیں یا کھانے پینے کی چیزوں میں کیڑے گر جاتے ہیں تو اس کاکیا حکم ہے؟سنا ہے کہ کیڑوں سے رنگ بناتے ہیں اور چیزوں میں شامل کرتے ہیں۔اس بارے میں کیا حکم ہے؟(یاسمین علی)

جواب :۔کیڑے پاک ہیں، مگر حلال نہیں ہیں۔حلال نہ ہونے کا مطلب یہ ہے کہ انہیں کھاناجائز نہیں ہے ،البتہ چونکہ ناپاک نہیں ہیں ،اس لیے ان کے گرنے سے کھانے پینے کی اشیاء ناپاک نہیں ہوتیں ،اس اصول کی روسے جس چیز کے اندر کیڑاریزہ ریزہ ہوگیا ہو، وہ پاک ہے، مگر اس کا کھانا جائز نہیں، البتہ اس اصول سے ٹڈی مستثنیٰ ہے۔

بڑی دیگ میں اگر مکھی گر جائے تو دیگ ناپاک نہیں ہوتی، مگر مکھی کا کھانا جائز نہیں ۔پھلوں کےاندراگر کیڑے پڑگئے ہوں، مگر ان میں روح نہ پڑی ہو اور انہیں نکالنا مشکل ہوتو پھل کی تبعیت میں انہیں کھاناجائز ہے، لیکن اگر جان پڑگئی تو انہیں کھاناجائز نہیں ہے۔جس پروڈکٹ میں کارمائن (کیڑے سے حاصل کردہ تیز سرخ رنگ) شامل ہو، اس کا خوردنی استعمال جائز نہ ہوگا، البتہ بیرونی بدن پر اس کااستعمال جائز ہے۔

اقراء سے مزید