آپ آف لائن ہیں
جنگ ای پیپر
منگل30؍ جمادی الثانی 1441ھ 25؍فروری 2020ء
Namaz Timing
  • بانی: میرخلیل الرحمٰن
  • گروپ چیئرمین و ایگزیکٹوایڈیٹر: میر جاوید رحمٰن
  • گروپ چیف ایگزیکٹووایڈیٹرانچیف: میر شکیل الرحمٰن
تازہ ترین
آج کا اخبار
کالمز

تمباکو انڈسٹری ،ٹیکس کی مد میں خزانےکو153ارب روپے کا نقصان

اسلام آباد ( تنویر ہاشمی ، کامرس رپورٹر) تمباکو انڈسٹری کے حربوں سے قومی خزانے کو ٹیکس کی مد میں چار سال میں153ارب روپے کا نقصان ہوا ہے عمران احمد نے کہا کہتھرڈ ٹیئر کے نفاذ کے بعد انتہائی کم ٹیکس ریٹ لاگو ، ریونیو کی مد میں بہت زیادہ نقصان ہوا، ایف بی آر کے سیگریٹ کے حوالے سے جانچ پڑتال کرنیوالے ٹریک اینڈ ٹریس سسٹم پر غیر جانبدار لوگوں کو تعینات کیا جائے تاکہ درست اور شفاف اعداد وشما رسامنے آسکیں ا، ان خیالات کا اظہار سپارک ، ایچ ڈی ایف اور پناہ کے نمائندوں نے تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کیا ، اس موقع پر بچوں کےلیے تمباکو فری پاکستان مہم کے عمران احمد خان نے کہا کہ تمباکو کی صنعت پر تھرڈ ٹیئر کے نفاذ کے بعد انتہائی کم ٹیکس ریٹ لاگو کیا گیا جس کی وجہ سے قومی خزانے کو ریونیو کی مد میں بہت زیادہ نقصان ہوا، انہوں نے کہا کہ تھرڈ ٹیئر کو متعارف کرانے کے بعد مئی 2017سےمارچ 2019کے دوران 160ارب روپے سگریٹ تیار کیے گئے ، مارکیٹ میں بڑی سگریٹ کمپنیوں کا شیئر75فیصد ہےاس طرح انہوں نے مارکیٹ میں 120ارب سگریٹ فروخت کیے ، تھرڈ ٹیئر کو متعارف کرانے کی صورت میں 2016سے 2019کے دوران 78ارب روپےسگریٹ انڈسٹری سے ریونیو کی مد میں کم جمع ہوئے اور 2018سے 2019کے دوران پرائس ایڈجسٹمنٹ کی مد میں قومی خزانے کو 75ارب روپے کا نقصان ہوا،۔

اہم خبریں سے مزید