آپ آف لائن ہیں
منگل13؍شعبان المعظم 1441ھ 7؍اپریل2020ء
Namaz Timing
  • بانی: میرخلیل الرحمٰن
  • گروپ چیئرمین و ایگزیکٹوایڈیٹر: میر جاوید رحمٰن
  • گروپ چیف ایگزیکٹووایڈیٹرانچیف: میر شکیل الرحمٰن
تازہ ترین
آج کا اخبار
کالمز

وزیراعظم عمران خان سے اسلام آباد میں سر ہوگو سوائیر سے ملاقات

لندن (مرتضیٰ علی شاہ) ڈپٹی چیئرمین کامن ویلتھ انٹر پرائز اینڈ انویسٹمنٹ کونسل یوکے (سی ڈبلیو ای آئی سی) سر ہوگو سوائیر نے کہا ہے کہ کامن ویلتھ اور پاکستان میں ٹریڈ اینڈ انویسٹمنٹ کے فروغ کیلئے کراچی میں حب آفس قائم کیا جائے گا۔ انہوں نے یہ اعلان اسلام آباد میں وزیراعظم عمران خان سے ملاقات کے بعد کیا۔ ان کے اس دورے کا انتظام چیف ایگزیکیٹو بیسٹ وے گروپ اور چیئرمین کنزرویٹو فرینڈز آف پاکستان لارڈ ضمیر چوہدری نے کیا تھا۔ سر سوائیر کے ساتھ سر انور پرویز اور لارڈ چوہدری بھی تھے۔ ملاقات میں وزیراعظم کے کامرس ایڈوائزر عبدالرزاق دائود اور چیئرمین بورڈ آف انویسٹمنٹ سید زبیر حیدر گیلانی بھی موجود تھے۔ بیسٹ وے کے ترجمان نے نمائندے سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ سر سوائیر نے وزیراعظم کو سی ڈبلیو ای آئی سی کی سرگرمیوں اور خصوصیات کے بارے میں آگاہ کیا اور انہیں بتایا کہ کس طرح یہ پاکستان اور کامن ویلتھ ممالک خصوصاً بریگزٹ کے بعد کے منظر نامے میں برطانیہ کے ساتھ ٹریڈ اینڈ انویسٹمنٹ کے فروغ میں اہم کردار ادا کر سکتی ہے جب پاکستان کیلئے مواقع میں اضافہ ہوگا۔ انہوں نے وزیراعظم عمران خان کو سال رواں میں کیغالی رواندا میں ہونے والے کامن ویلتھ سربراہان حکومت اجلاس اور کامن ویلتھ بزنس فورم 2020 میں شرکت کی دعوت بھی

دی۔ سر سوائیر نے عبدالرزاق دائود اور وزیراعظم کے فنانس ایڈوائزر عبدالحفیظ شیخ سے علیحدہ ملاقاتیں بھی کیں اور ان سے بات چیت کی کہ پاکستان کس طرح کامن ویلتھ روابط سے ایڈواٹیج حاصل کر سکتا ہے۔ لارڈ چوہدری نے آگاہ کیا کہ حکومت پاکستان نے دولت مشترکہ کے ساتھ آئندہ کی انگیجمنٹ کیلئے اپنے عزم اور جوش و جذبے کا اظہار کیا ہے اور سی ڈبلیو ای آئی سی میں رکن کی حیثیت سے شمولیت اور آئندہ دولت مشترکہ بزنس فورم میں پرائیویٹ سیکٹر وفد کی حیثیت سے نمایاں کردار ادا کرنے میں گہری دلچسپی کا اظہار کیا۔ اس کے علاوہ لارڈ ضمیر چوہدری نے ڈپٹی چیئرمین سی ڈبلیو ای آئی سی کے اعزاز میں ایک عشائیہ کا بھی اہتمام کیا، جس میں ملک بھر کے کاروباری رہنماؤں اور اہم حکومتی وزراء نے شرکت کی۔ اس موقع پر خطاب کرتے ہوئے لارڈ چوہدری نے سر سوائیر کا شکریہ ادا کیا کہ انہوں نے دورہ پاکستان کیلئے وقت نکالا۔ انہوں نے برطانیہ کے ساتھ پاکستان کے تعلقات کی اہمیت پر زور دیا اور ان تعلقات کو مزید مستحکم کرنے خصوصاً پاکستان، برطانیہ اور دولت مشترکہ کے مابین ٹریڈ اینڈ انویسٹمنٹ کو فروغ دینے کے عزم کا اعادہ کیا۔ سر سوائیر نے پاکستان بھر کے سرکردہ بزنس لیڈرز سے بھی ملاقاتیں کیں جبکہ سی ڈبلیو ای آئی سی پہلے ہی بیسٹ وے گروپ، دی ایمپلائرز فیڈریشن آف پاکستان، ایجارا گروپ اور حسین ملز پاکستان اس کے پہلے سے ہی ممبرز ہیں اور پاکستان کے متعدد سرکردہ برنسز نے سٹریٹجک پارٹنرز کی حیثیت سے سی ڈبلیو ای آئی سی میں شمولیت میں گہری دلچسپی کا اظہار کیا ہے۔ سی ڈبلیو ای آئی سی میں پاکستانی بزنس کمیونٹی برادری کی رکنیت میں اضافے کے پیش نظر اب دولت مشترکہ اور پاکستان کے مابین تجارت اور سرمایہ کاری کو فروغ دینے کیلئے کراچی میں ایک حب آفس قائم کرنے پر غور کر رہے ہیں ۔ لارڈ چوہدری نے کہا کہ سی ڈبلیو ای آئی سی مختلف بزنسز کو ایک جگہ کر کے نیٹ ورکنگ اور خوشحالی کا ماحول پیدا کرنے کی کوشش کر رہی ہے تاکہ ایک دوسرے کے درمیان بہترین سرمایہ کاری کیلئے مواقع تلاش کیے جا سکیں۔ انہوں نے کہا کہ پوسٹ بریگزٹ برطانیہ انویسٹمنٹ اینڈ ٹریڈ کیلئے نئی راہیں تلاش کر رہا ہے اور دولت مشترکہ ایک ایسا علاقہ ہے جہاں برطانوی حکومت اپنی توجہ مرکوز رکھنا چاہے گی اور اس کیلئے سی ڈبلیو آئی ای سی ایک اچھا پلیٹ فارم ہے۔ اپنے دورے پر تبصرہ کرتے ہوئے سر سوائیر نے کہا کہ مجھے خوشی ہے کہ پاکستان کا کامیاب دورہ رہا جو کامن ویلتھ ٹریڈ کا اٹوٹ انگ ہے۔ انہوں نے کہا کہ وزیراعظم عمران خان منسٹر آف ٹریڈ اینڈ کامرس اور سینئر بزنس لیڈرز کے ساتھ نتیجہ خیز بات چیت کی ہے۔ ہم ساتھی دولت مشترکہ ممالک کے ساتھ پاکستان کی تجارت کو وسیع کرنے کی کوششوں کو سپورٹ کرنے کا مقصد رکھتے ہیں اور ہم حکومت پاکستان اورپرائیویٹ بزنس سیکٹرز کے ساتھ سٹریٹیجک پارٹنر شپ چاہتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ہمارا کراچی میں حب قائم کرنے کا پلان ہے تاکہ کامن ویلتھ میں پارٹنرز کے ساتھ منسلک کرنے کی کوششوں میں لوکل بزنسز کو مزید سپورٹ فراہم کی جا سکے۔

اہم خبریں سے مزید