آپ آف لائن ہیں
بدھ21؍ذی الحج1441ھ12؍اگست 2020ء
  • بانی: میرخلیل الرحمٰن
  • گروپ چیئرمین و ایگزیکٹوایڈیٹر: میر جاوید رحمٰن
  • گروپ چیف ایگزیکٹووایڈیٹرانچیف: میر شکیل الرحمٰن
Jang Group

اگر کسی کی اولاد نہ ہو تو اس کی میراث کسے ملے گی؟

آپ کے مسائل اور اُن کا حل

سوال :۔ اگر کسی شخص کے ہاں اولاد نہ ہو تو اس کی وفات کے بعد اس کی جائیداد کا وارث کون ہوگا؟ اسی طرح اس کی زوجہ کی وفات کے بعد زوجہ کی جائیداد کا وارث کون ہوگا؟

جواب:۔ اولاد نہ ہوتو دوسرے قریبی رشتے دار وارث ہوتے ہیں ،مثلاً والدین اور بیوہ کو حصہ ملتا ہے۔ قرآنِ کریم نے بارہ قریبی رشتے داروں کو بیان کیا ہے، جنہیں مقررہ حصہ ملتا ہے ،جن میں باپ ،دادا،ماں شریک بھائی اور شوہر مردوں میں سے شامل ہیں اور آٹھ عورتیں ہیں، جن میں بیٹی اور پوتی کے علاوہ بیوی ،سگی بہن ،باپ شریک یا ماں شریک بہن اور ماں اور دادی وغیرہ شامل ہیں ۔یہ رشتے دارنہ ہو ں تو پھر دوسرے درجے میں عصبہ کو میراث ملتی ہے۔

عصبہ کے بھی تین درجے ہیں اور اس کے بعد ذوی الارحام وارث ہوتے ہیں ۔یہ وہ قریبی رشتے دار ہیں، جن کاحصہ متعین نہیں ہے اور وہ عصبہ بھی نہیں ہیں ۔پھر اسی طرح جس کے لیے نسب کا اقرار ہو یا جس کے متعلق میت نے وصیت کی ہو۔ اگر کوئی بھی مستحق میراث نہ ہو تو میراث کو بیت المال میں جمع کردیا جاتا ہے یا فقراء میں تقسیم کردیا جاتا ہے۔