آپ آف لائن ہیں
جمعرات13؍ صفر المظفّر 1442ھ یکم اکتوبر2020ء
  • بانی: میرخلیل الرحمٰن
  • گروپ چیئرمین و ایگزیکٹوایڈیٹر: میر جاوید رحمٰن
  • گروپ چیف ایگزیکٹووایڈیٹرانچیف: میر شکیل الرحمٰن
Jang Group

ذخیرہ الفاظ میں اضافہ کرنے کے مشورے

علمی ماہرین کی رائے کے مطابق کسی بھی زبان کو سیکھتے وقت ابتدا میں طالب علموں کی توجہ گرامر کی بہتری کے بجائے ذخیرہ الفاظ (Vocabulary) بڑھانے پر ہونی چاہیے کیونکہ یہ کسی بھی زبان میں اظہارِ کے لیے نہایت اہم ہوتے ہیں۔ 

ذخیرہ الفاظ کسی لکھاری کے لازمی ہتھیار مثلاًگرامر ،رموز اوقاف اور دیگر کی طرح خاص اہمیت رکھتے ہیں۔ یہ ذخیرہ جتنا زیادہ ہوگا تحریر اتنی ہی طاقتور اور مؤثر تسلیم کی جائے گی ۔ذخیرہ الفاظ میں اضافہ آپ کی تحریر کو زیادہ واضح اور جامع روپ میں ڈھالے گا اور لوگ آپ کی بات زیادہ آسانی سے سمجھ پائیں گے ساتھ ہی آپ کی گفتگو یا تحریر کی تعریف بھی کریں گے۔

ذاتی لغت

اسکول کے زمانے میںعموماً پہلی یا دوسری جماعت میں ٹیچر کی جانب سے کوئی بھی نیا لفظ سیکھنے کے بعد اسے علیحدہ سے نوٹ بک یا انگلش کی نوٹ بک میں آدھے کیے گئے پورشن میں لکھنے کو کہا جاتا ہے۔ علمی ماہرین کے مطابق، ذاتی لغت ذخیرہ الفاظ بڑھانے کا سب سے مؤثر طریقہ تصور کیا جاتا ہے۔ یہی نہیں ذاتی لغت آپ کی سیکھنے کی صلاحیتوں میں اضافہ کرتی ہے، لہٰذا کسی معیاری پبلشر کی لغت خریدنے یا ڈاؤن لوڈ کرنے کے ساتھ آپ نوٹ بک یا فون نوٹ پیڈ پر اپنی ذاتی لغت بھی تیار کیجیے اور اس میں روزانہ سیکھے گئے الفاظ کا ذخیرہ کریں۔

نئے الفاظ کا استعمال

کسی بھی نئے لفظ کو سیکھنے کے بعد اسے فوراً جملوں میںاستعمال کرنا ضروری ہوتا ہے۔ مثال کے طور پر، جب بھی آپ کوئی نیا لفظ سیکھیں، اس لفظ کا استعمال اپنی گفتگو میں کرنا شروع کریں۔ ہر روز گفتگو میں یا لکھائی میںکم ازکم کسی ایک نئے لفظ کااضافہ لازمی کیجیے۔ کوئی نیا لفظ سیکھنے کے بعد جملوں میں اس لفظ کا استعمال جتنی جلدی ممکن ہواتنا جلدی کیا جائے، پھر بار بار اسے اپنی گفتگو میں دہرانے کی بھی کوشش کریں تاکہ یہ ذہن میں نقش ہوجائے۔

باقاعدگی سے مطالعہ کرنا

مطالعہ ذخیرہ الفاظ میں اضافہ کابہترین اور مؤثر طریقہ کارہے۔ مطالعہ کے ذریعے آپ نئے الفاظ سیکھنے کے ساتھ ساتھ روزمرہ زندگی میں ان لفظوں کامناسب اور مؤثر استعمال بھی سیکھ پاتے ہیں۔ کتابوں، میگزین یا اخبارات پڑھتے وقت ایسے الفاظ جن کے معنی معلوم نہ ہوں تو ان کی وضاحت کے لیے لغت کی مدد لیں، اس طرح وہ الفاظ آپ کے ذہن میں اپنی جگہ بنا لیتے ہیں اور وقت پڑنے پر خود بخود آپ کے ذہن میں آموجود ہوتے ہیں، جنہیں آپ اپنی بات چیت یا تحریر میں بآسانی استعمال کرسکتے ہیں۔ مختلف مطالعات ثابت کرچکے ہیں کہ مطالعہ کے شوقین افراد عام افراد کی نسبت اپنی رائے کا اظہار زیادہ خوبصورت الفاظ میں کرتے ہیں۔ تاہم اس بات کو یقینی بنائیں کہ مختلف مضامین اور طریقوں سے مطالعہ کیا جائے تاکہ آپ کی دلچسپی برقرار رہے۔

سیاق وسباق سے تجزیہ

مطالعہ کے دوران کسی نئے لفظ کو پڑھنے اور اس کے معنی تلاش کرنے کے بعد آپ فوراًہی اس لفظ کو اپنی تحریر یا گفتگو کا حصہ بنانے سے پہلے اس لفظ کےسیاق و سباق سے معنی و مفہوم تلاش کریں۔ یہ جاننے کی کوشش کریں کہ قاری نے اس لفظ کا استعمال کس سیاق وسباق اورکس مفہوم کے تحت کیا ہے۔ اگرچہ کسی لفظ کا تجزیہ کرنا تھوڑا مشکل کام ہے لیکن علمی ماہرین اس طریقہ کار کو ذخیرہ الفاظ بڑھانے کا جدید انداز تصور کرتے ہیں۔

اپنا امتحان خود لیں

روزانہ کی بنیاد پر نئے سیکھے جانے والے الفاظ کی فہرست کی تجدید کریں، ساتھ ہی ان لفظوں کو اپنی گفتگو اور تحریر کا حصہ بھی بنائیں۔ ہفتے کے آخر میں ان الفاظ کے ذریعے کوئز تیار کرکے اپنا امتحان خود لیں اور جانیں کہ آپ کا دماغ کس لفظ کو کس حد تک ذہن نشین کرپایا ہے۔ یہ امتحان آپ کو تمام الفاظ اچھے طرح یادداشت کا حصہ بنانے میں مدد کرے گا ۔

دوسرے الفاظ سے تعلق

تحقیق ثابت کرتی ہے کہ انسانی دماغ کسی زبانی تصور کو کسی تصویر یادیگر تصور ات سے منسلک کرتے ہوئے زیادہ بہتر انداز میں سیکھ سکتاہے۔ مثال کے طور پر اگر آپ لفظ""temperament"سیکھ رہے ہیں تو اسےذہن میں یاد رکھنے کے لیے لفظ "temperature" سے جوڑدیں ، اس کا فائدہ یہ ہوگا کہ اس تعلق کی بنیاد پر آپ لفظ temperament کو یاد رکھنے کے قابل ہوجائیں گے۔ کسی لفظ کو دوسرے لفظ سے جوڑنے کا اگر چہ معنی یا مطلب سے کوئی تعلق نہیں ہوتا لیکن یہ لفظ دماغ کو دوسرالفظ یاد رکھنے قابل بنادیتے ہیں۔

ورڈ پزل سے سیکھیے

اخبار، میگزین یا پھر موبائل میں موجودWord Puzzle کے مختلف کھیل نہ صرف تفریح کا باعث ہوتے ہیں بلکہ وہ ذخیرہ الفاظ میں اضافے کا بھی بہترین ذریعہ ہوتے ہیں۔ مختلف لفظوں سے پزلز کی تیاری دماغی صلاحیت کو تیز کرتی ہے اور انسانی کردار کو مضبوط بنانے میں بھی اہم کردار ادا کرتی ہے۔ 

کراس ورڈ، ورڈ جمبل، اسکریبل اور بوگل جیسے گیمز طالب علموں کے لیے چیلنج تصور کیے جاتے ہیں، جنہیں کھیلنے یا بوجھنےوالااپنی یادداشت ودماغ پر زور ڈالتا ہے اوریہ طریقہ کار ان کے دماغ میں موجود ورڈ بینک میں لفظوں کو منتقل کرنے کا ذریعہ بنتا ہے جو دوران تحریر ان کے لیے مفید ثابت ہوتا ہے۔

تعلیم سے مزید