آپ آف لائن ہیں
منگل11؍صفر المظفّر 1442ھ 29؍ستمبر 2020ء
  • بانی: میرخلیل الرحمٰن
  • گروپ چیئرمین و ایگزیکٹوایڈیٹر: میر جاوید رحمٰن
  • گروپ چیف ایگزیکٹووایڈیٹرانچیف: میر شکیل الرحمٰن
Jang Group

رواں مالی سال کے پہلے مہینے میں مہنگائی میں 9.3 فیصد کا اضافہ

وفاقی ادارہ شماریات کی رپورٹ میں پیٹرولیم مصنوعات مہنگی کرنے کے اثرات جولائی میں مہنگائی میں اضافے کی صورت میں سامنے آگئے، رواں مالی سال کے پہلے مہینے میں مہنگائی میں 9.3 فیصد اضافہ ریکارڈ کیا گیا ہے۔

ادارہ شماریات کی مہنگائی پر جاری کردہ ماہانہ رپورٹ کے مطابق جون کے مقابلے میں 2 اعشاریہ 5 صفر فیصد اضافے کے بعد جولائی میں مہنگائی 9 اعشاریہ 3 فیصد تک پہنچ گئی ہے،جولائی میں ٹماٹر 179 فیصد، سبزیاں 23 اعشاریہ 8 فیصد، گندم 7 اعشاریہ 4 فیصد، چینی 3 اعشاریہ 8 فیصد مہنگی ہوئی ہے۔

جولائی میں ماہانہ بنیاد پر شہری علاقوں میں ٹماٹر 179 فیصد، موٹر فیول 27 فیصد، سبزیاں 23 اعشاریہ 8 فیصد اور پیاز 16 اعشاریہ 6 فیصد مہنگے ہوئے ہیں۔

اسی طرح جون کے مقابلے میں جولائی میں انڈے 10 اعشاریہ 8 فیصد، مصالحہ جات 7 اعشاریہ 5 فیصد، گندم 7 اعشاریہ 4 فیصد اور آلو 4 اعشاریہ 5 فیصد مہنگے ہوئے جبکہ گوشت 3 اعشاریہ 9 فیصد، چینی 3 اعشاریہ 8 فیصد مہنگی ہوئی۔

ادارہ شماریات کے مطابق جولائی میں سالانہ بنیاد پر شہری علاقوں میں ٹماٹر ایک سو فیصد مہنگا ہوا، آلو 63 فیصد، دال مونگ 46 اعشاریہ 25 فیصد، انڈے 43 اعشاریہ 11 فیصد اور مرغی 36 اعشاریہ 69 فیصد مہنگی ہوئی۔

جولائی 2019ء کے مقابلے میں جولائی 2020ء میں شہری علاقوں میں چینی 17 فیصد، گندم 28 اعشاریہ 52 فیصد اور آٹا 18 اعشاریہ 52 فیصد مہنگا ہوا ہے۔

تجارتی خبریں سے مزید