آپ آف لائن ہیں
اتوار9؍صفر المظفّر 1442ھ 27؍ستمبر 2020ء
  • بانی: میرخلیل الرحمٰن
  • گروپ چیئرمین و ایگزیکٹوایڈیٹر: میر جاوید رحمٰن
  • گروپ چیف ایگزیکٹووایڈیٹرانچیف: میر شکیل الرحمٰن
Jang Group

ترکی میں متنازع بولڈ فلم ’’ کیوٹیز‘‘ کی ریلیز روک دی گئی

استنبول (مانیٹرنگ ڈیسک)اسٹریمنگ ویب سائٹ ’نیٹ فلیکس‘ نے ترک حکومت کی دھمکی کے بعد وہاں متنازع بولڈ فلم ’کیوٹیز‘ کی ریلیز روک دی۔نیٹ فلیکس کی فلم ’کیوٹیز‘ کی کہانی 11 سالہ مسلمان لڑکی کے گرد گھومتی ہے جو اپنے مذہبی خاندان سے بغاوت پر اتر آتی ہے۔فلم کی کہانی افریقی ملک سینیگال کے پناہ گزین خاندان اور اس گھر کی نوعمربچی کے بلوغت کو پہنچنے والے رجحانات کے گرد گھومتی ہے۔فلم میں مسلمان خاندان کو دکھایا گیا ہے، جس میں 11 سالہ بچی کے والد دوسری شادی بھی کرتے ہیں جب کہ ان کے گھر میں مسائل بھی رہتے ہیں۔فلم میں دکھایا گیا ہے کہ کس طرح نوعمرلڑکیاپنے آبائی مذہب اور انٹرنیٹ دور کے ٹرینڈز کے درمیان الجھ کر بے راہ روی کا شکار ہو جاتی ہیں۔فلم میں دکھایا گیا کہ کس طرح بچی کی بولڈ حرکتوں کو ان سے عمر میں بڑے لڑکے موبائل پر ریکارڈ کرکے سوشل میڈیا پر وائرل کردیتے ہیں۔فلم میں نو عمر مسلم لڑکی کو بولڈ کردار میں دکھائے جانے پر جہاں نیٹ فلیکس پر دنیا بھر میں غم و غصہ کا اظہار کیا گیا تھا، وہیں ترک حکومت نے بھی اسٹریمنگ ویب سائٹ کو فلم کی ریلیز روکنے کا حکم دیا تھا۔ترک حکومت کے ریڈیو اینڈ ٹیلی وژن ہائی کونسل (آر ٹی یو کے) نے رواں ماہ ستمبر کے پہلے ہی ہفتے میں نیٹ فلیکس کو مذکورہ فلم ترکی میں ریلیز کرنے سے روک دیا

تھا۔اور اب نیٹ فلیکس نے مذکورہ فلم کو دنیا کے متعدد ممالک میں ریلیز کرتے ہوئے ترکی میں اس کی ریلیز روک دی۔ نیٹ فلیکس کے ترجمان نے فلم کو ترکی میں ریلیز نہ کرنے کی تصدیق کی۔نیٹ فلیکس کے ترجمان کا کہنا تھا کہ اسٹریمنگ ویب سائٹ نے ترک میڈیا ریگولیٹر ادارے کی ہدایات پر عمل کرتے ہوئے وہاں ’کیوٹیز‘ کی نمائش روک دی۔نیٹ فلیکس نے جہاں فلم کو ترکی میں ریلیز نہیں کیا، وہیں اسٹریمنگ ویب سائٹ نے ’کیوٹیز‘ کو 9 ستمبر کو دنیا بھر میں ریلیز کردیا تھا۔

دل لگی سے مزید