• بانی: میرخلیل الرحمٰن
  • گروپ چیف ایگزیکٹووایڈیٹرانچیف: میر شکیل الرحمٰن

افغانستان میں طالبان کی سخت حکمرانی کا دور واپس آگیا ہے، گلفروز ایبٹیکر

راچڈیل(نمائندہ جنگ) افغان وزارت داخلہ میں مجرمانہ تحقیقات کی نائب سربراہ کے طو رپر کام کرنے والی 34سالہ خاتون آفیسرگلفروز ایبٹیکر نے کہا ہے کہ افغانستان میں طالبان کی سخت حکمرانی کا دور واپس لوٹ آیا ہے۔گلفروز ایبٹیکر جنہیں افغان خواتین کیلئے ایک رول ماڈل کے طو رپر دیکھا جاتا ہے، نے افغانستان سے انخلاء کیلئے کابل ائر پورٹ پر پرواز کے انتظار اور محفوظ جگہ پر منتقل ہونے کیلئے پانچ راتیں گزاریں، گلفروز ایبٹیکرنے بتایا افغانستان میں بدترین حالات کے دوران اس نے اپنے خاندان کو بچانے کے لیے بہت سے ممالک کے سفارت خانوں کو پیغامات بھیجے لیکن کوئی فائدہ نہیں ہوا، گلفروز افغانستان کی پہلی خاتون ہیں جنہوں نے پولیس اکیڈمی سے ماسٹر کی ڈگری حاصل کی اور خواتین کیلئے رول ماڈل کے طور پر شہرت پائی ،گلفروز نے بتایا کہ کابل ائر پورٹ پر افراتفری کا سماں تھا، پناہ گزینوں کے شدید رش اور سہولیات کے فقدان کی وجہ سے شدید مشکلات کا بھی سامنا کیا جب امریکی فوجیوں کے قریب پہنچے تو اطمینان کا اظہار کیا کہ ہم محفوظ ہیں اور انخلاء کیلئے امیدوں کو تقویت ملی ہم نے امریکی فوجی افسران کو بتایا کہ کابل میں رہنا ہمارے لیے بالکل غیر محفوظ ہے ہماری دستاویزات ، شناختی کارڈ ، پاسپورٹ اور پولیس سرٹیفکیٹ وغیرہ کو چیک کیا گیا، ہم سے پوچھا گیا کہ کہاں جانا چاہتے ہیں تو ہم نے کہا کہ اس سے کوئی فرق نہیں پڑتا ہمیں محفوظ مقام چاہیے جہاں ہماری جان کو خطرہ نہ ہو،سپاہی ہمیں ساتھ لے کر چل پڑے ہمارا خیال تھا کہ طیارے کی طرف لے جایا جائے گا مگر وہ ایک پرہجوم گلی میں لے گئے جہاں دہشت گردوں کا حملہ ہو گیا اور ہم فوجیوں کے کہنے پر بھاگ نکلے، انہوں بتایا کہ اس نے روس کی ایک اعلیٰ پولیس اکیڈمی میں پڑھائی کی تھی مگر ماسکو سفارتخانے نے بھی مدد کرنے سے انکار کر دیا کیونکہ میرے پاس روسی پاسپورٹ یا رہائش نہیں تھی، میں نے افغانستان میں زندگی بدلنے کا خواب دیکھا تھا،وزارت داخلہ میں نوکری ملی اور افغانستان میں ایک اعلیٰ عہدے پر فائز ہونے کے بعد فرائض منصبی نبھاتی رہی ۔گلفروز نے اس امر کا انکشاف کیا کہ وہ دوسری بار جب کابل ہوائی اڈے پر فرار ہونے کی کوشش کیلئے پہنچی تو طالبان کے مسلح افراد نے اسے ہتھیاروں کے ساتھ تشدد کا نشانہ بنایا، چھ ماہ قبل طالبان نے اسے اپنی نوکری کے حوالے سے وارننگ جاری کی تھی، گلفروز نے کہا افغانستان میں اب حالات یکسر بدل گئے ہیں اور انہیں وہاں کے شہریوں کی فکر کھائے جا رہی ہیں جو طالبان کے رحم و کرم پر ہیں ۔

یورپ سے سے مزید