• بانی: میرخلیل الرحمٰن
  • گروپ چیف ایگزیکٹووایڈیٹرانچیف: میر شکیل الرحمٰن

برطانیہ: کورونا سے قبل کی رونقیں بحال، سڑکوں پر ٹریفک میں مسلسل اضافہ ریکارڈ

راچڈیل(ہارون مرزا)عالمی وبا کورونا کے باعث عائد سخت پابندیاں ختم ہونے اور لاکھوں لوگوں کی طرف سے نوکریوں پر واپس جانے کے بعد برطانیہ میں کورونا بحران سے قبل کی رونقیں بحال ہونا شروع ہو گئیں، سڑکوں پر ٹریفک کے دبائو میں مسلسل اضافہ ریکارڈ کیا گیاہے، 30ستمبر کو معاشی سہارا دینے والی فرلو سکیم کے ممکنہ طور پر خاتمے کے بعد وسیع پیمانے پر لوگوں کے کام پر واپس آنے کی توقع کی جا رہی ہے، 18ماہ تک کورونا لاک ڈائون اور دیگر پابندیوں کی وجہ سے گھروں پر کام کرنے والے ملازمین و آجروں کوواپس اپنے دفاتر اور کام پر آنے کی ہدایات کے بعد ملازمین کی نقل وحمل سے ٹریفک کے دبائو میں اضافہ ہوا ہے ،برطانیہ کے گنجان ترین علاقوں میں ٹریفک کا رش بڑھتا جا رہا ہے دوسری طرف سول سروس کے سربراہوں اور بینک آف انگلینڈ نے اپنے عملے کو کام کی جگہ پر واپس لانے کے منصوبوں میں ایک بار پھر تاخیر کی ہے، وائٹ ہال پربڑی حد تک ویرانی دیکھی گئی ہے، سٹی آف لندن بھی پُرسکون رہتا ہے کیونکہ اکائونٹنٹس سمیت بی ڈی او کے عملہ کو گھروں میں یا دفاتر میں بیٹھ کر کام کرنے کی ابھی اجازت ہے ۔برطانیہ کے بڑے آجروں میں شمار ہونے والے جے پی مورگن جس کے پاس تقریبا 12ہزار افراد کا عملہ موجود ہے، اپنی کمپنیوں میں عملے کو واپس لانے کیلئے انہیں راضی کرنے میں مشغول ہے بعض سینئر ملازمین و آجروں کا کہنا ہے کہ وہ گھر کی بسنبت دفاتر میں بیٹھ کر کام کرنے کو ترجیح دیتے ہیں جواوور رائیڈنگ اصول ہے ،وہ آنے والے ہفتوں میں ناشتے اور دوپہر کے کھانے کی طرح خوش ہوں گے ۔لندن جانے کیلئے ریل کے مسافروں میں بھی صبح کے اوقات میں شدید رش دیکھا گیا ہے ۔شدید رش کے باعث بعض مسائل بھی سامنے آ ئے ہیں، لندن وکٹوریہ میں بجلی کی فراہمی میں عارضی ناکامی کا مطلب ہے کہ اسٹیشن سے آنے اور جانے والی ٹرینیں منسوخ ہو سکتی ہیں، 30 منٹ تک تاخیر یا نظر ثانی کی جا سکتی ہے جو بنیادی طور پر ساؤتھ ایسٹ لندن اور کینٹ کے راستوں کو متاثر کر رہی تھی۔ اسکاٹ لینڈ میں ایڈنبرا اور ڈنبر کے درمیان اسکاٹ ریل اور ایل این ای آر سروسز میں تاخیر ریکارڈ کی گئی ہے ۔تھامس لنک اور سدرن جیسے دوسرے آپریٹرز نے کہا کہ وہ عملے کی کمی سے نمٹنے کے لیے کم ٹائم ٹیبل پر کام کر رہے ہیں،لندن میں کیو گارڈنز میں سگنل فیل ہونے کی وجہ سے ڈسٹرکٹ لائن ٹرنہم گرین اور رچمنڈ پر شدید تاخیر ہوئی جب کہ ٹرین کی منسوخی کی وجہ سے سرکل اور میٹروپولیٹن لائنوں پر بھی مسافروں کو معمولی تاخیر کا سامنا کرنا پڑا،اسٹریٹ فورڈ اور رچمنڈ کے درمیان لندن اوور گراؤنڈ پر منسوخی بھی ہوئی، برطانیہ کی 18 بڑی فرموں میں سے ایک بڑی فرم جو نصف ملین سے زائد عملے کو نوکری فراہم کر رہی ہے ،کے آدھے سے زیادہ کارکنان اسی ہفتے واپس آنے کیلئے تیار ہیں ۔ کورونا بحران میں لوگوں کو معاشی سہارادینے کیلئے شروع کی جانے والی فرلو سکیم 30ستمبر کو ختم ہونے جا رہی ہے جس کے بعدوسیع پیمانے پر لوگوں کے کام پر واپس آنے کی توقع کی جا رہی ہے۔

یورپ سے سے مزید