• بانی: میرخلیل الرحمٰن
  • گروپ چیف ایگزیکٹووایڈیٹرانچیف: میر شکیل الرحمٰن

PMDA کے نفاذ کی بجائے موجودہ قوانین کو بہتر بنایا جائے، خالد مقبول

کراچی(اسٹاف رپورٹر)ایم کیو ایم پاکستان کے مرکز بہادرآباد پرذرائع ابلاغ سے تعلق رکھنے والی مختلف انجمنوں جس میں اے پی این ایس ، سی پی این ای ، پی بی اے اور پی ایف یو جے سے تعلق رکھنے والے ایک نمائندہ وفد نے کنوینر ڈاکٹر خا لد مقبول صدیقی سے ملا قات کی اور حکومت کی جانب سے ممکنہ طور پر نافذ کئے جانے والے پاکستان میڈیا ڈویلپمنٹ اتھارٹی بل پر اپنے شدید تحفظات کا اظہار کرتے ہوئے اسے کالا قانون قرار دیااور مزید کہا کہ اس قانون کے ذریعے حکومت آزادی اظہار پر قدغن لگانا چاہتی ہے اور حکومت کے اس فیصلے سے ذرائع ابلاغ سے تعلق رکھے والے افراد میں بے چینی پائی جاتی ہے ۔

اس موقع پر ڈاکٹر خالد مقبول صدیقی نے کہا کہ ایم کیو ایم پاکستان یہ سمجھتی ہے کہ میڈیا ڈویلپمنٹ اتھارٹی بل نافذ کر نے کے بجائے پہلے سے موجود قوانین کو بہتر اور قابل عمل بنانے کی ضرورت ہے ۔ ایم کیو ایم پاکستان ہمیشہ آزادی اظہار رائے کی حامی رہی ہے اور ہم یہ چاہتے ہیں کہ آزادی اظہار رائے ہر صورت میں مقدم رہے۔

اس موقع پر وفد نے کہا کہ میڈیا اپنے اوپر عائد ذمہ داریوں کا بخوبی ادراک رکھتا ہے اور وہ ملک کی ترقی، استحکام اور سالمیت کے لئے ہر ممکن تعاون کے لئے تیار ہے ۔

ڈاکٹر خالد مقبول صدیقی نے مزید کہا کہ میڈیا کے تمام قوانین ایکٹ آف پارلیمنٹ کے ذریعے آئین کا حصہ ہیں لہٰذا ان پر اس کی روح اور متن کے مطابق ایمانداری، غیر جانبداری اور نیک نیتی کے ساتھ عمل درآمد کیا جائے اور ایم کیو ایم پاکستان حکومت اور ایوانوں میں اس ضمن میں اپنا مثبت قردار ادا کرے گی ۔

اس موقع پر ایم کیو ایم کی رابطہ کمیٹی کے سینئر ڈپٹی کنوینرعامر خان،ڈپٹی کنوینر کنور نوید جمیل،ڈپٹی کنوینروسابق میئر کراچی وسیم اختر،رکن رابطہ کمیٹی ووفاقی وزیر سید امین الحق، رکن رابطہ کمیٹی و سینیٹر فیصل سبزواری بھی موجود تھے۔

اہم خبریں سے مزید