| |
Home Page
ہفتہ 7؍ جمادی الثانی 1439ھ 24؍ فروری 2018ء
ارشاد بھٹی
February 22, 2018
تیسری شادی اور سیانے

خلیل جبران کہے ’’ہم سب پاگل پیدا ہوتے ہیں لیکن کچھ آخر تک پاگل ہی رہتے ہیں اور ان میں اکثریت سیانوں کی‘‘، سیانوں کے امام ارسطو کا خیال ’’دنیا کو جتنا نقصان سیانوں نے پہنچایا، اتنا بے وقوف چاہ کر بھی نہ پہنچا سکیں‘‘، یہ باتیں اس لئے بھی دل کو لگیں کہ زندگی میں جو سیانا بھی ملا، ایسے ملا کہ پھر ملنے کی چاہ نہ رہی، ذرا ملاحظہ کریں...
February 15, 2018
دانش نوازی

اگر آپ کو کہیں یہ لکھا نظر آئے کہ’’ شیر گیڈر کی خدمتیں کر رہا ، مچھلیاں درختوں پر رہ رہیں یا ملکی حالات ایسے ہو چکے کہ چوہے بلیاں کھار ہے‘‘ تو پریشان نہ ہوں ، آپ شیخو کے اخباری بیان پڑھ رہے ، وہی شیخو جسکا ظاہر اورباطن دیکھ کر وہ سفید فام رہنما یاد آجائے جو ایک بار سیاہ فام باشندوں کی ریلی سے خطاب کرنے جا پہنچا اور جب حاضرین نے...
February 08, 2018
تالیاں بجاتی قوم

یادداشتیں کمزور تکلیف یہ بھی ، اخلاقیات کا جنازہ اُٹھ چکا دُکھ اسکا بھی، مگر اصل غم یہ کہ جہنم کے دروازے پر ’’یہ جنت ہے ‘‘ کی تختی لگا کر کہا جارہا ’’یہ جنت تمہاری ‘‘اور خوشی سے پھولے نہ سمائی قوم اچھل اچھل کر تالیاں بجارہی !26جون 2012، زرداری حکومت ، جلسۂ عام سے خطاب کرتے میاں صاحب فرماتے ہیں ’’کیاتمہیں عوام نے اس لئے ووٹ دیا کہ...
February 01, 2018
زندہ تاریخ

بے نظیر بھٹو کے ساتھ تصویر کھینچتے ہوئے جیسے ہی واجد شمس الحسن نے میمونہ سے کہا’’ بیٹا آپ ذرا مسکراؤ ‘‘تو بی بی بولیں ’’ جن بچیوں کا باپ جیل اور والدہ بسترِ علالت پر ہو ، ان کے چہروں پر مسکراہٹ کیسے آسکتی ہے ‘‘۔ بھانجی کی موت پر وزیراعلیٰ پنجاب چوہدری پرویز الہٰی نے تعزیتی فون کرتے ہوئے جب یہ کہا ’’جیل میں خوش ہیں ۔۔ڈنڈ...
January 25, 2018
بیگم ہتھ پستول نئیں ہُندا

ہمارا ایک دوست جو وطن سے اپنی محبت کی دلیل یہ دے کہ ’’جب تک پاکستان بن نہ گیا ، میں پیدا ہی نہ ہوا‘‘، جسکی یادداشت ایسی کہ اکثر بولتے بولتے یہ بھول جائے کہ موضوع کیا، جب موضوع یاد آئے تو یہ بھول جائے کہ بول کیا رہا، جو عمر کے اس حصے میں کہ جہاں آئینے میں خود کو دیکھ کر پہلا خیال یہی آئے کہ اس شخص کو پہلے کہاں دیکھا ہے ،جسکا منہ...
January 18, 2018
عوامی عدالت

جو یہ بتا رہے کہ ’’اصلی تے وڈی عدالت عوامی‘‘ اور جو یہ رٹا رہے کہ’’ عوامی عدالت‘‘ نااہلی کو ردی کی ٹوکری میں پھینک چکی ، ان سب سے یہی گزارش حضور باقی سب چھوڑیں اگر صرف زینب کی عوامی عدالت ہی لگ جائے تو بات نااہلی سے بھی آگے نکل جائے ۔ فرض کریں ’’ اصلی تے وڈی عدالت عوامی ‘‘ہی،فرض کریں یہاں مہذب معاشرہ نہیں ، کوئی قانون، ضابطہ...
January 08, 2018
پریکٹس ضرور کر لیں !

خیال تھا کہ موسمی بخار ہے ،موسم بدلے گا تو اُتر جائے گا،لیکن جب ایک صاحب ِ علم کا کالم ’’نواز شریف کی تاریخ ساز مزاحمت ‘‘ نظر سے گزرا ، جب ایک جہاندیدہ، چشم گزیدہ بزرگ کے قلم نے میاں صاحب کو ملک کا نایاب اثاثہ قرار دیدیااورجب چند حریت پسند مسلسل یہ ڈھول پیٹتے پائے گئے کہ میاں صاحب نظریاتی اورمزاحمتی ہو چکے تب پتا چلا کہ یہ موسمی...
January 01, 2018
قائد ِ اعظمؒ اور قائداعظم ثانی

موازنہ بنتا بھی نہیں اوراندھیرے ‘اُجالے کا بھلا موازنہ کرنا بھی کیا لیکن قائد ِ اعظم ثانیوں کی آئی بہار دیکھ کر دل پر پتھر رکھے یہ موازنہ کررہا۔قائد ِ اعظمؒ گورنر جنرل ‘ممبئی سے رشتہ دار ملنے آیا ،پوچھا کیسے آئے ،جواب ملا’’ اگر سرکاری ملازمت مل جائے تو میں بھی پاکستان کی خدمت کر سکوں‘‘ فرمایا ’’نہیں بالکل نہیں لوگوں کو...
December 25, 2017
بھاگ لگے رہن

ملک کو بنانا ریپبلک نہ بنائیں ،جتنی جگ ہنسائی ہو چکی ،وہی کافی قوم پر رحم ، جوجمہوریت باقی اسے ہی رہنے دیں !میاں صاحب فرمارہے،مجھے کیوں نکالا ،سزا ملی نہیں دلوائی گئی ،احتساب نہیں انتقام ،سازشیں ہورہیں ، ججز بغض و عنادسے بھرے ہوئے،عدالت ہی مخالف وکیل ،انصاف کے دومعیار ،سکھا شاہی نہیں چلے گی ،تحریک چلاؤں گا ، حضور 5فورمز پر آپ کو...
December 21, 2017
جھوٹ کو صفائیاں دیتا سچ

شیخو جس کا کہنا کہ بیوی تو ایک بھی زیادہ‘ مگر کیا کریں ایک سے کم ہو نہیں سکتی ‘جسکا دُکھ کہ جب جوان تھا تو جوانوں کی عزت نہ تھی ‘ بڑھاپے کی طرف بڑھا تو لوگ بوڑھوں سے تنگ‘ جسے ایک بار کہا گیا کہ’’ خدا نے تمہیں اس لئے پیدا کیا کہ دوسروں کے کام آسکو‘‘بولا’’پھر دوسروں کو کس لئے پیدا کیا‘‘ اور جسے بتایا گیا کہ’’حُسن دیکھنے والے کی...
December 11, 2017
سقوطِ ڈھاکہ

( گزشتہ سے پیوستہ)امریکی فلسفی جیمز فیلبل مین نے ایک بار کہا تھا کہ ’’دیومالائی حکایتو ں کے مذہب یعنی تصوراتی ، فرضی داستانوں پر اب کوئی یقین نہیں کرتا‘‘ لیکن جیمز فیلبل مین کو اگر پاکستان ٹوٹنے کی وجوہات ، بنگلہ دیش بننے کے اسباب پر نظر مار کر سچ میں لپٹے جھوٹ ، جھوٹ میں پھنسے سچ کو ڈھونڈنا پڑتااور اس حوالے سے پھیلائی دیومالائی...
December 07, 2017
سقوطِ ڈھاکہ

جہاں کی تاریخ یہی کہ تاریخ سے کچھ نہ سیکھا، جہا ں حافظے کمزور، معدے مضبوط،وہاں بھلا کسی کو کیا لگے ماضی سے، اوپر سے ماضی بھی ’’یادِماضی عذاب ہے یار ب۔۔ چھین لے مجھ سے حافظہ میرا‘‘ والا۔۔ لیکن کیاکروں، 46سال ہونے کو آئے، ملک ٹوٹے، بنگلہ دیش بنے، مگر ابھی بھی دسمبر چڑھتے ہی آنکھیں بھیگنے،خشک ہونے لگیں، بہانے بہانے ’’ سقوطِ...
December 04, 2017
ایک سیاست کئی کہانیاں

(گزشتہ سے پیوستہ) ارادہ تو تھا کہ دوست رؤف کلاسرا کی ’’ایک سیاست کئی کہانیاں ‘‘ کے باقی بچے فیصل صالح حیات ‘آصف زرداری ‘ امین فہیم ‘ آفتاب شیر پاؤ‘ سلطان محمود قاضی ‘ جنرل امجد‘ ظفراللہ جمالی ‘میاں نواز شریف اور یوسف رضا گیلانی کے انٹرویو کے ٹریلرز دکھاؤں مگر جب ذوالفقار بھٹو کا وہ شاہکار انٹرویو جو عالمی شہرت یافتہ...
November 30, 2017
ایک سیاست کئی کہانیاں

موجودہ بے یقینی، کنفیوژن اور گومگو کے ماحول میں جب اپنے دوست اور نامور صحافی رؤف کلاسرا کی انٹرویوز پر مبنی کتاب ’’ایک سیاست کئی کہانیاں‘‘ ہتھے چڑھی تو ایک ہی نشست میں ختم کر ڈالی، چند گھنٹوں میں 390صفحات کیسے پڑھ لئے، یہ تو پتا نہ چلا، لیکن پڑھنے کے بعد یہ ضرور معلوم ہوگیا کہ اگر چند فل اسٹاپ، کچھ کامے، دوچار نام اور تھوڑے سے...