مرغا

August 25, 2018
 

محمد اسد اللہ

ککڑوں کوں جی ککڑوں کوں

دیکھو میں اک مرغا ہوں

تم ہو انساں سوئے ہوئے

اور میں دیکھو جاگا ہوں

رات کو جاتے دیکھ چکا

صبح کی آہٹ سنتا ہوں

منظر صبح کا ہے ایسا

تم کو کیوں آواز نہ دوں

سورج کا رتھ نکلا ہے

بستر میں تم چھپے ہو کیوں

سن لی میری بانگ مگر

پھر بھی نہ رینگی کان پہ جوں


مکمل خبر پڑھیں