گھر کو صاف ستھرا رکھنے کے طریقے

December 08, 2019
 

گھر تعمیر کروانے یا گھر خریدنے کے بعد اگرآپ کو رہائش اختیار کیے کافی عرصہ ہوچکاہے تو اب آپ کو اسے صاف رکھنے کا مسئلہ درپیش ہوگا۔ اگر گھر میں بچے ہیں تو پھر یہ کام روزانہ کی بنیاد پر آپ کو دن میں کئی دفعہ کرنا ہوگا کیونکہ بچے جو ادھم مچاتے ہیں اور چیزوں کو ادھر ادھر بکھیرتے ہیں اس سے گھر کسی میدان جنگ کا سماں پیش کرنے لگتا ہے۔

ضروری نہیں کہ صرف بچے ہی گھر میں چیزیں پھیلائیں بلکہ ٹین ایجرز بھی اپنی سستی اورکاہلی کی وجہ سے چیزوںکو استعمال کرنے کے بعد وہیںچھوڑ دیتے ہیں۔ گھر میں بے ترتیبی اور بکھری ہوئی اشیا دیکھ کر آپ یقیناًپریشان اور الجھن کا شکار ہونے لگتے ہیں۔ اس سلسلے میں اگر آپ صفائی ستھرائی کیلئے ایک لائحہ عمل بنالیں تو آپ کا گھر صفائی کا اعلیٰ نمونہ بن سکتاہے۔ اس ضمن میںکچھ مشوروںپر عمل کیا جاسکتا ہے۔

اپنا بستر درست رکھیں

اگر آپ کے بیڈ روم میںبیڈ پر چیزیں بکھری ہوں، اس کی بیڈ شیٹ اور تکیے سیٹ نہہوں، کمبل وغیرہ بنا تہہ کیے رکھے ہوںتو پھر پورا کمرہ ہی آپ کو پھیلا ہوا نظر آتا ہے۔ اس لیے ضروری ہے کہ آپ صبح اُٹھتے ہی بیڈشیٹ درست کریں، تکیے سیٹ کرکے کمبل و رضائی وغیرہ تہہ کرکے رکھیں اور کوشش کریں کہ ہر دوسے تین بعد بیڈ شیٹ تبدیل کردیں۔ بیڈ کے ساتھ ڈریسنگ ٹیبل کو بھی ترتیب سے رکھنا ضروری ہے، ان باتوںپر عمل کرنے سے بیڈروم آپ کی نفاست کی گواہی دے گا۔

روزانہ کپڑے دھوئیں

آپ کو اگر اپنا ویک اینڈ بچانا اور انجوائے کرنا ہے تو روزانہ کی بنیادپر کچھ وقت نکال کر اپنے کپڑے دھونے ہونگے تاکہ ہفتے کے اختتام پر آپ کو کپڑوںکے انبار کا سامنا نہ کرنا پڑے۔ کپڑے دھوتے ہوئے خود کو محظوظ کرنے کے لیے پسندیدہ گانے بھی سُنے جاسکتے ہیں۔ کپڑوں کی دُھلائی کا کام رات کو بھی کیا جاسکتا ہے یاپھر صبح بچوںکے اسکول جانے کےبعد واشنگ مشین لگائی جاسکتی ہے۔

کھانے کے بعد برتنوں کی صفائی

کھانا کھانے یا کسی اسنیکس سے لطف اندوز ہونے کےبعد کچن یا ڈائننگ ٹیبل پر برتنوںکا پڑا رہنا بڑا نامناسب لگتاہے۔ اگر آپ کا ڈش واشر خالی ہےتو اسے خالی ہی رہنے دیں اور استعمال شدہ برتنوںکو صاف کرکے رکھ دیں۔ اگر آپ کا ڈش واشر خالی نہیںہے تو پھر وہاں گندے برتنوں کے ڈھیر میں اضافہ ہی ہوگا، لہٰذا کوشش کریں کہ برتن وقت پر صاف کرلیں۔

نلکوں اور سنک کی صفائی

سنک میںپڑے بال اور ٹوتھ پیسٹ سے باتھ روم گندا لگتاہے، کسی اچھے سے وائپ سے سنک اور نلکوںکو صاف کریں۔ گھر کے افراد کو عادت ڈلوائیں کہ وہ استعما ل کےبعد سنک اور نلکوںکو صاف رکھیں۔

اخبارات اور کاغذات کا ڈھیر

کچن کاؤنٹر اورڈائننگ ٹیبل پر اخبارات، خطوط اور بلز وغیرہ کا انبار لگا ہوگا تو گھر میںداخل ہوتے ہی ان پر نظر پڑے گی، جو نہ آپ کو اچھا لگے گا اور نہ ہی آنے والے مہمان کو۔ ان کیلئے کچھ کیبنٹس یا کارٹن مخصوص کرکے رکھیںیا پھر ان کا ٹھکانہ اسٹور روم میںبنا دیں۔

ہر صبح ڈش واشر خالی کریں

اگر آپ کے پاس رات کو ڈش واشر خالی کرنے کا بالکل بھی وقت نہیںہوتا تو اس کیلئے صبح صرف پانچ منٹ نکالیں۔ رات کو اگر تھکن کی وجہ سے آپ یہ کام کرنے سے قاصر ہیںتو صبح بچوں کے اسکول کی تیاری کے دوران آپ یہ کام کرسکتے ہیں۔ سنک میںبرتنوںکے ڈھیر سے نفاست کااحساس نہیںہوتا اور اس سے الجھن الگ ہوتی ہے۔ کچن کی رونق کو بڑھانا ہے تو آپ کو اپنا ڈش واشر خالی اور صاف ستھرا رکھنا ہوگا۔

فلور میٹس

اگر گھر میں آنے والے افراد جوتے چپل اپنی صحیح جگہ پر نہیں اتاریں گے اور پیروںکو فلور میٹس سے صاف نہیںکریں گے تو آ پ کے گھر کا داخلی راستہ صاف ستھرا نہیں رہے گا۔ فلور میٹس استعمال ہونے کی صورت میںآپ کو اسے روزانہ کی بنیادپر دونوںطرف سے جھاڑنا ہوگا۔

ہفتہ وار صفائی

بہت سی چیزوںکی روزانہ صفائی ممکن نہیںہوتی، بہتر یہی ہے کہ ہر چیز کی صفائی کیلئے کوئی ایک دن مخصوص کرلیںاور اسے ہر ہفتے کے بعد دہرائیں۔ مثال کے طور پر پیر کا دن کچن کیلئے مختص کرلیںاور کچن کی دیواروں، چولہوںاور دیگر اپلائنسز کو صاف کریں، سرف سے فرش کی صفائی کریں اور جالے وغیرہ اُتار دیں۔ اسی طرح منگل کا دن بیڈ روم کیلئے اور بدھ باتھ روم کی مکمل صفائی کیلئے مخصوص کیا جاسکتاہے۔ اسی طرح ہر جمعرات کو گھر کے شیشے، آرائشی اشیا اور ٹائلز وغیرہ صاف کیے جاسکتے ہیں۔

ماہانہ صفائی

گھر میں کیڑے مکوڑوں سے چھٹکارا حاصل کرنے کیلئے اسپرے یا فیومیگیشن کی جاسکتی ہے۔ فیومیگیشن کرنے کے لیے لازمی ہے کہ گھروالے زیادہ دیر کے لیے کہیں باہر چلے جائیں تاکہ کسی قسم کا نقصان نہ پہنچے۔ اس کے علاوہ گیراج یا لان کی صفائی بھی کروائی جاسکتی ہے۔

امید ہے کہ ان مشوروںپر عمل کرنے سے آپ کی اپنے گھر سے محبت اور بھی بڑھ جائے گی اور اگر کوئی مہماناچانک آ بھی جائے تو آپ جلدی جلدی چیزیں سمیٹنے کی کوفت سے بھی بچے رہیںگے۔