پہلی انٹرنیشنل تائیکوانڈو اولمپئن ماہم آفتاب Maham Aftab انتقال کر گئیں

October 24, 2020

کینسر میں مبتلا پاکستان کی پہلی انٹرنیشنل تائیکوانڈو اولمپئن ماہم آفتاب انتقال کر گئیں۔

26 سالہ ماہم آفتاب نے نیشنل و انٹرنیشل سطح پر تائیکوانڈو میں پاکستان کی نمائندگی کی، انہیں ’دختر وہاڑی‘ کے لقب سے پکارا جاتا تھا۔

تائیکوانڈو چیمپئن ماہم آفتاب برین ٹیومر کے مرض میں مبتلا تھیں اور گزشتہ چار ماہ سے اسپتال میں زیر علاج تھیں۔ ماہم آفتاب پاکستان آرمی کی جانب سے بھی تائیکوانڈو کھیلتی تھیں۔

تائیکوانڈو اولمپئن ماہم آفتاب تائیکوانڈو مقابلوں میں گولڈ میڈل لینے والی پہلی خاتون تھیں اور پاکستان کی جانب سے گولڈ میڈل جیتنے والی پہلی خاتون پلیئر تھیں۔

ماہم آفتاب کا تعلق پنجاب کے شہر وہاڑی سے تھا، ماہم آفتاب مسلسل سات سال تک قومی چیمپئن بھی رہی تھیں۔

ماہم آفتاب چار ماہ سے اسلام آباد کے نجی ہسپتال میں زیر علاج تھیں، پاکستان کی بہترین لڑاکا پلیئر برین ٹیومر کا مقابلہ نہ کر سکیں ۔

ماہم آفتاب کے انتقال پر پی سی بی، پی ایس بی اور کئی نامور کھلاڑیوں کی جانب سے افسوس کا اظہار کیا جارہا ہے۔

پاکستان کرکٹ بورڈ (پی سی بی) نے ماہم کے انتقال کی خبر شیئر کرتے ہوئے کہا کہ پاکستان کا نام عالمی دنیا میں روشن کرنے والی ماہم کے یوں اچانک دنیا سے رخصت ہونا افسوسناک ہے۔

وفاقی وزیر بین الصوبائی رابطہ کمیٹی ڈاکٹر فہمیدہ مرزا نے پاکستان تائیکوانڈو کھلاڑی کے انتقال پر گہرے دکھ و افسوس کا اظہار کیا ہے۔

اپنے تعزیتی پیغام میں ان کا کہنا تھا کہ دکھ کی اس گھڑی میں مرحومہ کے خاندان میں برابر کے شریک ہیں۔ اﷲ تعالی مرحومہ کو جنت الفردوس میں اعلیٰ مقام عطا فرمائے۔