• بانی: میرخلیل الرحمٰن
  • گروپ چیف ایگزیکٹووایڈیٹرانچیف: میر شکیل الرحمٰن

اینیمیٹڈ فلم ’انجسٹس‘ میں مقبوضہ کشمیر کو متنازع دکھانے پر بھارتی مشتعل

لاس اینجلس (مانیٹرنگ ڈیسک)امریکی فلم پروڈکشن کمپنی ’ڈی سی‘ کی حال ہی میں ریلیز ہونے والی اینیمیٹڈ فلم ’انجسٹس‘ میں مقبوضہ جموں و کشمیر کو ’متنازع علاقہ‘ دکھانے پر بھارت کے شہریوں نے پروڈکشن کمپنی کے بائیکاٹ کی مہم شروع کردی۔’انجسٹس‘ فلم کو 19 اکتوبر کو ریلیز کیا گیا تھا، جس کے ایک منظر میں ’سپر مین‘ اور ’سپر ویمن‘ کو مقبوضہ کشمیر میں جنگی سامان کو تباہ کرتے ہوئے دکھایا گیا ہے، جس پر بھارت کے شہریوں نے برہمی کا اظہار کیا۔مذکورہ منظر کے پس منظر میں چلنے والی آواز میں ’کشمیر‘ سے متعلق ’متنازع علاقے‘ کا لفظ سنا جا سکتا ہے جب کہ منظر کے آخر میں اسرائیل کے جھنڈے کو بھی دکھایا گیا ہے۔مذکورہ منظر میں ’کشمیر‘ کو ’متنازع علاقہ‘ قرار دینے پر بھارتی لوگوں نے فلم پر برہمی کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ ’مقبوضہ کشمیر‘ بھارت کا اٹوٹ انگ ہے اور اینیمیٹڈ فلم عالمی سازش کی کڑی ہے۔کئی لوگوں نے فلم میں مقبوضہ کشمیر کو بھارت کا حصہ قرار نہ دیے جانے پر ڈی سی کامکس اور ڈی سی فلم پروڈکشن ہاؤس کے خلاف ٹوئٹس کرتے ہوئے فلم پروڈکشن کمپنی کے بائیکاٹ کے ہیش ٹیگ بھی استعمال کیے۔ بعض افراد نے یہ دعویٰ بھی کیا کہ مذکورہ منظر میں ’سپر مین اور سپر ویمین‘ کی جانب سے جن جنگی ہتھیاروں اور جہازوں کو تباہ ہوتے ہوئے دکھایا گیا ہے، انہیں بھارتی جنگی سامان قرار دیا گیا، البتہ فلم کے منظر میں بھارت کا لفظ نہیں سنائی دیتا۔مذکورہ منظر میں ہیرو اور ہیروئن کی جانب سے جنگی سامان کو تباہ کیے جانے کے بعد یہ سنائی دیتا ہے کہ انہوں نے ’متنازع علاقہ‘ کشمیر کو ہتھیاروں سے پاک کردیا۔

دل لگی سے مزید