• بانی: میرخلیل الرحمٰن
  • گروپ چیف ایگزیکٹووایڈیٹرانچیف: میر شکیل الرحمٰن
,

آسٹریلیا سے صرف 2010 کا ہی بدلہ نہیں لینا، غم اور بھی ہیں

متحدہ عرب امارات (یو اے ای) میں جاری ٹی ٹوئنٹی ورلڈکپ 2021 کے ناک آؤٹ مرحلے (سیمی فائنل) کی ٹیموں کا فیصلہ ہوگیا، جس میں پاکستان، انگلینڈ، نیوزی لینڈ اور آسٹریلیا نے کوالیفائی کرلیا۔

ایونٹ کا پہلا سیمی فائنل گروپ 1 کی سرفہرست ٹیم انگلینڈ اور گروپ 2 کی دوسرے نمبر کی ٹیم نیوزی لینڈ کے درمیان 10 نومبر کو ابوظبی کے شیخ زید اسٹیڈیم میں کھیلا جائے گا۔ 

دوسرے سیمی فائنل میں گروپ 2 کی ٹاپ ٹیم پاکستان کا مقابلہ گروپ 1 کی دوسرے نمبر کی ٹیم آسٹریلیا سے ہوگا۔ 

یہ پہلا موقع نہیں جب پاکستان اور آسٹریلیا کسی عالمی کپ میں کوارٹر فائنل، سیمی فائنل یا فائنل میں مدِ مقابل آئیں گے۔ 

دونوں ٹیموں کی بڑے اسٹیج میں آمنے سامنے آنے کی کہانی کا آغاز 1987 کے کرکٹ ورلڈکپ سے ہوا تھا اور اس کے بعد پاکستان 1999، 2010 اور 2015 میں مدمقابل آئے جس میں ہر مرتبہ آسٹریلیا کامیاب ٹھہرا۔  


کرکٹ ورلڈکپ 1987


ایشیا میں ہونے والے اس کرکٹ ورلڈکپ کے سیمی فائنل میں پاکستان اور آسٹریلیا کا آمنا سامنا ہوا تھا۔ 

لاہور کے قذافی اسٹیڈیم میں کھیلے جانے والے اس میچ میں آسٹریلیا نے پاکستان کو 18 رنز سے شکست دے کر فائنل کے لیے کوالیفائی کیا تھا۔ 


کرکٹ ورلڈکپ 1999


پاکستانی قوم کے لیے تلخ ترین یادوں میں سے ایک کرکٹ ورلڈکپ 1999 کا فائنل تھا، جہاں پاکستان کو آسٹریلیا نے ہی شکست دے کر دوسری مرتبہ ٹائٹل جیتا تھا۔

اس میچ میں کینگروز نے شاہینز کو آؤٹ کلاس کرتے ہوئے 132 پر آل آؤٹ کردیا تھا اور ہدف صرف 2 وکٹوں کے نقصان پر پورا کرلیا تھا۔ 


ورلڈ ٹی ٹوئنٹی 2010


اس کے 11 سال بعد پاکستان اور آسٹریلیا ورلڈ ٹی ٹوئنٹی 2010 کے سیمی فائنل میں مدِ مقابل ہوئے۔ 

اس میچ میں آسٹریلیا کو آخری اوور میں 18 رنز درکار تھے، جبکہ اُس وقت کے نامور اسپنر سعید اجمل کو مائیکل ہسی نے آخری اوور میں 3 چھکے لگا کر پاکستان کے ہاتھوں سے جیت چھین لی تھی۔


کرکٹ ورلڈکپ 2015 


اس کے بعد پاکستان اور آسٹریلیا 2015 کرکٹ ورلڈکپ کے کوارٹر فائنل میں آمنے سامنے آئے اور یہاں بھی کینگروز فاتح رہے۔ 

پاکستان نے آسٹریلیا کو جیت کے لیے 214 رنز کا ہدف دیا جو اس نے 4 وکٹوں کے نقصان پر پورا کرلیا۔

اس میچ کو فاسٹ بولر وہاب ریاض کے تباہ کن بولنگ اسپیل کی وجہ سے بھی یاد کیا جاتا ہے۔


ٹی ٹوئنٹی ورلڈکپ 2021


ٹی ٹوئنٹی ورلڈکپ 2021 میں دونوں ٹیموں کا پھر سے سیمی فائنل میں مقابلہ ہے جہاں قومی ٹیم کامیابی حاصل کرکے آسٹریلیا کیخلاف اپنی تمام تلخ یادوں کا بدلہ لینے کے لیے پُرعزم ہے۔

واضح رہے کہ قومی ٹیم اس ورلڈکپ میں اب تک ناقابلِ شکست ہے جبکہ آسٹریلیا کو انگلینڈ کے ہاتھوں ہزیمت کا سامنا کرنا پڑا ہے۔

پاکستان کی ٹیم کی موجودہ پرفارمنس کو دیکھتے ہوئے اس میچ میں قومی ٹیم کی فتح کی امید بھی کی جارہی ہے۔

کھیلوں کی خبریں سے مزید
خاص رپورٹ سے مزید