آپ آف لائن ہیں
جنگ ای پیپر
منگل11؍ربیع الاوّل 1440ھ20؍نومبر 2018ء
Namaz Timing
  • بانی: میرخلیل الرحمٰن
  • گروپ چیئرمین و ایگزیکٹوایڈیٹر: میر جاوید رحمٰن
  • گروپ چیف ایگزیکٹووایڈیٹرانچیف: میر شکیل الرحمٰن
س۔محترم عابدی صاحب،میرا بیٹا ایم کام کے آخری سال میں ہے اور اس کو کرنے کے بعد سی اے کرنے کا خواہشمند ہے،برائے کرم یہ بتائیں کہ کیا اس کا یہ فیصلہ صحیح ہے یا اس کو اس کے علاوہ کچھ اور بھی کرنا چاہئے؟ آپ کی قیمتی رائے کا شکرگزار رہوں گا۔ (خالد احمد۔لاہور)
ج۔ایم کام کرنے کے بعد میرا یہی مشورہ ہو گا کہ آپ کامرس اور فنانس کے شعبے میں متعلقہ نوکری تلاش کریں،لیکن اگر آپ نوکری حاصل کرنے میں قاصر ہوں تو کوئی ایسی انٹرنشپ کریں جو آپ کو سی اے کی طرف لے جائے،لیکن آپ کی پہلی ترجیح ایم کام کے فورا بعد نوکری کرنا ہونی چاہئے کسی بھی قسم کا فیصلہ کرنے سے پہلے۔
س۔سر میں نے ماسٹرز ڈپلومیسی اینڈ اسٹریٹیجک اسٹڈیز(انٹرنیشنل ریلیشنز)پنجاب یونیورسٹی سے کیا ہے،کیا میں اب بھی سی ایس ایس کر سکتا ہوں اورمجھے کیریئر کے حوالے سے اور موجودہ مواقع سے آگاہ کریں؟ (اسجد اعوان۔لاہور)
ج۔جن مضامین کا آپ نے انتخاب کیاہے اور جو ڈگری آپ نے حاصل کی ہے یہ سب سی ایس ایس کرنے کے لئے بہترین مجموعہ ہے ،مجھے یقین ہے کہ اب تک آپ سی ایس ایس کے لازمی اور اختیاری دونوں مضامین کے بارے میں معلومات لے چکے ہونگے،اگر آپ تھوڑی سے مزید محنت کریں تو مجھے یقین ہے کہ آپ کامیا ب ہونگے،اس کے بعد آپ سرکار اداروں میں ملازمت حاصل کر سکتے ہیں،مزید

آپ سی ایس ایس کے لئے عمر کی requirement ضرور دیکھ لیں۔
س۔میں نے پری میڈیکل% 85کے ساتھ مکمل کیا ہے اور ایم بی بی ایس کے لئے تمام پبلک سیکٹر میڈیکل کالجوں میںاپلائی کیا ہے ،انٹری ٹیسٹ کی پہلی کوشش میں 1.5% سے میرا داخلہ نہیں ہو سکا،اُس کے بعد 0.6% سے میں ناکامیاب رہی،اب میرے پاس دو آپشنز ہیں یا تو میں بی ایس اپلائیڈ سائنسز کروں یا پھر انٹری ٹیسٹ کی تیسری کوشش کروں،میں نے بہت محنت کی لیکن ناکامیاب رہی ،طالبعلم عموماََ 60%سے پرائیوٹ میڈیکل کالجوں میں داخلہ لے لیتے ہیں لیکن میرے اتنے وسائل نہیں ،برائے کرم مجھے بتائیں کہ میں اب کیا کروں؟ (شازیہ کنول۔پشاور)
ج۔میں آپ کا مسئلہ سمجھتا ہوں لیکن بدقسمتی سے میں آپ کی مدد نہیں کر سکتا،میں اُمید کرتا ہوں کہ حکومت مزید میڈیکل کالج بنائے تاکہ آپ جیسے مارجنل طالبعلموں کو داخلے دیئے جا سکیںتاہم اگرآپ ڈاکٹر نہیں بنتیں توپریشان ہونے کی ضرورت نہیں ہے،بائیو سائنسز ایک وسیع ڈومین ہے اور اگر آپ چار سال کی ڈگری مولیکیولر، بائیولوجی،مائیکروبائیولوجی یا بائیو کیمسٹری میں سے کسی ایک سبجیکٹ ایریا کا انتخاب کرتی ہیں تو آپ ایک میڈیکل سائنٹسٹ بن سکتی ہیں،اس شعبے میں پاکستان اور بیرون ملک بہت سی ا سکالرشپس موجود ہیں۔
س۔میں نے بی ایس سی الیکٹرونکس انجینئرنگ کے بعد ایم ایس ٹیلی کام انجینئرنگ مینجمنٹ کیا ہے میرا 9سال کا ٹیلی کام انڈسٹری کا تجربہ بھی ہے اور اب میں نے ایم بی اے ایگزیکٹیوکیا ہے،میری عمر 39 سال ہے اور میں پی ایچ ڈی کرنا چاہتا ہوں،مجھے آپ کا مشورہ چاہئے کہ کیا پی ایچ ڈی انجینئرنگ مینجمنٹ میرے لئے اچھا انتخاب ہو گا ؟ کیا مجھے ا سکالرشپ مل سکتی ہے ؟ مجھے پی ایچ ڈی پاکستان میں کرنی چاہئے یا میں بیرون ملک کسی یونیورسٹی کا انتخاب کروں؟ (گلزار وسیم۔اسلا م آباد)
ج۔مجھے یہ جان کہ خوشی ہوئی کہ آپ ملٹی کوالیفائیڈ انجینئر اور مینجمنٹ ٹیکنالوجسٹ ہیںلیکن آپ کو پی ایچ ڈی کرنے کے لئے ایک ایسے ٹاپک کا انتخاب کرنا ہو گا جس میں آپ اپنی کوالیفکیشن اور تجربے کو مدِنظر رکھتے ہوئے ایڈوانس ریسرچ کریں،اس وقت میں آپ کو اسکالرشپ کے بارے میں کوئی معلومات نہیں دے سکتا کیونکہ میں نہیں جانتا کہ آپ کے گریڈز یا سی جی پی اے کیا ہے ،اس کے لئے بہتر یہ ہو گا کہ اگر آپ مجھے اپنا ایک سی وی ای میل کر دیں۔

.

Chatاپنی رائے سے آگاہ کریں