آپ آف لائن ہیں
جنگ ای پیپر
بدھ12 ربیع الاوّل 1440ھ 21؍نومبر2018ء
Namaz Timing
  • بانی: میرخلیل الرحمٰن
  • گروپ چیئرمین و ایگزیکٹوایڈیٹر: میر جاوید رحمٰن
  • گروپ چیف ایگزیکٹووایڈیٹرانچیف: میر شکیل الرحمٰن

بینک آف پنجاب کے صدر نعیم الدین خان نے ذاتی وجوہات کی بناء پر عہدے سے استعفیٰ دے دیا، استعفیٰ وزیر اعلیٰ پنجاب کو بھجوایا گیا ہے۔

نعیم الدین خان کی جانب سے بھجوائے گئے استعفے میں بینک کے 10 سالہ اقدامات ، کارکردگی اور بیلنس شیٹ کاتفصیل سے ذکر کیا گیا ہے ۔

میڈیا سے بات کرتے ہوئے نعیم الدین کا کہنا تھا کہ وہ اب مزید اس عہدے پر کام نہیں کرسکتے، 10 سالہ مدت پوری کرچکے، تمام اہداف پورے کر لئے اب کسی نوجوان بینکر کو اس کا سربرا بنانا چاہیے۔

نعیم خان کا کہنا تھا کہ جب چارج لیا تو بینک دیوالیہ ہو چکا تھا،17 ارب روپے سالانہ خسارہ تھا، کرپشن عروج پر تھی تاہم آج جب وہ بینک چھوڑ کر جارہے ہیں تو بینک 12 ارب 50 کروڑ روپے سالانہ منافع دے رہا ہے اور بینک بہترین کامیاب اسٹوری بن چکا ہے۔

انہوں نے مزید بتایا کہ اس عرصے میں 60 ارب روپے ڈیڈ ڈیفالٹرز سے ریکور کئے ان کے کیسز نیب اور عدالتوں میں آخری مراحل میں ہیں ۔

واضح رہے کہ نعیم الدین خان نے ایک ماہ کا نوٹس دیا ہے وہ 9 دسمبر تک عہدے پر رہیں گے ، یہ اسٹیٹ بینک کی پالیسی ہے ،جبکہ دوسری جانب پنجاب حکومت نے نئے صدر کے لئے اشتہار دیدیا ہے ۔

Chatاپنی رائے سے آگاہ کریں