آپ آف لائن ہیں
جنگ ای پیپر
بدھ16؍ صفرالمظفّر 1441ھ 16؍اکتوبر 2019ء
Namaz Timing
  • بانی: میرخلیل الرحمٰن
  • گروپ چیئرمین و ایگزیکٹوایڈیٹر: میر جاوید رحمٰن
  • گروپ چیف ایگزیکٹووایڈیٹرانچیف: میر شکیل الرحمٰن
تازہ ترین
آج کا اخبار
کالمز

امریکی ماہرین نے حال ہی میں دنیا کا سب سے چھوٹا اور ہلکا ترین اُڑن روبوٹ بنایا ہے ،یہ بغیر تار کے خود مختارانداز میں پرواز کرتا ہے ۔اسے ہارورڈ یونیورسٹی میں قائم مائیکرو روبوٹکس تجربہ گاہ کے ماہرین نے تیار کیا ہے ۔اس کا وزن صرف 259 ملی گرام ہے ۔ماہرین کے مطابق ایک مکھی کو دیکھ کر عین اسی طر ح روبوٹ کو ڈیزائن کیا گیا ہے ،جس میں دو پیزو ایکچو ایٹرز نصب کیے گئے ہیں ۔اتنا زیادہ باریک ہونے کے باوجود یہ سورج کی روشنی سے توانائی حاصل کر کے پرواز کرتا ہے ۔اسے ’’روبوبی ‘‘ ایکس کا نام دیا گیا ہے ۔یہ ایک 1 سیکنڈ میں 170 مرتبہ اپنے پر پھڑ پھڑ اتا ہے ۔اس کے پیروں کا گھیر صرف 3.5 سینٹی میٹر اور روبوٹ کیڑے کی اونچائی 6.5 سینٹی میٹر ہے ۔ماہر ین کے مطابق بازوئوں کو کنٹرول کرنے کے لیے ان میں دو عدد ایسی پلیٹیں لگائی گئی ہیںجو پٹھے کا کام کرتی ہیں ۔جب ان پٹھوں میں بجلی دوڑتی ہے تو پلیٹیں پھیلتی اور سکڑتی ہیں ۔ا س روبوٹ مکھی کے اوپر 6 عدد شمسی سیل لگے ہیں جن میں سے ہر ایک کا وزن 10 ملی گرام ہے ۔شمسی سیل پروں کے اوپر لگے ہیں لیکن وہ روبوٹ کی پرواز میں کسی بھی طر ح کا خلل نہیں ڈالتے ، جیسے ہی روبوٹ پر روشنی پڑتی ہے، اس کے پر پھڑپھڑانے لگتے ہیں اور یوں روبوٹ مکھی اُڑنے لگتی ہے ، تاہم اسے تجربہ گاہ میں ایل ای ڈی اور ہیلوجن کے ذریعے ہی اڑایا گیا ہے۔ اس روبوٹ کو فضائی تحقیق، کونے کھدروں میں انسانوں کی تلاش اور دیگر بہت سے کاموں کے لیے بھی استعمال کیا جاسکتا ہے۔ یہاں تک کہ یہ ایک چھوٹے پتے پر بھی اترسکتا ہے۔ اگلے مرحلے میں روبوٹ مکھی کو مزید بہتر بنا کر اسےسورج کی روشنی میں پرواز کے قابل بنایا جائے گا۔

سائنس اینڈ ٹیکنالوجی سے مزید
ٹیکنالوجی سے مزید