آپ آف لائن ہیں
جنگ ای پیپر
بدھ 15؍ربیع الاوّل 1441ھ 13؍نومبر 2019ء
Namaz Timing
  • بانی: میرخلیل الرحمٰن
  • گروپ چیئرمین و ایگزیکٹوایڈیٹر: میر جاوید رحمٰن
  • گروپ چیف ایگزیکٹووایڈیٹرانچیف: میر شکیل الرحمٰن
تازہ ترین
آج کا اخبار
کالمز

کڈنی ہل پارک سے ہل پارک تک چیئر لفٹ لگائیں گے، وسیم اختر

اعجاز احمد/اسٹاف رپورٹر.... میئر کراچی وسیم اختر نے کہا ہے کہ’’ کڈنی ہل پارک سے ہل پارک‘‘ تک’’ چیئر لفٹ نصب‘‘ کی جائے گی جو کراچی کے شہریوں کے لیے بہترین تحفہ ہوگا۔

جو لوگ اسلام آباد یا مری نہیں جا سکتے ان کے لیے اس پارک میں ایسا ہی ماحول مہیا کیا جا رہا ہے جیسا وہاں دستیاب ہے، یہ پارک جلد از جلد شہریوں کے لیے کھول دیا جائے گا۔

وہ منگل کو یہاں احمد علی پارک، کڈنی ہل پر منعقدہ تقریب سے خطاب کررہے تھے۔ اس موقع پر وائس ایڈمرل (ر)عارف اللہ حسینی، میٹروپولیٹن کمشنر ڈاکٹر سید سیف الرحمن، ارکان اسمبلی، ڈسٹرکٹ چیئرمین ، کونسلرز، تاجر اور معززین شہر کی بڑی تعداد موجود تھی۔

میئر کراچی وسیم اختر نے کہا کہ اس پارک کے کام میں کے ایم سی کی بڑی محنت ہے، ہمیں تجاوزات بھرا شہر ملا، اسی طرح احمد علی پارک میں بھی 30 فیصد تجاوزات تھیں، جنہیں صاف کر دیا گیا ہے اور اب اس پر سٹی پارک کی تعمیر کا کام شروع کر دیا گیا ہے۔

بلدیہ عظمیٰ کراچی شہریوں کے لیے کراچی میں جنگل تیار کر رہی ہے، یہ منفرد پارک ہوگا جو اس سے قبل تعمیر نہیں ہوا، جو لوگ اسلام آباد یا مری نہیں جاسکیں گے انہیں اسی شہر میں یہ ماحول میسر آئے گا، تاکہ گرمیوں کے موسم میں انہیں اپنے شہر میں فاریسٹ ملے۔

پرائیویٹ سیکٹر کے تعاون سے کڈنی ہل پارک سے ہل پارک تک چیئر لفٹ نصب کرنے کا منصوبہ ہے، یہ کراچی والوں کے لیے بلدیہ عظمیٰ کی جانب سے ایک خوبصورت تحفہ ہوگا۔

اس موقع پر وائس ایڈمرل (ر) عارف اللہ نے کہا کہ میں اس کام کا چشم دید گواہ ہوں، کے ایم سی نے کڈنی ہل پارک کے مشکل منصوبے پر کام کیا، جس پر عوام کو بلدیہ عظمیٰ کراچی کو خراج تحسین پیش کرنا چاہیے۔

سرمایہ دار اور درخت لگانے کے شوقین یہاں درخت لگائیں اور واک بھی کریں، کے ایم سی یہاں پہلے ہی 5 ہزار درخت لگا چکی، تاہم مزید درختوں کی ضرورت ہے، ہم زیاد سے زیادہ شجر کاری کے ذریعے کراچی اور ملک کی خدمت کر سکتے ہیں۔

میٹروپولیٹن کمشنر ڈاکٹر سید سیف الرحمن نے کہا کہ اس پارک کو 1974 میں کے ڈی اے نے کے ایم سی کے حوالے کیا تھا، احمد علی کے ڈی اے کے بہت بڑے ٹاؤن پلانر تھے، یہ پارک ان کے نام سے منسوب کیا گیا ہے۔

یہاں ہوٹل اور جانوروں کے باڑے قائم تھے، ملبے کے ڈھیر اور اسپتالوں کا کچرا موجود تھا، ان سب چیزوں کو تجاوزات سمیت صاف کرکے یہاجدید سٹی فاریسٹ تعمیر کیا جارہا ہے جس کے لیے خصوصی طور پر 5 ہزار سے زائد درخت لگائے گئے ہیں تاکہ یہاں ہرے بھرے ماحول اور سبزے سے لوگ محظوظ ہوسکیں۔

قومی خبریں سے مزید