آپ آف لائن ہیں
بدھ9؍ربیع الثانی 1442ھ25؍نومبر 2020ء
  • بانی: میرخلیل الرحمٰن
  • گروپ چیئرمین و ایگزیکٹوایڈیٹر: میر جاوید رحمٰن
  • گروپ چیف ایگزیکٹووایڈیٹرانچیف: میر شکیل الرحمٰن
Jang Group

اسپیکر پنجاب اسمبلی چودھری پرویزالہیٰ کی زیرصدارت اجلاس

اسپیکر پنجاب اسمبلی چودھری پرویزالہیٰ کی زیرصدارت اجلاس


اسپیکر پنجاب اسمبلی چوہدری پرویز الہٰی کی زیرِ صدارت اجلاس میں 18 کھرب 38 ارب سے زائد مالیت کے 41 مطالبات زر منظور کرلیے گئے۔

اسپیکر پنجاب اسمبلی چوہدری پرویز الٰہی کی زیرِ صدارت اجلاس کے دوران اپوزیشن کی کٹوتی کی تحاریک کو ایوان نے کثرت رائے سے مسترد کردیا۔

پنجاب اسمبلی کا اجلاس ایک گھنٹہ 23 منٹ تاخیر سے شروع ہوا۔ کٹوتی کی تحریک پر خواجہ سلمان رفیق نے کہا بجٹ میں ن لیگ دور کی اسکیموں کو نظر انداز کرنا عوام سے زیادتی ہے۔

پیپلزپارٹی کے حسن مرتضیٰ نے کہا سانحہ ساہیوال کے خون کس کے ہاتھ تلاش کروں! ایوان میں حکومتی ارکان نے شور شرابہ کیا، جس پر حسن مرتضی نے ایوان کو پولٹری فارم قرار دے دیا۔

وزیر قانون راجہ بشارت کا کہنا تھا کہ ہماری حکومت نے ایف آئی آر کا اندراج آسان بنا دیا ہے۔

وزیر تعلیم مراد راس نے کہا ن لیگ نے تین سال میں پانچ اسکول بنائے، ہم 90 دن میں 100 اسکول بنا رہے ہیں۔

اجلاس میں وزیرِ اعلیٰ پنجاب سردارعثمان بزدار، اپوزیشن لیڈر حمزہ شہباز شریف سمیت دیگر ارکان نے بھی اپنی رائے کا اظہار کیا۔

پنجاب اسمبلی مطالبات زر کی منظوری سے بجٹ پاس کرنے کا پہلا مرحلہ مکمل ہوگیا۔ ایوان نے 19 کھرب 84 کروڑ 90 لاکھ روپے کے حکومتی 41 مطالبات زر کثرت رائے سے منظور کر لیے۔

ایجنڈا مکمل ہونے پر اجلاس جمعہ کی دوپہر دو بجے تک ملتوی کر دیا گیا۔

قومی خبریں سے مزید