آپ آف لائن ہیں
ہفتہ12؍ربیع الثانی 1442ھ 28؍نومبر 2020ء
  • بانی: میرخلیل الرحمٰن
  • گروپ چیئرمین و ایگزیکٹوایڈیٹر: میر جاوید رحمٰن
  • گروپ چیف ایگزیکٹووایڈیٹرانچیف: میر شکیل الرحمٰن
Jang Group

قبائلی اضلاع میں افیون سے ادویات بنانے کے کارخانے لگانے کی تجویز واپس

پشاور(گوہرعلی خان، نامہ نگار) وفاقی حکومت نے خیبرپختونخوا حکومت کی تجویز پر صوبے میں افیون پیدا کرنے والے ضم شدہ قبائلی اضلاع میں’’افیون سے ادویات‘‘ بنانے کے کارخانے لگانے کی تجویز واپس لے کر صوبائی حکومت کو ان علاقوں میں انسداد منشیات مہم سے متاثرہ افراد کی بحالی کےلئے چھوٹے اور درمیانی درجے کی صنعتوں پر مشتمل سپیشل اکنامک زون کے قیام سمیت مختلف متبادل منصوبے تیار کرنے کی ہدایت کی ہے۔

صوبائی حکومت نے افیون سے ادویات کی تیاری کے کارخانے لگانے کے حوالے سے موقف اختیار کیا کہ ان علاقوں میں افیون کی کاشت کی اجازت دینے سے منشیات کے استعمال میں اضافہ ہوسکتا ہے، اس بات کا فیصلہ انٹی سمگلنگ کے لئے قائم ٹاسک فورس کے حالیہ اجلاس میں ہوا ہے.

اجلاس میں ہونےوالے فیصلوں کی روشنی میں وفاقی وزارت کامرس کی جانب سے چیف سیکرٹری خیبرپختونخوا کے نام ارسال کئے جانے والے مراسلے میں کہا گیا ہےکہ وزیر اعظم کے احکامات پر صوبے کے سرحدی علاقوں میں رہائش پذیر افراد جو انسداد منشات سے متاثرہوئے اور ان کی روزمرہ زندگی سمگلنگ سے وابستہ تھی کی بحالی کےکیلئے دیگر سفارشات کے علاوہ ان میں یہ سفارش بھی شامل تھی کہ ان افیون پیداکرنے والے علاقوں میں ادویات کی تیاری کے کارخانہ لگائے جائیں۔

اہم خبریں سے مزید