• بانی: میرخلیل الرحمٰن
  • گروپ چیف ایگزیکٹووایڈیٹرانچیف: میر شکیل الرحمٰن

ملک میں کورونا وائرس کے کُل 58 ہزار 500 مریض زیرِ علاج



پاکستان میں کورونا وائرس کی تیسری لہر جاری ہے، کورونا مریضوں کی تعداد کے حوالے سے مرتب کی گئی فہرست میں پاکستان 31 ویں نمبر پر ہے۔

نیشنل کمانڈ اینڈ کنٹرول سینٹر (این سی او سی) کے اعداد و شمار کے مطابق پاکستان میں گزشتہ 24 گھنٹوں کے دوران کورونا وائرس کے مزید 4 ہزار 723 کیسز سامنے آئے ہیں، مزید 84 افراد اس موذی وباء کے سامنے زندگی کی بازی ہار گئے، اس بیماری سے 2 ہزار 486 مریض شفایاب ہو گئے، جبکہ مثبت کیسز آنے کی شرح بڑھ کر 9 اعشاریہ 41 فیصد ہو گئی۔

ملک بھر میں کورونا وائرس سے انتقال کرنے والوں کی مجموعی تعداد 14 ہزار 697 ہو گئی ہے، جبکہ کُل مریضوں کی تعداد 6 لاکھ 82 ہزار 888 ہو چکی ہے۔

24 گھنٹوں میں کورونا وائرس کے مزید 50 ہزار 186 ٹیسٹ کیئے گئے، جبکہ اب تک کُل 1 کروڑ 3 لاکھ 47 ہزار 730 کورونا ٹیسٹ کیئے جا چکے ہیں۔

ملک بھر میں اسپتالوں، قرنطینہ سینٹرز اور گھروں میں کورونا وائرس کے کُل 58 ہزار 500 مریض زیرِ علاج ہیں، جن میں سے 3 ہزار 490 مریضوں کی حالت تشویش ناک ہے، جبکہ 6 لاکھ 9 ہزار 691 مریض اب تک اس بیماری سے شفایاب ہو چکے ہیں۔

سندھ میں کورونا وائرس کے مریضوں کی تعداد دوسرے صوبوں سے زیادہ 2 لاکھ 66 ہزار 173 ہو چکی ہے، جبکہ کُل اموات 4 ہزار 506 ہو گئیں۔

تیسری لہر کے دوران پنجاب میں کورونا وائرس کے کیسز میں تیزی سے اضافہ جاری ہے، جہاں اب تک 2 لاکھ 28 ہزار 356 مریض سامنے آئے ہیں، جبکہ یہاں کُل ہلاکتیں دیگر صوبوں سے زیادہ ہیں جو 6 ہزار 523 ہو گئیں۔

خیبر پختون خوا میں کورونا وائرس کے مریضوں کی تعداد 90 ہزار 262 ہو چکی ہے، جبکہ اس سے کُل اموات 2 ہزار 417 ہو گئیں۔


وفاقی دارالحکومت اسلام آباد میں 60 ہزار 197 کورونا وائرس سے متاثرہ مریض اب تک سامنے آئے ہیں، جبکہ اب تک یہاں کُل 574 افراد اس وباء سے جان کی بازی ہار چکے ہیں۔

کورونا وائرس کے بلوچستان میں 19 ہزار 679 مریض اب تک رپورٹ ہوئے ہیں جہاں 211 افراد اس مرض سے انتقال کر چکے ہیں۔

آزاد جموں و کشمیر میں کورونا وائرس کے اب تک 13 ہزار 176 مریض رپورٹ ہوئے ہیں، جبکہ اس کے باعث اب تک یہاں کُل 363 مریض وفات پا چکے ہیں۔

گِلگت بلتستان میں 5 ہزار 45 کورونا وائرس کے مریض سامنے آئے ہیں جبکہ اس سے اب تک 103 افراد جاں بحق ہوئے ہیں۔

قومی خبریں سے مزید