• بانی: میرخلیل الرحمٰن
  • گروپ چیف ایگزیکٹووایڈیٹرانچیف: میر شکیل الرحمٰن

جب عمران خان کا فون ہیک ہوا نواز شریف کی حکومت تھی، فرخ حبیب


وزیر مملکت برائے اطلاعات و نشریات فرخ حبیب کا کہنا ہے کہ جب عمران خان کا موبائل فون ہیک کیا گیا تھا اس وقت سابق وزیراعظم نواز شریف کی حکومت تھی۔

سرکٹ ہاؤس میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے فرخ حبیب کا کہنا تھا کہ سوال اٹھ رہے ہیں عمران خان کا فون کو ہیک کیا گیا۔

انھوں نے کہا کہ نریندر مودی کا نیٹ ورک جو سامنے آیا، اس میں نواز شریف کا نام کیوں آرہا ہے؟

فرخ حبیب کا کہنا تھا کہ ججوں کے فون ٹیپ کروانا ان کی تاریخ رہی ہے۔

وزیر مملکت نے کہا کہ مودی کی نواز شریف سے دوستی تھی، جب عمران خان کا فون ہیک کیا گیا تو اس وقت ملک میں نواز شریف کی حکومت تھی۔

انھوں نے یہ بھی کہا کہ نواز شریف نریندر مودی کی حلف برداری کی تقریب میں گئے، حریت رہنماؤں سے نہیں ملے۔

فرخ حبیب کا کہنا تھا کہ مودی اپوزیشن کی فون ہیک کر رہے تھے، سوال یہ ہے کہ عمران خان کا فون کیوں ہیک کیا جارہا تھا؟۔

انھوں نے کہا کہ مودی سرکار نے اسرائیلی سافٹ ویئر کےذریعے فون ہیک کیے۔

وزیر مملکت کا کہنا تھا کہ کشمیر میں انتخابی مہم چلانے والے مودی کے مظالم کا ذکر کیوں نہیں کرتے، نواز شریف نے مزید کس کس مقصد کے لیے مودی کی مدد حاصل کی ہوگی؟ ان معاملات پر انہیں خاموشی اختیار کرنے نہیں دیں گے، ان سے جواب درکار ہیں۔ 

اسلام آباد میں افغان سفیر کی بیٹی کے اغوا سے متعلق بات کرتے ہوئے فرخ حبیب کا کہنا تھا کہ افغان سفیر کی بیٹی کے معاملے پر تحقیقات جاری ہیں، افغان سفیر کی بیٹی کے معاملےمیں مریم صفدر نے جلتی پر تیل کا کام کیا ہے۔ 

انھوں نے کہا کہ مریم صفدر کو مشورہ ہے کہ وہ اپنے قد سے اونچی بات مت کریں۔

قومی خبریں سے مزید