• بانی: میرخلیل الرحمٰن
  • گروپ چیف ایگزیکٹووایڈیٹرانچیف: میر شکیل الرحمٰن

براڈ شیٹ اسکینڈل، نیب کو ایک اور جھٹکا، 13 اگست تک 20 کروڑ ادا کئے جائیں، برطانوی ہائیکورٹ

لندن (مرتضیٰ علی شاہ) نیب کوایک اور جھٹکا لگ گیا ہے ،لندن ہائیکورٹ نے نیب کو حکم دیا ہے کہ وہ 13 اگست تک براڈشیٹ کو 3مختلف مدات میں مجموعی طورپر 920,000پونڈ (تقریبا ً 20 کروڑ 88لاکھ پاکستانی روپے ) ادا کرے ورنہ یونائیٹڈ نیشنل بینک کو 17 اگست یہ رقم براڈ شیٹ کو اداکرنے پر مجبور کیا جائے گا۔ تاہم عدالت نے براڈ شیٹ کی جانب سے 33,646 پونڈ (76لاکھ 38ہزار روپے ) سود کی ادائیگی کا دعویٰ مسترد کردیا۔ حکومت پاکستان اور نیب کے خلاف نیب کے دعوے کی سماعت کے بعد ماسٹر ڈویژن نے نیب کو 3 مختلف مدات میں 892,521.50 پونڈ 110 پونڈ اور اضافی اخراجات کی مد میں 26,296.80 پونڈ براڈ شیٹ کو ادا کرنے کاحکم دیا۔ ماسٹر ڈویژن نے حکم دیا کہ نیب یہ فنڈز 10 اگست تک اپنے وکلا ایلن اور اووری کے اکائونٹ منتقل کرے اور پھر 13 اگست تک رقم براڈ شیٹ کو منتقل کردی جائے۔ حکم میں کہا گیا ہے کہ اس میں سے اگر کوئی بھی رقم مقررہ وقت کے اندر ادا نہیں کی گئی تو پھر عبوری حکم حتمی بن جائے گا اور یونائیٹڈ نیشنل بینک یہ رقم17 اگست کے اندر براڈشیٹ کو منتقل کرنے کا پابند ہوگا۔ براڈشیٹ کے وکلاء نے عدالت سے 33,646.84 سود کی ادائیگی کیلئے بھی رجوع کیا تھا لیکن عدالت نے اسے مسترد کردیا، تاہم عدالت نے براڈ شیٹ کو VAT سمیت 26,296.80 پونڈ اضافی اخراجات کے طورپر ادا کرنے کا حکم دیا۔ سماعت کے دوران نیب کے وکلا نے یہ موقف اختیار کرنے کی کوشش کی یہ درخواست قبل از وقت دائر کی گئ ہے لیکن ماسٹر ڈویژن نے اس دلیل کو رد کردیا اور نیب اور اس کے وکلا پر مقدمے کی مناسب طورپر پیروی نہ کرنے پر برہمی کا اظہار کیا۔ حکومت پاکستان کے وکلاء نے براڈ شیٹ اور اس کے سی ای او کاوے موسوی کو بتایا تھا کہ وہ 1,222,037.90 ڈالر اور 110 GBP ادا کرنے کو تیار ہیں لیکن سود کی مد میں33,646.84 پونڈ اور اخراجات کی مد میں 35,000 ہزار پونڈ ادا نہیں کریں گے، کئی ماہ کی تاخیر کے بعد حکومت پاکستان کے وکلا نے عدالت میں مقدمے کی سماعت سے قبل گزشتہ ہفتہ بتایا تھا کہ انھیں نیب کی جانب سے 1,222,037.90 ڈالر ادا کرنے کی منظوری مل گئی ہے لیکن بات چیت اور منظوری اور دیگر رقم کے مطالبے پر فیصلہ کرنے میں تاخیر ہوئی۔

اہم خبریں سے مزید