• بانی: میرخلیل الرحمٰن
  • گروپ چیف ایگزیکٹووایڈیٹرانچیف: میر شکیل الرحمٰن

آپ کے مسائل اور اُن کا حل

سوال:۔ ہم نے ایک گھر خریدا ہے، لیکن ابھی وہاں کچھ مرمت کا کام چل رہا ہے، جس گھر میں ہم ابھی رہ رہے ہیں یہ گھر ہم نے بیچ دیا ہے، ہم چند دن بعد نئے گھر میں شفٹ ہوں گے، اور اس وقت صفرکا مہینہ شروع ہوجائے گا، میری والدہ مجھے شفٹ ہونے سے منع کررہی ہیں، وہ کہتی ہیں کہ صفر کے مہینے میں نئے گھر میں شفٹ نہ ہوں، بلکہ صفرکے مہینے کے ختم ہونے کے بعد شفٹ ہوں گے، اسی طرح میرے بعض دوستوں کا بھی کہنا ہے کہ اگر آپ صفر کے مہینے میں نئے گھر میں چلے گئے تو زندگی بھر آپ کو پریشانیوں کا سامنا کرنا پڑے گا۔ اس صورت میں مجھے کیا کرنا چاہیے؟

جواب:۔ اسلام میں کوئی مہینہ منحوس نہیں، زمانۂ جاہلیت میں لوگ ماہ صفر کو منحوس سمجھتے تھے، نبی کریم ﷺنے ان خیالات کی سخت تردید فرمائی ہے۔ ماہ صفر میں کوئی نحوست نہیں ہے ۔اس مہینے میں سفرکرنا، شادی کرنا اور نئے گھر میں منتقل ہوناجائز ہے، اس سے کوئی نحوست یا پریشانی لاحق نہیں ہوتی۔ (مرقاۃ المفاتیح شرح مشکاۃ المصابیح،کتاب الطب والرقی، 8/394،ط:عثمانیہ کوئٹہ)

اپنے دینی اور شرعی مسائل کے حل کے لیے ای میل کریں۔

masail@janggroup.com.pk