Advertisement

انسولیشن سسٹم کے فائدے اور نقصانات

July 28, 2019
 

گھر میں سردی اور گرمی کو کنڑول میں رکھنے کیلئے انسولیشن بہت اہم ہے بلکہ درست انسولیشن آپ کوشدید گرم و سرد موسموں میں بہت سے خرچوں سے بھی محفوظ رکھ سکتی ہے۔ اگر ہم انسولیشن کے حوالے سے اعدادوشمار پر نظر ڈالیں تو وہ کچھ اس طرح ہے:

■ اوسط لحاظ سے ،ایک گھر کو گرم یا ٹھنڈا رکھنے کے میں سالانہ یوٹیلیٹی بلز کا 54فیصدخرچ ہوتا ہے ۔

■دیواروں کی انسولیشن گرمی یاسردی کو کم کرنے میں76فیصد جبکہ چھت کی انسولیشن گرمی و سردی کیلئے کیےجانے والے اخراجات میں 40فیصد تک کمی لاسکتی ہے۔

■اگر آپ کی چھت انسولیشن والی نہیں ہے تو اسے ٹھنڈا رکھنے کے سلسلے میں کیے جانے والے اخراجات 10فیصد بڑھ جاتے ہیں ۔

ث بیسمنٹ کی دیواروں یا سلیب سے بنی بنیادوں کی انسولیشن کی وجہ سے گرمی کم کرنے کی لاگت میں 10فیصدسے 20 فیصد تک کمی آسکتی ہے۔

گھر کیسے گرم ہوتا ہے؟

■ 26فیصدگرمی چھت کے ذریعے آتی ہے ۔

■ 33فیصدگرمی دیواروں کے ذریعے آتی ہے۔

■ 8فیصدگرمی فرش سے ہوتی ہے۔

■3فیصدگرمی دروازے کے سوراخوں سے آتی ہے۔

■ 18فیصدگرمی کھڑکیوں کے رخنوں سے آتی ہے۔

■12فیصدگرمی روشن دانوں وغیرہ سے در آتی ہے۔

انسولیشن کی اقسام

انسولیشن کی چار اقسام عام ہیں، جو آپ کے گھر میں گرمی کی شدت میں کمی یا زیادتی لاسکتی ہیں، جس کا انحصار گھر سے باہر کے موسم پر ہوتا ہے۔

اسپرے فوم انسولیشن

اس قسم کی انسولیشن اسپرے ہولڈ ر کی مدد سے کی جاتی ہے، جس کے لیے گھرکے مخصوص مقامات پر کنٹینرز استعمال ہوتے ہیں۔ اس قسم کی انسولیشن کیلئے بہترین جگہیں نئی دیواروں کے خلا، غیر مکمل چھت یا موجودہ دیواریں ہوتی ہیں۔ اگرچہ فوم اسپرے ہولڈر سے کیا جاتا ہے لیکن یہ بہت بڑی مقدار میں foamed-in-place طریقے سے بھی لگایا جاسکتا ہے۔

یہ ذہن میں رکھنا ضروری ہے کہ فوم انسولیشن قدرے مہنگی ہوتی ہے۔ مزید یہ کہ اس سے بہت گندگی بھی ہو جاتی ہے۔ یہ چونکہ کیمیکلز سے بنا ہوتاہے، اس لئے اس کے استعمال کے دوران سانس کے مریض کو مشکلات پیش آسکتی ہیں۔ اس لیے مشورہ دیا جاتاہے کہ اس کام کے لیے تجربہ کار ماہرین کی خدمات حاصل کی جائیں تاکہ ہر جگہ پر فوم برابر کی سطح پر لگایا جاسکے۔

فائبر گلاس انسولیشن

انسولیشن کی یہ سب سے عام قسم ہے، جو رخنوں یا خالی جگہوں میں لگائی جاتی ہے۔ اس کی سب سے بڑی خاصیت یہ ہے کہ نہ صرف سستی ہوتی ہےبلکہ گھروں کیلئے سب سے آسان انسولیشن ہے، جس سےگھر بھی متاثرنہیں ہوتا۔ ایک اور فائدہ یہ بھی ہے کہ ا س میں آگ نہیں لگتی اور آپ کا گھر محفوظ رہتاہے۔ یہی وجہ ہے کہ زیادہ تر لوگ فائبر گلاس انسولیشن کو ترجیح دیتے ہیں۔ یہ انسولیشن شہتیروں، بیمز اور کھمبو ں کے درمیان لگائی جاتی ہے، تاہم اس کی تنصیب کے وقت خیال رکھنے کی ضرورت ہوتی ہے کیونکہ اس کے لگانے کے دوران آپ کے پھیپھڑے یا جِلد متاثر ہو سکتی ہے۔ اسی لئے جب انسولیشن لگائی جارہی ہوتو آپ کو اس سے دور رہنا چاہئے۔ فائبر گلاس وقت کے ساتھ ساتھ جھڑتا رہتاہے، اس لیے اسے گاہے بگاہے دوبارہ لگانا پڑتاہے۔

منرل وول انسولیشن

منرل وول انسولیشن (Mineral wool insulation) کو روک وول انسولیشن (Rock wool insulation)بھی کہتے ہیں۔ یہ بھی فائبر گلاس کی طرح ہوتی ہےا ور لگانے میں آسان ہے۔ یہ تھیلوں میں آتی ہے اور انہی کے ذریعے مخصوص جگہوں پر براہ راست انڈیل دی جاتی ہے۔ یہ انسولیشن بلند درجہ حرارت کو بھی برداشت کرلیتی ہے یہاں تک کہ انسولیشن کی دیگر اقسام کے مقابلے میں ایک ہزار ڈگری کے درجہ حرارت کو بھی برداشت کرلیتی ہے۔ ا س مٹیریل سے انسولیشن کےبعد گھر بھی سائونڈ پروف ہوجاتاہے۔ یہ فائبر گلاس کے مقابلے میں قدرے مہنگی ہوتی ہے اور مارکیٹ میں بآسانی دستیاب بھی نہیں ہوتی۔ اس کو لگانے کے دوران حفاظتی اقدامات کرنے ضروری ہوتے ہیں، ورنہ اس کے ذرات آپ کے پھیپھڑوں کو نقصان پہنچا سکتے ہیں۔

سیلولوز انسولیشن

اگر آپ اپنے گھر کی انسولیشن کیلئے اورگینک طریقہ ڈھونڈ رہے ہیں تو سیلولوز انسولیشن (Cellulose insulation)آپ کیلئے بہترین انتخاب ہے۔ اس قسم کی انسولیشن زیادہ تر ری سائیکل کیے گئے کاغذوں، خاص طورپر اخبارات اور کبھی کبھار کارڈبورڈ اور دیگر اقسام کے کاغذوں سے کی جاتی ہے۔ اس کے بعد یہ مٹیریل کیمیکلزکے ذریعے انسولیشن میں ڈھالا جاتاہے۔ یہ انسولیشن گھر کو نمی، گرمی اور کیڑے مکوڑوں سے محفوظ رکھتی ہے۔ یہ بات یاد رکھنے کی ہے کہ نمی کو جذب کرنے کی وجہ سے سیلولوز انسولیشن وقت کے ساتھ ساتھ خراب ہونے لگتی ہے۔ اسی لیے ماہرین مشورہ دیتے ہیں کہ یہ انسولیشن ہر 5سال بعد دوبارہ کروانی چاہئے۔ مزید یہ کہ سیلولوز انسولیشن روایتی فائبر گلاس انسولیشن کے مقابلے میں زیادہ مہنگی ہےاور ا س کی انسٹالیشن کے وقت بہت زیادہ دھول اُڑتی ہے۔ یہ انسولیشن خشک ہو یا گیلی، اس کی انسٹالیشن کے وقت آپ کو ناک منہ ڈھانپ لینا چاہیے۔

بہتر انسولیشن مٹیریل جانے کا فارمولہ

بہترین انسولیشن کی پیمائش معلوم کرنے کیلئے R-value کے فارمولے پر عمل کیا جاتاہے۔ آر ویلیو کی بنیاد پر یہ پتہ لگایا جاتا ہے کہ مٹیریل کس قدر گرمی کو جذب یا نکالنے کی صلاحیت رکھتاہے۔ جس مٹیریل کی آر ویلیو جتنی زیادہ ہوگی، وہ انسولیشن کے لئے اتنا ہی بہتر ہوگا جیسےکہ Polyisocyanurate کی آرویلیو7.2ہے اور رجڈ فائبر گلاس کی 4، تو پہلے والا زیادہ بہتر ہے۔

گرمی میں کمی کے مزید مشورے

■ کھڑکیوں پر بھاری پردے لگائیں، جو باہر کی تپش کو اندر نہ آنے دیں یا اندر کی کولنگ کو باہر نہ جانے دیں ۔

■گھر میں اور خاص طور پر کچن میں عمدہ کوالٹی کے ایگزاہسٹ فین لگائیں، جو تپش کو باہر پھینکتے ہوئے آپ کے انسولیشن سسٹم کی مدد کریں۔

■ دروازوں کے رخنوں یا سوراخوں کو بند کریں، اسی طرح دیکھیں کہ کھڑکیوں کے کناروں سے کہیں گرم ہوا تو اندر نہیں آرہی۔


مکمل خبر پڑھیں