Advertisement

بوجھو تو جانیں...!

August 30, 2019
 

سِل ٹوٹے سل بٹا ٹوٹے

وہ چیز کبھی نہ ٹوٹے

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

تاروں کا جال بچھائے

تاروں کا محل بنائے

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

اپنا کوئی گھر نہیں

ہر گھر لیکن اس کا ہے

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

یہ دنیا فانی ہے

پتھر میں پانی ہے

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

آس کٹ کر پاس کٹ کر بیچ میں کھجور

تم پانچوں یہیں سے لوٹو ہم جاتے ہیں دور

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

تجھے آئے مجھے آئے

جیسے نہ آئے اسے مرغا بنائے

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

تھال میں بیٹھا ایک الو

بھر بھر پیتا جائے چلو

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

پہلیوں کے جوابات:

سایہ، مکڑی، پیسہ، برف ، لقمہ، سبق، چراغ


مکمل خبر پڑھیں