• بانی: میرخلیل الرحمٰن
  • گروپ چیف ایگزیکٹووایڈیٹرانچیف: میر شکیل الرحمٰن

پاکستان کیلئے سعودی امداد کے اعلان سے سونا اور ڈالر سستا، IMF معاہدے سے معیشت مزید بہتر ہوگی، شوکت ترین


کراچی( اسٹاف رپورٹر، این این آئی ) پاکستان کیلئے سعودی عرب سے اربوں ڈالر ملنے والی امداد اور آئی ایم ایف کے ساتھ ممکنہ طورپر مذاکرات کامیاب ہونے کی اطلاعات کے بعد ملک بھر میں امریکی ڈالر کے مقابلے میں روپے کی قدر بحال ہونے لگی، انٹر بینک میں ڈالر 2روپے اور اوپن مارکیٹ میں 1.70روپے سستا ہو گیا۔

ڈالر175.20روپے سے کم ہو کر 173.20 روپے اور قیمت فروخت 175.30 روپے سے کم ہو کر 173.40روپے ہو گئی ، دوسری جانب عالمی مارکیٹ میں سونے کی قیمت میں 15ڈالر فی اونس کمی کے بعد فی تولہ سونے کی قیمت 7ہزار 800 روپےکمی کے بعد ایک لاکھ 24 ہزار 200 روپے ہوگئی۔

وزیراعظم کے مشیر برائے خزانہ شوکت ترین اور وفاقی وزیر توانائی حماد اظہر نے کہا ہے کہ سعودی عرب نے پاکستان کو 1.2 ارب ڈالر سالانہ کی پٹرولیم مصنوعات موخر ادائیگیوں پر دینے اوراسٹیٹ بینک میں 3 ارب ڈالر جمع کرانے کااعلان کیا ہے، پاکستان کے لئے مجموعی سالانہ پیکج 4.2 ارب ڈالر کاہوگا، آئی ایم ایف کے ساتھ معاملات جلد طے پا جائیں گے۔

شوکت ترین نے کہا کہ آئی ایم ایف کے ساتھ تقریباً تمام معاملات طے ہو چکے ہیں جس کے مارکیٹ پر مثبت اثرات مرتب ہوں گے۔تفصیلات کے مطابق سعودی عرب پیکج کے مثبت اثرات مرتب ہوئے ہیں۔

فاریکس ایسوسی ایشن کی جاری کردہ رپورٹ کے مطابق بدھ کو مشیر خزانہ کی جانب سے سعودی عرب کے4.2 ارب ڈالر کے پیکچ اعلان کی وجہ سےکرنسی مارکیٹ میں روپے پر دباو میں نمایاں کمی دیکھنے میں آئی اور ایک موقع پر ڈالر کی قیمت 2.50 روپے تک کم ہو گئی تاہم اختتام پر انٹر بینک میں ڈالر کی قیمت خرید 2 روپے کی کمی سے 175.20 روپے سے کم ہو کر 173.20 روپے اور قیمت فروخت 175.30 روپے سے کم ہو کر 173.40 روپے ہو گئی ہے۔

مشیر خزانہ شوکت ترین اور وفاقی وزیر توانائی حماد اظہر نے بتایا کہ رواں مالی سال کے پہلے تین ماہ میں ریونیو وصولی ہدف سے 175 ارب روپے سے زیادہ رہی ہے ، دنیابھر میں پٹرولیم مصنوعات کی قیمتیں پاکستان میں سب سے کم ہیں، 2019 سے آج تک گیس کی قیمتوں میں اضافہ نہیں کیاگیا، یوریا کھاد بھی دنیا کے مقابلہ میں سستی مل رہی ہے۔

اگست 2020 سے اب تک تیل کی قیمتیں کم رکھنے کے لئے ٹیکسوں میں 450 ارب روپے کی چھوٹ دی جاچکی ہے، ایف اے ٹی ایف کے 27 میں سے 26 نکات پر پیشرفت مکمل ہو گئی ہے۔

منی لانڈرنگ کے حوالے سے نکات پر بھی فروری تک عملدرآمد ہو جائے گا، اگلے 6 ماہ میں عالمی منڈی میں اشیائے خوردنی اور توانائی کے نرخوں میں کمی کاامکان ہے، اس کے مثبت اثرات پاکستان میں بھی قیمتوں پر پڑیں گے۔ 

مشیر خزانہ نے کہا کہ سعودی عرب پاکستان کو ریفائنڈ پٹرولیم مصنوعات کی صورت میں 1.2 ارب ڈالر کی معاونت فراہم کرے گا اور اس کامطلب یہ ہو گا کہ ہمیں ماہانہ 100 ملین ڈالر کی معاونت ملے گی۔ 

ہم 150 ملین ڈالر کی توقع کر رہے تھے لیکن سعودی عرب نے اس کی ایڈجسٹمنٹ اس طرح کی ہے کہ 3 ارب ڈالر سٹیٹ بینک میں جمع کرائے ہیں اور اس طرح مجموعی سالانہ پیکج 4.2 ارب ڈالر کا ہو جائے گا۔ 

سعودی ولی عہد نے کہا کہ پاکستان اور وزیراعظم عمران خان کی ان کی نظر میں خصوصی اہمیت ہے۔ سعودی وزیر خزانہ نے فون کر کے بتایا کہ وہ پاکستان کے لئےفنڈز جاری کر رہے ہیں۔ 

شوکت ترین نے کہا کہ تیل مصنوعات کی قیمتوں میں عالمی اضافے کی صورتحال میں بھی عوام کو ریلیف دینے کی کوشش کررہے ہیں۔ ماضی کی نسبت پٹرولیم لیوی کے حوالے سے اگر ہم دیکھیں تو اس وقت قیمتوں میں بہت زیادہ فرق ہے اور پاکستان میں قیمتیں کم ہیں۔

آئی ایم ایف کا خیال ہے کہ پرائمری خسارہ کو توازن میں رکھا جائے ، ہم نے انہیں بتایا کہ ہمارے رواں مالی سال کے پہلے تین ماہ کےدوران ریونیو کی وصولی ہدف سے 175 ارب روپے زیادہ رہی ہے۔

اہم خبریں سے مزید