• بانی: میرخلیل الرحمٰن
  • گروپ چیف ایگزیکٹووایڈیٹرانچیف: میر شکیل الرحمٰن

EC کے فنڈز روکنے کی بات کے وقت وزیراعظم نماز پڑھنے گئے تھے، شبلی فراز


کراچی (ٹی وی رپورٹ) وفاقی وزیر سائنس و ٹیکنالوجی شبلی فراز نے کہا ہے کہ یہ کہنا درست نہیں کہ الیکشن کمیشن نے ووٹنگ مشین کو مسترد کردیا، ووٹنگ مشین پر الیکشن کرانے کیلئے کم وقت کی بات غلط ہے، الیکشن کیلئے ہمارے پاس ابھی 23مہینے ہیں، الیکشن کمیشن کے ای وی ایم پر بات نہ ماننے پر فنڈز روکنے کی بات کابینہ میں آپس کی عمومی گفتگو تھی اس وقت وزیراعظم نماز پڑھنے گئے تھے۔ وہ جیو کے پروگرام ”کیپٹل ٹاک“ میں میزبان منیب فاروق سے گفتگو کررہے تھے۔ پروگرام میں مریم نواز کے ترجمان محمد زبیر اور ایڈیٹر انویسٹی گیشن دی نیوز انصار عباسی بھی شریک تھے۔ محمد زبیر نے کہا کہ وزیراعظم نماز پڑھنے جائیں ان کے پیچھے کابینہ فیصلے کرلے تو یہ بہت سنجیدہ معاملہ ہے، الیکشن کمیشن نے ای وی ایم کو مسترد کردیا ہے ،فواد چوہدری نے کوئی پارٹی یا ڈکٹیٹر نہیں چھوڑا لیکن خود کو اسٹیٹس کو مخالف کہتے ہیں، 2023ء کے الیکشن ای وی ایم سے کروانے کی ٹائم لائن بہت کم ہے۔انصار عباسی نے کہا کہ فواد چوہدری کی الیکشن کمیشن کے فنڈز روکنے کی بات ای سی پی کی تضحیک اور اسے بلیک میل کرنے کے مترادف ہے،پنجاب میں ای وی ایم پر بلدیاتی انتخابات کروالیے جائیں پتا لگ جائے گا کیا مسائل آرہے ہیں،الیکشن کمیشن نے 2017ء سے پہلے ن لیگ کے دور میں الیکٹرانک ووٹنگ ٹرائی کی تھی، الیکشن کمیشن نے اس کی رپورٹ پارلیمنٹ بھیجی لیکن آج تک اس رپورٹ پر پارلیمنٹ نے بات ہی نہیں کی،وفاقی وزیر سائنس و ٹیکنالوجی شبلی فراز نے کہا کہ وزیراعظم چاہتے ہیں الیکشن کمیشن کے ساتھ مل کر ان کی ضروریات پوری کی جائیں، وزیراعظم نے اس کیلئے چار وزراء پر مشتمل کمیٹی بنادی ہے، الیکشن کمیشن کے ای وی ایم پر بات نہ ماننے پر فنڈز روکنے کی بات کابینہ میں آپس کی عمومی گفتگو تھی اس وقت وزیراعظم نماز پڑھنے گئے تھے۔ شبلی فراز کا کہنا تھا کہ صاف و شفاف انتخابات کروانا الیکشن کمیشن کا کام ہے، حکومت کا کام ہے الیکشن کمیشن کو فرائض سرانجام دینے میں سہولت دے، 2017ء کے الیکشن ایکٹ پر کسی ضمنی الیکشن میں بھی عملدرآمد نہیں ہوا، الیکشن کمیشن دس سال بعد بھی انتخابات میں ای وی ایم کے استعمال میں ناکام ہے۔ شبلی فراز نے کہا کہ یہ کہنا درست نہیں کہ الیکشن کمیشن نے ووٹنگ مشین کو مسترد کردیا، ووٹنگ مشین پر الیکشن کرانے کیلئے کم وقت کی بات غلط ہے، الیکشن کیلئے ہمارے پاس ابھی 23مہینے ہیں، قانون ایسا نہیں ہے کہ کل ہی ایک لاکھ مشینیں تیار کریں، روزانہ 2ہزار الیکٹرانک ووٹنگ مشینیں بنائی جاسکتی ہیں۔ شبلی فراز کا کہنا تھا کہ ن لیگ کبھی ای وی ایم کے ذریعہ انتخابات کو تسلیم نہیں کرے گی، ہماری پوری کوشش ہے کہ یہ گناہوں پر معافی مانگیں اور صراط مستقیم پر آجائیں، اپوزیشن نے الیکٹرانک ووٹنگ مشین کو چھونے سے بھی انکار کردیا،صدر عارف علوی نے فیملی بزنس کی تقریب کیلئے گورنر ہاؤس کے استعمال پر وضاحت کردی ہے، ن لیگ کا وزیراعظم ہاؤس بزنس ڈیلنگ کرنے کا اڈہ بنا ہوا تھا۔

اہم خبریں سے مزید