آپ آف لائن ہیں
جنگ ای پیپر
پیر10؍ربیع الاوّل 1440ھ 19؍نومبر2018ء
Namaz Timing
  • بانی: میرخلیل الرحمٰن
  • گروپ چیئرمین و ایگزیکٹوایڈیٹر: میر جاوید رحمٰن
  • گروپ چیف ایگزیکٹووایڈیٹرانچیف: میر شکیل الرحمٰن
’’بائیو میڈیکل انجینئرنگ‘‘ طب اور انجینئرنگ کے اصولوں کا مجموعہ

ملک میں بڑھتےوبائی امراض کے پیش نظر ادویات کا تیاری و فراہمی، اسپتالوں میں موجود ہائی ٹیک مشینری کی دیکھ بھال اور ٹیکنالوجی سسٹم کی درست انجام دہی کا فریضہ ’بائیو میڈیکل انجینئر‘کے سپرد ہوتا ہے۔بائیو میڈیکل انجینئر صحت کے شعبے کا وہ فعال رکن ہے جس کے بغیریہ شعبہ نامکمل تصور کیا جاتا ہے۔

اگر بات کی جائے بائیو میڈیکل انجینئرنگ کی تعلیم کی تو یہ شعبہ انجینئرنگ کے متعلقہ پیشوں میں سے ہی ابھرتاہوا ایک دلچسپ شعبہ ہے۔ اسے حیاتیات اور انسانی زندگی کے معیار میں بہتری لانے کی غرض سے طب میں تکنیکی علم کےمجموعہ کے طور پر متعارف کروایا گیا ہے۔ اس شعبے میں دو اہم شعبوں میڈیکل اور انجینئرنگ کو یکجا کیا گیا ہے اور طب کی بہتری کے لیے انجینئرنگ کے اصولوں اور تراکیب کا مطالعہ، تحقیق ، ترقی ، اوراس کے استعمال پر وضاحت کی گئی ہے۔

اگر آپ بھی انسانی زندگیوں کی دیکھ بھال اور مشینری سسٹم میں دلچسپی رکھتے ہیں تو یہ پیشہ آپ کے لیے ہی ہے ۔لیکن اس شعبے کو آپ کیسے اپنا سکتے ہیں اور پاکستان یا بیرون ملک اس شعبے کی اہمیت کیا ہے، آئیے اس پر ایک ڈال لیتے ہیں۔

داخلے کی اہلیت اور معیار

اگر آپ بائیو میڈیکل انجینئربننا چاہتے ہیںتو ایک طریقہ یہ ہے کہ اگر آپ نے پری میڈیکل یا پری انجینئرنگ کے شعبےمیں60فیصد نمبروں سے انٹرمیڈیٹ کی سند حاصل کررکھی ہے تو آپ بائیو میڈیکل پروگرام میں داخلہ لے سکتے ہیں ۔ہمارے یہاں بائیو میڈیکل انجینئرنگ پروگرام 4سالہ بیچلر ڈگری (بی ایس سی یا بی ای ) کے طور پر کروایا جاتا ہے۔

دوسرا طریقہ یہ ہے کہ(پری انجینئرنگ) کے بعد الیکٹریکل انجینئرنگ کی ذیلی شاخوں کمپیوٹر انجینئرنگ ، الیکٹرانکس انجینئرنگ ، میکینکل انجینئرنگ یا کیمیکل انجینئرنگ کر لیں اور بائیو میڈیکل میں ایم ایس یا پوسٹ گریجویٹ کورس کرنے کے بعد بطور بائیو میڈیکل انجینئر اپنے کیریئر کا آغاز کریں۔دنیا کے کئی ممالک میں MBBSکی ڈگری لینے کے بعد بھی طلبہ وطالبات بائیو میڈیکل انجینئرنگ کو ماسٹرز ڈگری کے لئے منتخب کرسکتے ہیں۔

بائیومیڈیکل انجینئرنگ کے مضامین

بائیو میڈیکل انجینئرنگ میں میکینکل انجینئرنگ ،الیکٹرانکس انجینئرنگ ، مواصلات اورکمپیوٹر انجینئرنگ، کمپیوٹر انٹیگریشن، مینو فیکچرنگ ، جغرافیائی معلومات کا نظام ، بائیو ٹیکنالوجی اور بائیو میکانکس جیسےمضامین پڑھائے جاتے ہیں۔اس منفرد شعبے میں بائیو انسٹرومینٹیشن، بائیو مٹیریل ، بائیو میکانکس ، میڈیکل گرافکس ،جینیٹکس انجینئرنگ ، آرتھوپیڈک سرجری ، سیلولر اور ٹشو انجینئرنگ شامل ہیں۔

بائیو میڈیکل انجینئر بطورکیریئر

اگرآپ بائیو میڈیکل انجینئرنگ میں بی ایس سی ،بی ای یا ایم ایس کرنے کے بعد بطور بائیو میڈیکل انجینئر اپنے کیریئر کا آغاز کرنے جارہے ہیں تو طب میں استعمال ہونے والی مشینری اور ہائی ٹیک سسٹم کی درست فعالیت ،مختلف آلات اور ان کاحساس آپریشن ،درست ڈیٹاکا حصول اور اس کی حفاظت آپ کے فرائض میں شامل ہے۔ طبی مسائل کے حل ،خصوصاً ڈاکٹر اور مریض کو سہولتیں پہنچانے کے لیے آپریشن تھیٹر کے تمام آلات ، سی ٹی سکین ، الٹراساؤنڈ، ایکس رے مشین اور دیگر خودکار مشینیں چلانا اور کنٹرول کرنا پڑتی ہیں۔ یہی نہیں بائیو میڈیکل انجینئرز کسی حادثے یا بیماری میںجسمانی اعضاءکھودینے والے افراد کے لیے آرٹیفیشل اعضاء جیسے روبوٹ ہاتھ، روبوٹ پاؤں، انگلیاں اور دوسرے مصنوعی اعضاء کی تیاری کا کام بھی سرانجام دیتے ہیں ۔

بائیو میڈیکل انجینئر کیلئے کیریئر کے مواقع

بائیو اور میڈیکل کی تحقیق میں مصروف اداروں کو بائیو میڈیکل انجینئرز کی شدید ضرورت ہوتی ہےاگر آپ کے پاس بائیو میڈیکل انجینئر کی ڈگری ہے تو میڈیکل ایکوپمنٹ مینوفیکچرنگ فرم،سیلولر ٹشوز اینڈجینیٹک انڈسٹری،بائیو مٹیریل انڈسٹری، آرتھوپیڈک انڈسٹری اور ہسپتال میں بائیو میکانکس آپ کی جاب مارکیٹ کے طور پر موجود ہیں۔ آپ عالمی صنعتوں ، مینوفیکچرنگ یونٹس، صنعتی فرموں ، تعلیمی اور طبی اداروں ،حکومتی ریگولیٹری ایجنسیوں کی وسیع رینج میں کام کرسکتے ہیں ۔

پاکستان میں بائیو میڈیکل انجینئرز کی قلت

پاکستان میں بائیو میڈیکل انجینئر ز کی بہت کم تعداد کی ہے، جس کا ایک سبب اس شعبے میں کام کرنے والے افراد کی کم تنخواہیں اور ان کے بنیادی حقوق سے متعلق حکومت کی بے اعتنائی ہے اور یہ قلت سرکاری اسپتالوں کی صورتحال میں مزید خرابی کا سبب بن رہی ہے۔بائیو میڈیکل انجینئر کی شدید قلت کے باعث سرکاری اسپتالوں میں موجودکروڑوں روپے کی درآمد کی گئی مشینری (مثلاً وینٹی لیٹرز، انجیوگرافی، ایم آر آئی، سی ٹی سکین، ایکو کارڈیک گرافی، کارڈیک مونیٹرز، ای سی جی ) خراب ہوکر اسکریپ کا ڈھیر بن جاتی ہے کیونکہ انھیں کوئی ٹھیک کروانے والا نہیں ہوتا۔ اس لیے اگر آپ کے پاس بائیو کیمیکل کی ڈگری ہے تو آپ بطور بائیو میڈیکل انجینئر ڈیمانڈ کا حصہ بن جائیں۔

Chatاپنی رائے سے آگاہ کریں