آپ آف لائن ہیں
جنگ ای پیپر
منگل3؍ربیع الثانی 1440ھ11؍دسمبر 2018ء
Namaz Timing
  • بانی: میرخلیل الرحمٰن
  • گروپ چیئرمین و ایگزیکٹوایڈیٹر: میر جاوید رحمٰن
  • گروپ چیف ایگزیکٹووایڈیٹرانچیف: میر شکیل الرحمٰن

پیپلز پارٹی کے مرکزی رہنما سینیٹر مولا بخش چانڈیو نے کہا ہے کہ وزیراعظم مڈٹرم الیکشن کا کہہ کر اپنی اور کابینہ کی ناکامی کا اعتراف کررہے ہیں۔

حیدر آباد میں میڈیا سے گفتگو میں مولا بخش چانڈیو نے کہا کہ ملک کے سربراہ کو پتہ نہیں کہ روپے کی قیمت گرگئی،یوٹرن کو نیا نام دیتا ہوں،اب اباؤٹ ٹرن کہوں گا۔

انہوں نے کہا کہ آپ نے این آر او، این آر او لگایا ہوا ہے، کس نے این آر او مانگا ہے؟ کس نے کہا ہے کہ معافیاں دو؟ حکومت صرف مخالفین اور پارلیمنٹ کی توہین کررہی ہے۔

پی پی رہنما نے یہ بھی کہا کہ پی ٹی آئی نے آتے ہی گاڑیاں اور بھینسیں نیلام کردیں، پی پی نے آتے ہی پارلیمنٹ کو احترام دیا، 100 دن میں حکومت کچھ ایسا نہیں کرسکی کہ بغلیں بجائی جائیں۔

ان کا کہنا تھا کہ کس نے کہا تھا کہ 100 دن کی بات کرو؟ وقت سے پہلے انتخابات غیر یقینی صورتحال اورحکومت ناکام ہونے پرہوتے ہیں۔

مولا بخش چانڈیو نے مزید کہا کہ احتساب انتقام ہے تو اس کا نتیجہ اچھا نہیں نکلے گا، چانڈیو حکومت صرف مخالفین اور پارلیمنٹ کی توہین کررہی ہے ،آپ 18 ویں ترمیم ختم کرنا چاہتے ہیں، یہ نہیں ہوگا۔

انہوں نے کہا کہ میاں صاحب نے بھی ایسے ایشو چھیڑے جس سے صوبہ میں بدگمانی ہوئی،آپ کو صوبوں کے حق حاکمیت کو قبول کرنا ہوگا،آپ صوبائی خود مختاری میں مداخلت نہیں کرسکتے۔

پی پی رہنما کا کہنا تھا کہ خان صاحب خوش نصیب ہیں کہ اپوزیشن انہیں وقت دینے کو تیار ہے، کچھ وزراء کی پوچھیں، وہ آسانی پیدا کر رہے ہیں یا پیچیدگیاں؟

مولا بخش چانڈیو نے یہ بھی کہا کہ سینٹ کاماحول مشاورت سے چلتا ہے، وہاں بھی ایک آکر ہلچل مچادیتا ہے۔

Chatاپنی رائے سے آگاہ کریں