آپ آف لائن ہیں
جنگ ای پیپر
ہفتہ14؍ شعبان المعظم 1440 ھ20؍اپریل 2019ء
Namaz Timing
  • بانی: میرخلیل الرحمٰن
  • گروپ چیئرمین و ایگزیکٹوایڈیٹر: میر جاوید رحمٰن
  • گروپ چیف ایگزیکٹووایڈیٹرانچیف: میر شکیل الرحمٰن


پاکستان اور ملائیشیا کے وزرائے اعظم کی اسلام آباد میں مشترکہ نیوز کانفرس ہوئی جس میں وزیراعظم پاکستان عمران خان نے مہاتیر محمد کی جدوجہد کو سرہاتے ہوئے کہا کہ آپ مسلم دنیا کے لیے ہمیشہ ایک مثال رہے ہیںکیونکہ آپ نے ہمیشہ مسلم دنیا کو درپیش چیلنجزکوحل کرنے کےبات کی ہے۔

کرپشن کے حوالے سے وزیراعظم نے کہا کہ جیسے ملائیشیا کرپشن کےخلاف بہت زیادہ سخت پالیسی رکھتا ہے ہم سمجھتے ہیں کہ ملک غریب نہیں ہوتے،کرپشن ملکوں کوغریب کرتی ہے اور کرپشن کےخلاف آپ کی ہم جنگ لڑرہے ہیں۔

اسی دوران ملائیشیا کے وزیر اعظم نے عمران خان کا شکریہ ادا کرتے ہوئے کہا کہ میری واپسی کرپشن کےخلاف جنگ کےلیے ہی ہے ، ملائیشیا پاکستان سے مختلف شعبوں میں تعاون بڑھا سکتا ہے اور اُن کا کہنا تھا کہ پاکستان معاشی طورپرمضبوط بنے۔

مہاتیر محمد کا کہنا تھا کہ ہمیں یقین ہے کہ پاکستان اورملائیشیا کےدرمیان تجارت بڑھےگی اور ہمیں جاننا ہوگا کہ پاکستان ملائیشیا کوکیا فروخت کرسکتا ہے اورملائیشیا پاکستان کوکیا دےسکتا ہے۔

اس مشترکہ پریس کانفرنس میں مہاتیر محمد نے کہا کہ آج کےدورمیں کسی بھی مسلم ملک کو ترقی یافتہ نہیں کہاجاسکتا ہے مگر ہم چاہتے ہیں 2050 تک ملائیشیا سمیت مختلف مسلم ممالک ترقی یافتہ ریاستوں میں شامل ہوجائے۔

ملائیشین وزیراعظم سے مختلف موضوعات پرتبادلہ خیال کرتے ہوئے کہا کہ اسلاموفوبیا کے باعث نیوزی لینڈ میں 50مسلمانوں کوشہید کیا گیا جن میں 3ملائیشین بھی تھے۔

وزیر اعظم عمران خان نے کہا کہ پاکستان کاہمیشہ سے ملائیشیاکے ساتھ قریبی تعلق رہا ہے۔

Chatاپنی رائے سے آگاہ کریں