آپ آف لائن ہیں
جنگ ای پیپر
پیر20؍ شوال المکرم 1440 ھ 24؍جون 2019ء
Namaz Timing
  • بانی: میرخلیل الرحمٰن
  • گروپ چیئرمین و ایگزیکٹوایڈیٹر: میر جاوید رحمٰن
  • گروپ چیف ایگزیکٹووایڈیٹرانچیف: میر شکیل الرحمٰن

کراچی (اسٹاف رپورٹر) افطار میں غیر معیاری مشروبات ، بازاری پکوڑوں اور ٹھنڈی وکھٹی اشیاء کے استعمال سے گلے وپیٹ کے امراض پھیل سکتے ہیں اس لئے شہری اعتدا ل سے کام لیں ، کھانے پینے کی صفائی کا خیال رکھیں ، اگر گلہ خراب ہوجائے تو تلی ہوئی ، زیادہ میٹھی اور ٹھنڈی چیزوں کےساتھ غیر معیاری بازاری اشیاء سے بھی پرہیز کریں ۔ جناح سندھ میڈیکل یونیورسٹی کے وائس چانسلر اور معروف ماہر امراض ناک کان وگلہ پروفیسر ڈاکٹر سید محمد طارق رفیع نےبتایا رمضان المبارک کی آمد کے ساتھ ہی گلے کے امراض میں مبتلا افراد بڑی تعداد میں آنا شرو ع ہوجاتے ہیں یہ سارا دن روزے کی حالت میں بھوکا پیاسا رہنے کے بعد افطاری میں بہت زیادہ میٹھے ، ٹھنڈے اور بازاری مشروبات و بازاری کھانے استعمال کر جاتے ہیں جس سے گلہ فوراً خراب ہو جاتا ہے ۔

Chatاپنی رائے سے آگاہ کریں