آپ آف لائن ہیں
جنگ ای پیپر
منگل14؍شوال المکرم 1440ھ 18؍جون 2019ء
Namaz Timing
  • بانی: میرخلیل الرحمٰن
  • گروپ چیئرمین و ایگزیکٹوایڈیٹر: میر جاوید رحمٰن
  • گروپ چیف ایگزیکٹووایڈیٹرانچیف: میر شکیل الرحمٰن

سابق خاتون رکن اسمبلی کی وومن یونیورسٹی کے اجلاسوں میں شرکت غیرقانونی ہے ،بی ایس او

کوئٹہ(پ ر) بلوچ اسٹوڈنٹس آرگنائزیشن کے مرکزی ترجمان نے بیان میں کہا ہے کہ قوم پرست جماعت کی سابق خاتون رکن اسمبلی سردار بہادر یونیورسٹی کے سینٹ اور سلیکشن کمیٹی میں غیر قانونی طور پر شرکت کررہی ہے جبکہ سابق اسمبلی کے تمام اختیارات ختم ہوچکے ہیں لہذا کمیٹی اجلاس میں شرکت کا کوئی جوازنہیں بنتا نہ ہی اس کمیٹی کے غیر قانونی فیصلوں کو قبول کیا جائے ۔ترجمان نے کہا کہ غیر قانونی طریقے سے غیر منتخب لوگوں کی بلوچستان اسمبلی کے نام پر یونیورسٹیز کے معاملات میں مداخلت صرف کرپشن اور زاتی مفادات کے تحفظ کی خاطر ہے اسی طرح بلوچستان اسمبلی کی سابق اسپیکر جسکا مسلم لیگ ن سے تعلق ہے کو غیر قانونی طور پر آئی ٹی یونیورسٹی کی سینٹ کمیٹی کی ممبر بنا دی گئی ہے جس سے آئی ٹی یونیورسٹی اور سردار بہادر خان یونیورسٹی کی کمیٹیاں غیر آئینی بنتی ہیں۔ترجمان نے کہا کہ بلوچستان اسمبلی یونیورسٹیز کے ایشوز پر خاموشی تماشاہی بنی ہوئی ہے بلوچستان کے اعلیٰ تعلیمی اداروں میں کرپشن کا بازار گرم اور اقرباء پروری کی جارہی ہے۔ جعلی طریقے سے غیر قانونی سلیکشن کمیٹیاں اسکی واضح مثال ہیں کہ بلوچستان اسمبلی کے نام پر وائس چانسلرز کے سابق پسندیدہ ممبران کو یونیورسٹیز میں نمائندگی دی گئی ہے جسے کسی صورت قبول نہیں کیا جائے گا سابق خاتون

رکن اسمبلی اب بھی لیکچررز کی تعیناتی کے غیرقانونی منٹس پر دستخط کررہے ہیں جو کسی بھی صورت قابل قبول نہیں ۔ 

Chatاپنی رائے سے آگاہ کریں