آپ آف لائن ہیں
جنگ ای پیپر
جمعہ20؍محرم الحرام 1441ھ 20؍ستمبر 2019ء
Namaz Timing
  • بانی: میرخلیل الرحمٰن
  • گروپ چیئرمین و ایگزیکٹوایڈیٹر: میر جاوید رحمٰن
  • گروپ چیف ایگزیکٹووایڈیٹرانچیف: میر شکیل الرحمٰن

گھر میں بچے ہوں تو ماؤں کے لیے چیزیں ترتیب دینا کوئی آسان کام نہیں ہوتا ہے۔ بچوں کو دیکھنا، ان کے کھانے پینے اور ضروریات کا خیال رکھنا ماؤں کے ذہن پر سوار رہتا ہے۔ بچوں کی موجودگی میں ہر آئے دن افراتفری کا سامنا رہتا ہے، تاہم چند باتوں پر عمل پیرا ہوکر مائیں اپنے وقت کا زیادہ بہتر اور زیادہ مؤثر استعمال یقینی بناسکتی ہیں۔

اپنے وقت کا جائزہ لیں

اس بات کا بغور جائزہ لیں کہ آپ اپنا وقت کس طرح گزارتی ہیں۔ ماہرین کہتے ہیں کہ اسمارٹ فون اور انٹرنیٹ کے اس دور میں ہم اپنا کم از کم ایک گھنٹہ روزانہ ایسے کاموں پر خرچ کرتے ہیں، جنھیں یا تو بعد میں کیا جاسکتا ہے یا پھر انھیں اپنے شیڈول سے خارج کیا جاسکتا ہے۔ اسمارٹ فونز نے ہماری کسی ایک کام پر توجہ مرکوز رکھنے کی صلاحیت کو بُری طرح متاثر کیا ہے اور ہم بمشکل 20منٹ تک ایک کام تسلسل کے ساتھ کرپاتے ہیں اور ہم اپنی توجہ غیرپیداواری کاموں کی طرف پھیر لیتے ہیں۔

آگے کی سوچ رکھیں

ایسے طریقے تلاش کریں، جن پر عمل پیرا ہوکر آپ ایک کام کو انجام دینے کے مراحل کو کم کرسکیں یا اس پر صَرف کیے جانے والے وقت میں کمی لاسکیں۔ مثلاً کوشش کریں کہ اگلی صبح کے لیے جس قدر زیادہ سے زیادہ تیاری آپ ایک رات پہلے کرسکتے ہیں، کرلیں یا اگلی صبح ناشتے کے لیے آپ کو جن برتنوں کی ضرورت پڑے گی، انھیں رات کو ہی نکال کر میز پر سجا دیں۔

چیزوں کو منظم کریں

فائلوں کا ایک کیبنٹ بنائیں اور اس میں ہر چیز کی ایک کاپی رکھیں۔ کیبنٹ میں ہر بچے کا ایک علیحدہ فولڈر ہونا چاہیے، تاکہ ضرورت پڑنے پر آپ کو معلوم ہو کہ کون سی چیز کہاں رکھی ہوئی ہے(اسکول، ڈاکٹر وغیرہ)۔ ضروری قانونی اور شہری دستاویزات بنوانے میں تاخیر نہ کریں، آج کا کام کل پر نہ چھوڑیں۔ کیا آپ کو پتہ ہے کہ کراچی اور پاکستان کے دیگر شہروں میں ایسے کئی اسکول ہیں، جو آپ کے بچے کو اہل ہونے کے باوجود صرف اس لیے داخلہ نہیں دیتے کیونکہ آپ نے بطور والدین غفلت برتتے ہوئے، ان کی کئی دستاویزات کو بروقت نہیں بنوایا ہوتا، جیسے نادرا سے برتھ سرٹیفکیٹ یا فیملی رجسٹریشن سرٹیفکیٹ وغیرہ۔

ترجیحات کا تعین کریں

زندگی میں نظم و ضبط پیدا کرنے کا اصول اپنی ترجیحات جاننے میں پوشیدہ ہے کہ آخر اہم کیا ہے اور کیا چیز انتظار کرسکتی ہے۔ ماہرین آپ کی To-doفہرست کو 3 حصوں میں تقسیم کرنے کا مشورہ دیتے ہیں: وہ کام جنھیں فوری طور پر کرنا ضروری ہے، وہ کام جنھیں ہفتے کے دوران کبھی بھی کیا جاسکتا ہے اور تیسرے وہ جو طویل مدتی اور جاری منصوبے ہیں۔ غیراہم کاموں کو اپنی زندگی سے نکال دیں۔

ملٹی ٹاسکنگ

کچھ چیزوں کو ایک طرف کرکے رکھنا سیکھ لیں، جنھیں آپ اپنے فرصت کے لمحات میں کرسکتی ہیں۔ جب آپ انتظار گاہ میں بیٹھی ہوں تو اس وقت آپ نہ صرف بلوں کی ادائیگی کرسکتی ہیںبلکہ بچوں کے ہوم ورک کا جائزہ بھی لے سکتی ہیں۔ کوئی بھی چیز خریدنے کے لیے مارکیٹ جانے سے پہلے انٹرنیٹ پر ریسرچ کرلیں، اس طرح مارکیٹ میں آپ کا وقت بچ جائے گا۔

دوسروں کی مدد لیں

آپ کو سپرموم بننے کی ضرورت نہیں ہے اور نہ ہی ہر کام آپ نے خود ہی کرنا ہے۔ جب آپ وقت کی کمی کا شکار ہوں تو دیگر وسائل استعمال کرنے میں کوئی حرج نہیں۔ لانڈری چھانٹنے کا کام ہو یا کچھ چیزوں کو ایک جگہ سے اُٹھا کر دوسری جگہ رکھنا ہو، یہ وہ کام ہیں جس میں آپ کے بچے بھی آپ کے مددگار بن سکتے ہیں۔

کیلنڈر تیار کریں

کسی ہمیشہ نظر آنے والی جگہ پر ایک ’فیملی وال کیلنڈر‘ لٹکائیں۔ پیرنٹس ٹیچر میٹنگ سے لے کر ڈاکٹر کے اپائنٹمنٹ تک، ہر چیز کو کیلنڈر پر مارک کریں۔ کریانہ (گراسری) کی لِسٹ فریج پر چسپاں کردیں۔ ایک وائٹ بورڈ کچن میں لٹکادیں او رضروری فہرستیں اور یاد رکھنے والی چیزیں اس پر درج کردیا کریں۔

ہر چیز کو جگہ پر رکھیں

کیا آپ کا اکثر وقت ایسی چیزوں کو تلاش کرنے میں ضائع ہوجاتا ہے، جنھیں آپ کسی نہ معلوم جگہ رکھ کر بھول گئی ہیں۔ اس بات کو یقینی بنائیں کہ استعمال کے بعد ایک چیز کو اس کی مقرر کردہ جگہ پر ہی رکھیں، تاکہ اگلی بار جب جلدی میں آپ کو اس چیز کی ضرورت پڑے تو آپ کو اسے ڈھونڈنا نہ پڑے۔

باسکٹ استعمال کریں

باسکٹ بہت کمال کی چیز ہے۔ ایک اچھے سائز کی باسکٹ ہر کمرے میں رکھیں، جس میں کھلونے، کتابیں اور ویڈیوز وغیرہ رکھیں۔

اضافی چیزیں بنا کر رکھیں

کھانے پینے کی چیزیں اضافی بناکر فریز کرلیا کریں۔ جب کبھی آپ کے کسی بچے یا فیملی ممبر کو کھانے کی ضرورت محسوس ہوگی تو آپ کو کوئی چیز تیار کرنے کیلئے شروع سے تیاری نہیں کرنا پڑے گی۔

خواتین کا جنگ سے مزید